خیبر ایجنسی ، عمائدین کی کاوشوں سے جائیداد کادیرینہ تنازعہ حل

خیبر ایجنسی ، عمائدین کی کاوشوں سے جائیداد کادیرینہ تنازعہ حل

  

خیبر ایجنسی ( بیورورپورٹ )خیبر سلطان خیل میں سو سالہ جائیداد کا دیرینہ تنازعہ جرگے کی کو ششوں سے حل ہو گیا ، جرگوں کے ذریعے تنازعات ختم کرنے کے لئے مخلصانہ کوشش کر رہے ہیں، قبائلی روایات کو مضبوط تر بنانے کی ضرورت ہے،ملک عبدالحلیم، ملک عبداللہ خان نے جائیداد گل ولی شیخان کے حوالے کر دی، سینیٹر تاج محمد کا جرگہ سے خطاب۔ لنڈی کوتل کے علاقہ خیبر سلطان خیل ملک عبدالحلیم اور ملک عبداللہ خان کے خاندان اور ولی خیل گل ولی شیخان خاندان کے مابین میں جائیداد کے سو سالہ پرانے تنازعہ کو حل کرنے کے لئے سینیٹر تاج محمد آفریدی ، ان کے نمائندوں ولی محمد ، ملکزادہ ندیم ،مستقل خان، لاج بر عرف بابو حاجی اور نعمت شیر نے مڑ واک کے تحت فیصلہ کرتے ہوئے فریق اول کی جائیداد ولی خیل گل ولی شیخان کے حوالے کر دی جس پر دونوں فریقین نے رضامندی کا اظہار کر کے فیصلے پر خوشی کا اظہار کیا جرگہ کی اس بڑی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے سینیٹر تاج محمد آفریدی نے کہا کہ اگر قبائلی عوام اپنی مثبت روایات اور جرگوں کو مؤثر بنائے تو بڑے بڑے تنازعات پرامن طریقے سے حل کر کے اپنی آنے والی نسلوں کو بہترین مستقبل دے سکتے ہیں انہوں نے کہا کہ تنازعات کے حل میں کسی کی طرف داری نہیں کر سکتے اور ساری قوم کو ایک ہی نظر سے دیکھ کر بلا تفریق خدمت کرینگے انہوں نے کہا کہ جمرود میں ڈالرز کے ناروا کاروبار اور لنڈی کوتل میں سودی لین دین نے لوگوں کی مشکلات بڑھا دی ہیں سینیٹر تاج محمد نے کہا کہ لنڈی کوتل بازار کو گریڈ اسٹیشن سے الگ فیڈر سے بجلی کی فراہمی جلد شروع ہو جائیگی انہوں نے کہا کہ سینیٹ میں قبائلی عوامی کی بہتری کے لئے اچھی اور مثبت سفارشات پیش کر دی ہیں اس موقع پر الحاج عبدلصمد نے سینیٹر کو پولیٹیکل محرروں کے نامناسب روےئے سے آگاہ کر دیا اس سے قبل انہوں نے ولی خیل قبیلے میں ایک تنازعہ جرگہ کے ذریعے حل کر دیا اور دونوں مقامات پر مخالفین کو آپس میں بغل گیر کرتے ہوئے ان کی صلح کر دی جس پر جرگے کے شرکاء نے ان کی کاؤشوں کو سراہا جر گے میں موجود افراد نے سینیٹر کو سلطان خیل قبیلے میں پانی کی فراہمی کے حوالے سے مختلف تجاویز دیں تاکہ لوگوں کو صاف پانی گھروں کی دہلیز پر فراہم کیا جا سکے مستقل آفریدی نے سینیٹر تاج محمد اور ایم این اے شاہ جی گل کے کامیاب اقدامات کو سراہتے ہو ئے کہا کہ اگر اسی جذبے سے کام کیا گیا تو اگلی باری بھی ان کی ہے ۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -