مارٹن ڈاؤ ’لیڈرز ان اسلام آباد‘ بزنس سمٹ کی میزبانی کرے گا

مارٹن ڈاؤ ’لیڈرز ان اسلام آباد‘ بزنس سمٹ کی میزبانی کرے گا

کراچی (پ ر) گزشتہ سال منعقد ہونے والی پہلی کاروباری سربراہی کانفرنس کی کامیابی کے بعد مارٹن ڈاؤ Nutshell forum اور وزارتِ منصوبہ بندی، ترقی اور اصلاحات کے اشتراک سے سے دوسری ’’Leaders in Islamabad‘‘ کے نام سے ‘ بزنس سمٹ کی مشترکہ میزبانی کرے گا جو14 مارچ 2018 سے اسلام آباد کے سرینا ہوٹل میں شروع ہوگی اور 15 مارچ 2018 تک جاری رہے گی۔لیڈرز ان اسلام آبادبزنس سمٹ اعلیٰ درجے کی شہرت رکھنے والی اور بھرپور طریقے سے شرکت کیے جانے والی پاکستان کی کاروباری سربراہی کانفرنس ہے جس میں Ivy league جامعات سے تعلق رکھنے والے ممتاز پروفیسرز اور عالمی چیف ایگزیکٹو آفیسرز سمیت 20 بین الاقوامی مقررین شرکت کریں گے۔ لیڈرز ان اسلام آباد کاروباری بزنس سمٹ 2018 میں شرکت کرنے والے 800 وفود میں چین، GCC اور دیگر ریجنل ممالک کے کاروباری وفود بھی شامل ہوں گے۔اس سال کی سربراہ کانفرنس کا موضوع ’مستقبل کا انتشار‘ ہے جہاں جدت پسند، رہنما اور مستقبل کے حوالے سے غور و فکر کرنے والے افراد مل کر اپنے خیالات پیش کر سکیں گے۔ کانفرنس کے دیگر بہت سے ممتاز مہمانوں میں سے چند مقررین کے نام یہ ہیں: امریکا کی ایزن ہوور فیلوشپس کے عالمی صدر جارج دی لاما، گورنر سندھ محمد زبیر، وفاقی وزیر برائے پلاننگ اور ڈیولپمنٹ پروفیسر احسن اقبال۔مارٹن ڈاؤ کے چیئرمین جاوید آکھائی نے کہا کہ Nutshell forum اور وزارتِ منصوبہ بندی، ترقی اور ریفارم کے ساتھ دوسری ’لیڈرز ان اسلام آباد بزنس سمٹ‘ کی مشترکہ میزبانی مارٹن ڈاؤ کے لیے ایک اعزاز ہے۔ ترقی اور مکالمہ مارٹن ڈاؤ کے مرکزی نظریات ہیں، ہم اس بات پر یقین رکھتے ہیں کہ جب اہم کاروبار اور حکومتی کھلاڑی باہم ملتے ہیں تو ہم پاکستان کو خطے کے بڑے اقتصادی مراکز میں سے ایک بنا سکتے ہیں۔ ’لیڈرز ان اسلام آباد بزنس سمٹ‘ جدید خیلات کے اظہار اور اس پر گفتگو کرنے اور وفود کو اپنے کاروباری نمونوں کو مزید وسعت دینے میں مدد کے لیے بہترین پلیٹ فارم ہے۔ جنوری 2018 میں ڈیووس میں منعقدہ ورلڈ اکنامک فورم میں مارٹن ڈاؤ نے پاکستان کی طرف سے ناشتے کی مشترکہ میزبانی کی اور دنیا کے بہترین اداروں کے ساتھ باہمی تعامل ایک لاجواب تجربہ تھا۔ ’لیڈرز ان اسلام آباد بزنس سمٹ‘ اسی طرح کے نظریات پر بنائی گئی ہے جہاں چوٹی کے سربراہ اور مفکر اپنے متاثر کن اور شاندار تجربات کا اظہار اور ان سے فیض یابی کے دو دن گزاریں گے جو پاکستان میں کاروباروں کے مستقبل کو بہتر بنانے کا طویل راستہ ہے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر