معذور سی ایس ایس افسروں کو اہم محکموں میں پوسٹنگ کیوں نہیں دی جاتی ،ہائی کورٹ کا حکومت سے استفسار

معذور سی ایس ایس افسروں کو اہم محکموں میں پوسٹنگ کیوں نہیں دی جاتی ،ہائی کورٹ ...
معذور سی ایس ایس افسروں کو اہم محکموں میں پوسٹنگ کیوں نہیں دی جاتی ،ہائی کورٹ کا حکومت سے استفسار

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے سی ایس ایس کا امتحان پاس کرنے والے معذور شہریوں کو فارن سروس، پولیس سروس سمیت اہم سرکاری محکموں میں پوسٹنگز نہ دینے کے خلاف درخواست پر فیڈرل پبلک سروس کمیشن اور وفاقی حکومت سے جواب طلب کر لیاہے۔جسٹس شاہد وحید نے ایم یوسف سمیت دو طلباءکی درخواست پر سماعت کی، درخواست گزاروںکے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ فیڈرل پبلک سروس رولز 2014ءکے تحت سی ایس ایس کا امتحان پاس کرنے والے معذور طلباءکو فارن سروس، پولیس سروس، ایڈمنسٹریٹو سمیت 10اہم محکموں میں پوسٹنگ نہیں دی جاتی اور کہا جاتا ہے کہ معذور افسر ان اہم محکموں میں کام کرنے کے قابل نہیں ہیں، انہوں نے مزید مﺅقف اختیار کیا کہ آئین کے تحت تمام شہری برابر ہیں لیکن فیڈرل پبلک سروس کمیشن معذور طلباءکو امتیازی سلوک کا نشانہ بنا رہا ہے، اگر معذور طلباءسی ایس ایس کا امتحان پاس کر سکتے ہیں تو وہ اہم سرکاری محکموں میں بہتر فرائض بھی سرانجام دے سکتے ہیں، انہوں نے استدعا کی کہ فیڈرل پبلک سروس رولز 2014ءمیں ترمیم کا حکم دیا جائے اور معذور طلباءکو بھی اہم سرکاری محکموں میں پوسٹنگ دینے کا حکم دیا جائے، عدالت نے فیڈرل پبلک سروس کمیشن سے 26 اپریل تک جواب طلب کر لیا، عدالت نے آئندہ سماعت پر اٹارنی جنرل کو بھی واضح موقف کے ساتھ پیش ہونے کی ہدایت کی ہے۔

مزید :

لاہور -