خیبرپختونخوا پولیس بیک وقت دو محازوں پر جنگ لڑ رہی ہے :ناصر درانی

خیبرپختونخوا پولیس بیک وقت دو محازوں پر جنگ لڑ رہی ہے :ناصر درانی

  

پشاور( کرائمز رپورٹر)انسپکٹر جنرل آف پولیس خیبر پختونخوا ناصرخان دُرانی نے کہا ہے کہ اس وقت خیبر پختونخوا پولیس دو محاذوں پر جنگ لڑرہی ہے۔ ایک طرف معصوم اور بے گناہ لوگوں کو نشانہ بنانے والے دہشت گردوں کے خلاف سیسہ پلائی ہوئی دیوار بن کر اُنکے مزموم عزائم کو خاک میں ملانے، اُن کے محفوظ پناہ گاہوں کونیست و نابود کرنے اور دوسری طرف اُن دوست نما دشمن کے خلاف جو لوگوں کے ذہنوں اور دلوں میں ڈر اور خوف پیدا کررہے ہیں۔ اور ساتھ ساتھ دشمن کے خلاف جنگ میں ہمہ وقت مصروف فورس کی صلاحیتوں کے خلاف عوام کے دلوں میں شکوک و شبہات پیدا کر رہے ہیں اورکہا کہ پولیس دونوں دشمنوں سے بھر پور طریقے سے نمٹنے کے لیے پوری طرح تیار ہے۔آئی جی پی نے کہاہے کہ خیبر پختونخوا پولیس کے غیور اور شیردل جوان سینے پر گولی تو کھا سکتی ہے۔ لیکن گالی برداشت نہیں کرسکتی۔ اور اس عزم کا اعادہ کیا کہ بطور کمانڈر وہ خیبر پختونخوا پولیس کے وقار اور عزت کا تحفظ کرنے کے لیے اپنی ذمہ داریاں ہر قیمت پر پورا کریں گے۔آئی جی پی نے مزید کہاہے کہ پولیس کی ٹریننگ اور مہارت کا اندازہ لگانے کے لیے حال ہی میں فرانس کی ماہرین کی ایک ٹیم آئی تھی۔ جس نے حکومت کو پیش کردہ اپنی رپورٹ میں خیبر پختونخوا پولیس کی دلیری اور مہارت کو پوری دنیا کے پولیس کے لیے قابل تقلید قرار دیا ہے۔ جو نہ صرف پولیس فورس بلکہ پورے صوبے کے لیے قابل فخر ہے۔آئی جی پی نے اس ضمن میں پلڈیٹ کی حالیہ رپورٹ کا بھی ذکر کیا جسمیں امن و آمان کی بہترصورتحال کے حوالے سے صوبہ خیبر پختونخوا کو سرفہرست رکھا ہے۔ جو کہ خیبر پختونخوا پولیس کی کامیابیوں اور کامرانیوں کامنہ بولتا ثبوت ہے۔ دہشت گردی کے خلاف پولیس اقدامات کا ذکر کرتے ہوئے آئی جی پی نے کہا کہ پچھلے سال دہشت گردی کے واقعات میں 58فیصد اور بھتہ خوری اور اغوا کی وارداتوں میں 52 فیصد کمی واقع ہوئی ہے۔ اور پولیس فورس کی استعدادی صلاحیتوں کو بڑھانے کے لیے سپشلائڑڈ سکولوں کے قیام کے ساتھ ساتھ عوام کی سہولت کے لیے قائم کردہ تنازعات کے حل کے کونسلوں(DRCs)،پولیس اسسٹنس لائنز( PAL)،پولیس ایکسز سروس (PAS) اور پولیس لیزان کونسلوں(PLC) کے مثبت نتائج سامنے آرہے ہیں۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -