نا اہل کرپٹ حکمرانوں کی لوٹ مار سے بین الاقوامی سطح پر پاکستان کی بد نامی ہوئی :پرویز خٹک

نا اہل کرپٹ حکمرانوں کی لوٹ مار سے بین الاقوامی سطح پر پاکستان کی بد نامی ...

صوابی (بیورورپورٹ)وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا پرویزخٹک نے کہا ہے کہنااہل اور کرپٹ حکمرانوں کی لوٹ مار کی وجہ سے بین الاقوامی سطح پر پاکستان کی بدنامی ہوئی ،ہماری ملک کی پاسپورٹ اور پاکستانی شہریوں کو بیرونی ممالک میں دہشتگرد کی نظر سے دیکھا جاتا ہے ، ،ان کی وجہ سے ادارے خراب ہوئے اور ہم ترقی کی دوڑ میں پیچھے رہ گئے ،عوام یہ حق رکھتے ہیں کہ ان سے پوچھیں کہ ہمارے بچے تعلیم سے کیوں محروم ہیں ،ہمارے ملک کے نوجوان باصلاحیت ہیں ان میں کسی چیز کی کوئی کمی نہیں ہے وہ دنیا کے ہر مشکل کام کا مقابلہ کرسکتے ہیں ، ان خیالات کا اظہار انہوں نے قائداعظم پبلک سکولز اینڈ کالجز پنج پیر میں تقسیم انعامات تقریب اور بعد ازاں گندف ،جھنڈااور جلبئی میں شمولیتی جلسوں سے خطاب کرتے ہوئے کیا ،اس موقع پر جے یو آئی کے تحصیل کونسلر عرفان جدون نے ساتھیوں سمیت تحریک انصاف میں شمولیت کا اعلان کیا ، اس موقع پر سپیکر خیبرپختونخوا اسمبلی اسدقیصر،قائداعظم پبلک سکولز اینڈ کالجزکے ڈائریکٹر عبدالوحید خان ،منیجنگ ڈائریکٹر مطلوب احمد نے بھی خطاب کیا ،جبکہ وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا پرویز خٹک اورسپیکر اسدقیصر نے نمایاں پوزیشن حاصل کرنے والے طلباء میں شلیڈ اور نقد انعامات تقسیم کیں،وزیراعلیٰ پرویزخٹک نے گندف خوڑ کی تعمیر کا اعلان بھی کیا، وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا پرویز خٹک نے کہا کہ دنیا میں ترقی و خوشحالی کے منازل طے کرنے والے ممالک کو ایماندار لیڈرز ملے جبکہ ہمارے یہاں کرپت اورچور حکمرانوں بنے جنہوں نے رشوت ،کرپشن اور کمیشن کے ذریعے ملکی وسائل کولوٹا اور عوام کی فلاح و بہبود کو پس پشت ڈالا، انہوں نے کہا کہ پچھلے ستر سالوں میں حکمرانوں نے صحت اور تعلیمی نظام کو مکمل تباہ کیا ،ہم نے اقتدار میں آکر سکولوں میں انگریزی تعلیم رائج کیااور ناظرہ قرآن و ترجمہ بھی لازمی قرار دیا ،جبکہ سودپرپابندی اور جہیز کیخلاف قانون سازی کی ،انہوں نے کہا کہ ہم نے اقتدار میں آکر سزا و جزا کا عمل شروع کردیا جس کے تحت صوبے کے 1400 اساتذہ کو بہتر کارکردگی نہ دکھانے پر گھر بھیج دئیے، انہوں نے کہا کہ سابقہ حکمرانوں سے ہمیں تباہ حال سٹرکچر ملا،پولیس کو سیاسی مقاصد اورسیاسی انتقام کیلئے استعمال کیا جاتا تھا ،میں خود اس نظام کا حصہ تھا لیکن جب عمران خان نے نظام بدلنے کے نعرے میں میدان میں آئے تو میں نے بھی ان کا ساتھ دینے کا فیصلہ کیا،عمران خان میرٹ کی بات کرتا ہے وہ اداروں کو آزاد بناکر عوام کے سامنے جوابدہ کرنے کی بات کرتا ہے ،ہم نے خیبرپختونخوا میں عمران خان ،کے خواب کو سچ کرکے دکھایا ، اداروں میں اصلاحات کئے ،پولیس کو سیاسی مداخلت سے آزاد کرادیاجبکہ سکولز،کالجز اور ہسپتالوں میں میرٹ پر بھرتیاں کیں،انہوں نے کہا کہ پختونوں کینام پر ووٹ لینے والوں نے کروڑوں روپے کے اثاثے بنائے اور کرپشن کے تمام ریکارڈ توڑ دئیے ،اسلام کے نام پر اقتدار میں آنے والوں کواسلام کیلئے ایک قانون پاس کرنے کی توفیق نہیں ہوئی ،اسکے برعکس ہم نے سود اورجہیز کے خلاف قانون سازی کی ،قرآن و ترجمہ کو لازمی قرار دیا ،ختم نبوتؐمضامین کو نصاب میں شامل کیا گیا ،آئمہ کرام کے لئے وظیفہ مقرر کردیا ، جس سے مولانا فضل الرحمن کے پیٹ میں مروڑ اٹھ رہاہے اور کہہ رہا ہے کہ این جی او کی رقم ہے حالانکہ سب جانتے ہیں کہ یہ صوبائی حکومت کا پیسہ ہے ،انہوں نے کہا کہ ہم نے اپنے بچوں کو قرآن کی تعلیم دلاکر ان کو سیاسی ملاؤں سے آزاد کرانا ہے اور سیاسی مولویوں کی سیاست کو ہمیشہ کیلئے دفن کردینگے ، انہوں نے کہاکہ ہم نے غریب عوام کی خاطر صوبے میں صحت انصاف کارڈ کا اجراء کیا ،جس سے آج غریب عوام سرکاری و پرائیوٹ ہسپتالوں میں مفت علاج کررہے ہیں،انہو ں نے کہا کہ حکمرانوں کی لوٹ مار کی وجہ سے بین الاقوامی سطح پر پاکستان کی بدنامی ہوئی ،ہماری ملک کی پاسپورٹ اور پاکستانی شہریوں کو بیرونی ممالک میں دہشتگرد کی نظر سے دیکھا جاتا ہے ،پرویزخٹک نے کہا کہ اگر ہمیں اس ملک کو ٹھیک کرنا اور ترقی کی راہ پر گامزن کرنا ہے تو اس کیلئے ملک کو ایک ایماندار لیڈر کی ضرورت ہے جو عمران خان کی شکل میں موجود ہیں ، عمران خان ہی ہمیں اس کرپٹ مافیا سے چھٹکارا دلاسکتے ہیں،انہوں نے کہا کہ عوام 2018 کے الیکشن میں نوزشریف ،آصف زرداری ،اسفندیار ولی خان اور مولانا فضل الرحمن کو یکسر مسترد کرکے پاکستان تحریک انصاف کو موقع دیں تاکہ پورے ملک میں انصاف کا بول بالا ہو ۔

مزید : کراچی صفحہ اول