10اضلاع کے 965سکول اے کیٹیگری میں شامل

10اضلاع کے 965سکول اے کیٹیگری میں شامل

لاہور(حافظ عمران انور)پنجاب کے 10 اضلاع میں تعلیمی اداروں کی سپیشل سیکیورٹی آڈٹ رپورٹ جاری، محکمہ داخلہ کی سپیشل برانچ کی جانب سے متعلقہ اضلاع کے 4ہزار 965 سکول اے کیٹیگری درجہ میں شامل۔ لاہور، راولپنڈی، شیخوپورہ، گوجرانوالہ، راولپنڈی فیصل آباد، سرگودہا،ساہیوال۔،ملتان ،ڈی جی خان اور بہالپور میں اے کیٹیگری والے سکول شامل ہیں۔ تفصیلات کے مطابق محکمہ داخلہ کی سپیشل برانچ نے پنجاب کے 10اضلاع کے تعلیمی اداروں کی سپیشل سیکیورٹی آڈٹ رپورٹ جاری کر دی ہے جس میں 4 ہزار 965سکولوں کو اے کیٹیگری میں شامل کیا گیا ہے ۔صوبے کے ان اضلاع میں لاہور کے 129،شیخوپورہ کے 490،گوجرانوالہ کے 1028،راولپنڈی کے 476 ،فیصل آباد کے 491 ،سرگودہاکے 458،ساہیوال کے 415،ملتان کے 713، ڈی جی خان کے 451 اور بہاولپور کے 314سکول اے کیٹیگری میں شامل ہیں ۔ محکمہ داخلہ کی طرف سے جاری کردہ رپورٹ کے مطابق پنجاب کے متعلقہ 112تعلیمی اداروں میں باؤنڈری وال موجود نہیں، ان میں ضلع ساہیوال کے 78 ،بہاولپور کے 16 اورسرگودہا کے 7 سکول شامل ،اس کے علاوہ شیخوپورہ کے 4،ملتان کے 3، گوجرانوالہ کا ایک ،ڈی جی خان کے 3 سکول بھی باؤنڈری وال سے محروم ہیں ۔رپورٹ کے مطابق فیصل آباد کے 14 بہاولپور کے 12 اور ساہیوال کے 9 سکولوں سمیت متعلقہ اضلاع کے 51 سکولوں میں خار دار تاریں موجود نہیں ہیں ۔پنجاب کے جن اضلاع کے سکولوں کی دیواریں کمزور ہیں ان میں ساہیوال کے 54، ڈی جی خان کے 6، گوجرانوالہ کے 4، لاہورکے 3 ،راولپنڈی کے 2، سرگودہا کے 2، بہاولپور کے 2 اور شیخوپورہ کا ایک سکول شامل ہے۔رپورٹ کے مطابق پنجاب کے 7اضلاع کے 21تعلیمی اداروں کے باہر چیک پوسٹیں نہیں بنائی گئیں ۔6اضلاع کے 10تعلیمی اداروں میں کوئی سیکورٹی گارڈز تعینات نہیں کیا جا سکا ۔6تعلیمی اداروں کے سیکورٹی گارڈز کے پاس ہتھیار ہی نہیں ہیں ۔ 6اضلاع کے 12تعلیمی اداروں کے گارڈ زائدالعمر ہیں جبکہ9اضلاع کے 232تعلیمی اداروں میں گارڈز تربیت یافتہ نہیں ہیں ۔پنجاب کے 4اضلاع کے 21 اے کیٹیگری کے تعلیمی اداروں میں سیکورٹی کیمرے نہیں لگائے جا سکے ۔پنجاب کے 10اضلاع کے 4ہزار 365 اے کیٹیگری کے تعلیمی اداروں میں سے 4ہزار 355تعلیمی اداروں میں واک تھرو گیٹ نصب نہیں کئے جا سکے جبکہ 4ہزار 942اے کیٹیگری کے تعلیمی اداروں میں سکینرز نصب نہیں ہیں ۔8اضلاع کے 1597تعلیمی اداروں میں سیکورٹی کے لئے بنکرز موجود نہیں ہیں ۔ 8اضلاع کے 628 تعلیمی اداروں میں کنکریٹ بیرئرز موجود نہیں ہیں ۔ واضح رہے کہ مذکورہ آڈٹ رپورٹ ایگریکلچرل یونیورسٹی پشاور ،باچا خان یونیورسٹی چار سدہ اور آرٍمی پبلک سکول پر دہشت گردانہ حملوں کے تناظر میں پنجاب کے تعلیمی اداروں کو محفوظ بنانے کے لئے ماہانہ بنیادوں پر جاری کی جاتی ہے ۔تعلیمی اداروں پر بڑھتے ہوئے دہشت گردانہ حملوں کو مد نظر رکھتے ہوئے فروری 2018میں محکمہ داخلہ نے پنجاب کے اے کیٹیگری کے تعلیمی اداروں کی سیکورٹی اور مذکورہ تعلیمی اداروں کے حالیہ سیکورٹی انتظامات کی جانچ پڑتال کیلئے سیکورٹی آڈٹ کیا گیا تھا جس کی حتمی رپورٹ جاری کی گئی ہے۔

ے کیٹیگری سکول

مزید : صفحہ آخر