نقیب اللہ قتل کیس میں مفرور ملزم راﺅ انوار نے چیف جسٹس کو خط لکھ کر ایسا مطالبہ کردیا کہ آپ کی بھی حیرت کی انتہا نہ رہے گی

نقیب اللہ قتل کیس میں مفرور ملزم راﺅ انوار نے چیف جسٹس کو خط لکھ کر ایسا ...
نقیب اللہ قتل کیس میں مفرور ملزم راﺅ انوار نے چیف جسٹس کو خط لکھ کر ایسا مطالبہ کردیا کہ آپ کی بھی حیرت کی انتہا نہ رہے گی

  


اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )سابق ایس ایس پی ملیر راﺅ انوا ر نے چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار کو ایک اور خط تحریر کر کے بینک اکاﺅنٹ کھولنے کا مطالبہ کردیا ۔نقیب اللہ قتل کیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس آف پاکستان نے کہا کہ راﺅ انوار کا ایک اور خط آیا ہے جسے فائل میں رکھوا دیا ہے ۔ان کا کہنا تھا کہ یہ معلوم نہیں خط اصلی ہے یا نقلی لیکن اس خط میں راﺅ انوار کہتے ہیں کہ اکاﺅنٹ کھول دیں ۔چیف جسٹس نے آئی جی سندھ سے استفسار کیا کہ کیا ایم آئی اور آئی ایس آئی آپ کی معاونت کر رہے ہیں جس پر انہوں نے کہا کہ دونوں ادارے مکمل مدد فراہم کر رہے ہیں ۔آئی جی سندھ نے مزید بتا یا کہ اب تک 12ملزمان کو گرفتار کیا جا چکا ہے۔اس موقع پر ڈپٹی اٹارنی جنرل نے بتا یا کہ سیکیورٹی اداروں کے مطابق تمام مشتبہ افراد نے موبائل فون بند کر دئیے ۔

واضح رہے کہ اس سے قبل بھی سابق ایس ایس پی ملیر راﺅ انوار نے چیف جسٹس سپریم کورٹ کو خط لکھا تھا جس میں نقیب اللہ محسود قتل کیس میں آزاد جے آئی ٹی بنانے کامطالبہ کیا گیا تھا۔سپریم کورٹ نے نقیب اللہ کیس میں جے آئی ٹی تشکیل دینے کافیصلہ کرتے ہوئے حکم دیا تھا کہ راﺅ انوار کو گرفتارنہ کیا جائے انہیں سپریم کورٹ آنے دیا جائے ۔

مزید : قومی