خطرناک بیماری کا پتہ لگانے کے لئے گوگل نے ایسا کام کردیا کہ ڈاکٹروں کی نوکریاں خطرے میں پڑجائیں گی

خطرناک بیماری کا پتہ لگانے کے لئے گوگل نے ایسا کام کردیا کہ ڈاکٹروں کی ...

  

نیویارک(نیوزڈیسک) کسی بھی ماہر ڈاکٹر(پتھالوجسٹ)کے لئے سب سے مشکل کام یہ پتا لگانا ہے کہ مریض کینسر کا شکار ہے بھی یانہیں۔اکثر مریضوں کے بارے میں یہ علم ہی نہیں ہوپاتا کہ انہیں کینسر ہے یا نہیں اور تشخیص کے بغیر علاج نہیں کیاجاسکتا لیکن اب گوگل نے اس مشکل کا حل ڈھونڈنکالا ہے۔ گوگل اپنے پراجیکٹ GoogLeNetکے تحت اس پر کافی سالوں سے کام کررہا تھااور اس میں خاطر خواہ کامیابی ملی ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ مریض کی سلائیڈزجو کہ 10سے زائد گیگاپگسلز پر مشتمل تھی اور انہیں 40Xتک زوم بھی کیا جاسکتا تھا، کے ذریعے اس کی بیماری کی تشخیص کی گئی ۔اس طریقے سے بہت زیادہ ڈیٹا کو احاطہ کرنے میں مدد ملی اور اس طریقہ علاج سے پتھالوجسٹ سے بھی تیزی سے کینسر کا پتا لگایا جاسکے گا۔’’ایک پتھالوجسٹ کی تشخیص کے امکانات 73فیصد جبکہ GoogLeNetکے ذریعے امکانات کی تشخیص 89فیصد رہی۔‘‘ماہرین کا کہنا ہے کہ ابھی اس بات کا امکان نہیں کہ یہ طریقہ پتھالوجسٹ کا نعم البدل ثابت ہوگا اور ابھی اس میں مزید بہتری کی گنجائش موجود ہے اور ابھی اس پراجیکٹ پر مزید کام کرنا ہوگاتاکہ اسے بہترین بنایا جاسکے۔گوگل کا کہنا ہے کہ ابتدائی مراحل میں پتھالوجسٹ اسے استعمال کرکے خاطر خواہ مدد لے سکتے ہیں۔

مزید :

تعلیم و صحت -