وزیر اعظم اور آرمی چیف اسیرکارکنوں پر تشدد کا نوٹس لیں، فاروق ستار

وزیر اعظم اور آرمی چیف اسیرکارکنوں پر تشدد کا نوٹس لیں، فاروق ستار

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر) متحدہ قومی موومنٹ کی رابطہ کمیٹی کے سینئر ڈپٹی کنوینر ڈاکٹر فارو ق ستار نے کہا ہے کہ کراچی سینٹرل جیل میں ایم کیوایم کے مختلف مقدمات میں قید 40کارکنان کو بندوراڈکردیا گیاہے ، انہیں تشدد کا نشانہ بنایاجارہا ہے اور وفاداریاں تبدیل کرنے کیلئے پرفارمہ بھرنے پرمجبور کیاجارہا ہے ۔ حق پرست ارکان قومی وصوبائی اسمبلی کو بھی نامعلوم نمبروں سے فون کالیں موصول ہورہی ہیں اور انہیں سیاسی وفاداری تبدیل کرنے کیلئے دھمکی آمیز لہجہ کااستعمال کیاجارہاہے ۔ انہوں نے کہاکہ گزشتہ چند دنوں سے ایم کیوایم بار بار اس جانب اشارہ کررہی ہے کہ یہ جو کچھ ہورہا ہے اس کے پیچھے ایک منظم سازش کارفرما ہے اور ہم نے اس سازش کی نشاندہی کردی ہے جس کا مقصد ایم کیوایم کو ٹکڑوں میں تبدیل کرکے حق پرست عوام کے اتحاد کو پارہ پارہ کرنا ہے۔ان خیالات کااظہار انہوں نے اتوار کے روز خورشید بیگم سیکریٹریٹ عزیز آبادمیں پرایم کیوایم کی رابطہ کمیٹی کے اراکین اسلم آفریدی ، زاہد منصوری ، محترمہ ریحانہ نسرین اور محفوظ یار خان ایڈووکیٹ کے ہمراہ پرہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ ڈاکٹر فاروق ستار نے ایم کیوایم کے خلاف تیار کی گئی سازش کاپردہ چاک کرتے ہوئے کہاکہ دوروز قبل رینجرز کی بھاری نفری نے کراچی سینٹرل جیل کے سپرنٹنڈنٹ اور ڈپٹی سپرنٹنڈنٹ کے ہمراہ بیرک نمبر 18، 19، 24اور 25 پر غیر قانونی طور پر دھاوا بولا ورجیل مینوئل کے مطابق ایم کیوایم کے اسیر کارکنان کوحاصل حقوق سلب کرلئے ،انہیں تشدد کا نشانہ بنایا گیا، جبروتشدد کے ہتھکنڈے استعمال کرکے انہیں خوفزدہ کرکے بند وارڈ کردیا گیا ۔ انہوں نے کہاکہ ایم کیوایم کے یہ چالیس کارکنان مختلف مقدمات میں زیر حراست ہیں اور ان پر کوئی جرم ثابت نہیں ہوا ہے۔ انہوں نے مزید کہاکہ اسیرکارکنان سیاسی قیدی ہیں اورانہوں نے جیل قوانین کی کوئی خلاف ورزی نہیں کی ہے اس کے باوجود ایم کیوایم کے اسیرکارکنان کو بند وارڈکرکے ان سے جیل مینوئل کے مطابق تمام سہولیات چھین لی گئی ہیں جوکہ بنیادی انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے۔انہوں نے کہاکہ یہ اطلاعات بھی ہیں کہ ان کارکنان پر سیاسی وفاداریاں تبدیل کرنے کیلئے دباؤ ڈالاجارہاہے تاکہ ریاستی طاقت کے ذریعہ حق پرستوں کے اتحاد کو نقصان پہنچایا جاسکے ۔ اس سے قبل ایم کیوایم کے لاپتہ کارکنان کے اہل خانہ سے نامعلوم نمبروں سے رابطہ کرکے کہاگیا ہے کہ اگر ان کے پیارے ’’نئے بنگلے ‘‘ کو جوائن کرلیں تو نہ صرف لاپتہ کارکنان کی بازیابی عمل میں آسکتی ہے بلکہ اسیرکارکنان کی رہائی بھی ہوسکتی ہے جبکہ دھمکی آمیز کالوں کے ذریعہ

مزید :

کراچی صفحہ اول -