طوفانی بارشوں سے دریاؤں میں طغیانی ‘ چناب کے کٹاؤ سے مکین نقل مکانی پر مجبور

طوفانی بارشوں سے دریاؤں میں طغیانی ‘ چناب کے کٹاؤ سے مکین نقل مکانی پر مجبور

  

باگڑ سرگانہ ‘ گڑھ مہاراجہ ‘ سیت پور ( نمائندگان ) ملک بھر میں طوفانی بارشوں سے دریاؤں میں طغیانی ‘ چناب میں 2 لاکھ کیوسک پانی کی آمد متوقع ‘ (بقیہ نمبر33صفحہ7پر )

بیٹ کے مقام پر کٹاؤ بدستور جاری ہے ‘ مکین نقل مکانی پرمجبور ہو کر رہ گئے ۔ باگڑ سرگانہ سے نمائندہ پاکستان کے مطابق حالیہ بارشوں کی وجہ سے دریاؤں میں پانی کی سطح میں اضافہ ہونے سے ناقص انتظامات کے پیش نظرنقصان کا خطرہ کئی سالوں سے دریاراوی پراناہیڈسدھنائی کے مقام پرپل کے تین درئے بندہونے سے دریا کا بہاو صرف ایک طرف ہوتا ہے جس کی وجہ سے دادوآنہ قتال پور شکروالہ کنڈ سرگانہ اورکئی دیگرعلاقے پانی کی نذرہوجاتے ہیں‘ آج تک کسی نے اس طرف توجہ نہیں دی۔عوامی حلقوں نے حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ ان دروں کوکھول کر عوامی نقصانات اور پل کومحفوظ بنایاجائے ۔ گڑھ مہاراجہ سے نامہ نگار کے مطابق دریائے چناب کے پانی کا رُخ تبدیل ہو کرمغربی کنارے کی طرف ہونے سے اب تک موضع سیال فقیر،سنپال،کچا کبیرہ،چدھڑ،سمندوآنہ،جھنڈیر نیازی اور ولی محمد جھنڈیر کی سینکڑوں ایکڑ اراضی پرکاشت شدہ گندم کی تیار فصل ،آم کے باغات اور دیہی آبادیاں اب تک دریا بُردہوچکی ہیں۔ کاشتکاروں انور ،میاں رب نواز اوراللہ دتہ کا کہنا تھا کہ اگرسپربند باندھ کر دریا کے پانی کا رُخ نہ موڑا گیا تو دادل بند کے اندر کا سارا علاقہ دریائے چناب کی نظر ہو جائے گا۔عوامی حلقوں نے وزیر اعلٰی پنجاب میاں شہباز شریف سے فوری نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔ سیت پور سے نمائندہ پاکستان کے مطابق ملک بھر میں طوفانی بارشوں کا سلسلہ جاری ہے ،دریائے چناب اور دریائے سندھ میں طغیانی کے باعث بیٹ بلوچ اور کندائی کے مقام پر شدید کٹاؤ جاری ہے جس کی بناء پر ،کاشتکاروں کی لاکھوں روپے کی لاگت سے تیار سینکڑوں ایکڑ پر کھڑی فصلیں تباہ ہو گئی ،حکومت پنجاب کی طرف فلڈ ایمر جنسی کے احکامات جاری ہونے کے باوجود ڈی سی او مظفر گڑھ ،کمشنر ڈیرہ غازی خان اور محکمہ آبپاشی کے آفیسران نے چپ سادھ رکھی ،وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف کی 55کروڑ روپے کی گرانٹ سے سیت پور تا سرکی 60ہزار فٹ زیر تعمیر چندر بھان بند مکمل ہونے سے قبل ہی کٹاؤ کے سبب کمزور ہو چکا ہے جبکہ رپورٹس کے مطابق ہیڈ پنجند کے مقام پر دریائے چناب میں2لاکھ کیوسک پانی کی آمد متوقع ہے اگر بارشوں کا سلسلہ جاری رہا تو 55کروڑ روپے کی لاگت سے زیر تعمیر چندر بھان بند تنکوں کی طرح بہہ جائے گی ،کاشتکاروں اجمل گوپانگ ،امتیاز احمد ،طالب حسین ،عبدالمالک ،محمد اسحاق خان گوپانگ اور حاجی حضور بخش خان گبول نے صحافیوں کو بتایا کہ 3سال گزرنے کے باوجود حفاظتی بند مکمل نہ ہو سکا،ہر سال سیلاب کروڑوں روپے کی لاگت سے تیار فصلیں تباہ کر دیتا ہے ،انہوں نے وزیر اعلیٰ پنجاب میاں محمد شہباز شریف سے مطالبہ کیا ہے کہ فوری نوٹس لے کر سیت پور تا سرکی چندر بھان بند جنگی بنیادوں پر مکمل کیا جائے ۔

سیلاب

مزید :

ملتان صفحہ آخر -