سنی اتحاد کونسل نے ’’حفاظت دین مہم ‘‘ چلانے کا فیصلہ کرلیا

سنی اتحاد کونسل نے ’’حفاظت دین مہم ‘‘ چلانے کا فیصلہ کرلیا

  

لاہور( نمائندہ خصوصی) سنی اتحاد کونسل نے ’’حفاظت دین مہم ‘‘ چلانے کا فیصلہ کرلیا ۔ تمام اضلاع میں حفاظت دین سیمینارز اور شہید ناموس رسالت کانفرنسیں منعقد کی جائیں گی ۔ پاکستان کو سیکولر سٹیٹ بنانے کی حکومتی کوششوں کے خلاف مظاہرے بھی کئے جائیں گے اور قانون ناموس رسالت کے حق میں دستخطی مہم چلائے جائے گی۔ سنی اتحاد کونسل کے عہدیداران و کارکنان 27مارچ کو ممتاز حسین قادری کے چہلم میں بھر پور شرکت کریں گے۔’’تحفظ ناموس رسالت ایمان کی بنیاد ‘‘ کے موضوع پر تحریری و تقریری مقابلے کروائے جائیں گے ۔ اس بات کا فیصلہ سنی اتحاد کونسل کی کور کمیٹی کے اجلاس میں کیا گیا۔ اجلاس جامعہ رضویہ میں چیئرمین سنی اتحاد کونسل صاحبزادہ حامد رضا کی صدارت میں منعقد ہوا۔اجلاس میں مفتی محمد حسیب قادری ، سید جواد الحسن کاظمی ، صاحبزادہ عمار سعیدسلیمانی ، پیر میاں غلام مصطفی، پیر طارق ولی چشتی ، میاں فہیم اختر ، مولانا محمد اکبر نقشبندی ، مولانا غلام سرور حیدری ، مفتی محمد رمضان جامی ، صاحبزادہ حسین رضا ، صاحبزادہ مطلو ب رضا اوردیگر نے بھی شرکت کی۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے چیئرمین سنی اتحاد کونسل صاحبزادہ حامد رضا نے کہا کہ اہل حق پاکستان کی نظریاتی سرحدوں پر پہرہ دیں گے۔ناموس رسالت سے غداری کرنے والے حکمران دنیا و آخرت میں رسوا ہونگے۔پاکستان کے آئین میں لبرل ازم اور سیکولر ازم کی کوئی گنجائش نہیں۔اجلاس میں منظور کی گئی قراردادوں میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ را سے راوبط رکھنے والی ایم کیو ایم پرپابندی لگائی جائے۔عدالتوں سے سزا یافتہ گستاخان رسول کو پھانسی دی جائے۔پنجاب میں کرپشن اور دہشتگردی کے خلاف رینجرز کا آپریشن شروع کیا جائے۔حقوق نسواں بل میں خلاف شریعت شقوں کو واپس لیا جائے۔ملک میں عملاََنظام مصطفی نافذ کیا جائے۔کراچی میں امن کیلئے رینجرز کو فری ہینڈ دیا جائے۔حکومت نیب کو کمزور کرنے کی کوششیں ختم کرے۔

مزید :

صفحہ آخر -