”میں نے جوتا عمران خان کو نہیں بلکہ نادیہ خٹک کو مارا تھا کیونکہ۔۔۔“ نادیہ خٹک کون ہے اور ملزم اسے جوتا کیوں مارنا چاہتا تھا؟ حیران کن بات کہہ دی

”میں نے جوتا عمران خان کو نہیں بلکہ نادیہ خٹک کو مارا تھا کیونکہ۔۔۔“ نادیہ ...
”میں نے جوتا عمران خان کو نہیں بلکہ نادیہ خٹک کو مارا تھا کیونکہ۔۔۔“ نادیہ خٹک کون ہے اور ملزم اسے جوتا کیوں مارنا چاہتا تھا؟ حیران کن بات کہہ دی

  


گجرات (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان پر  گجرات میں جوتا پھینکنے والے شخص احمد سفیان کا کہنا ہے کہ اس نے جوتا  چیئرمین پی ٹی آئی کو نہیں بلکہ عمران خان کیساتھ آئی لڑکی کو مارا تھا۔

یہ بھی پڑھیں۔۔۔”لو آ گیا میں جلوہ دکھانے۔۔۔“ کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کو اگلے میچوں سے پہلے ”ببر شیر“ کا ساتھ مل گیا، انگلینڈ کا وہ بلے باز دبئی پہنچ گیا جسے دیکھ کر باﺅلرزاوور نہ ملنے کی دعا کرتے ہیں، دیکھ کر آپ بھی کہیں گے ”چھکا تو یہ ثواب سمجھ کر مارتا ہے“ 

نجی ٹی وی چینل’’ 24 نیوز‘‘  کی رپورٹ کے مطابق گجرات کے علاقے ٹانڈہ میں عمران خان کی تقریر کے اختتام سے چند سیکنڈ قبل ان پر جوتا اچھالنے والے زیر حراست ملزم احمد سفیان کا کہنا ہے کہ اس نے عمران خان کو نہیں بلکہ ان کیساتھ آئی لڑکی نادیہ خٹک کو جوتا مارا تھا لیکن جوتا نادیہ خٹک کو لگنے  کی بجائے علیم خان کو لگ گیا۔ احمد سفیان کا کہنا تھا  کہ اس نے نادیہ خٹک کو اس لئے جوتا مارا کیونکہ وہ بے پردہ رہتی اور جلسوں میں ڈانس کرتی ہے۔

یہ بھی پڑھیں۔۔۔”پی ایس ایل کے میچ دیکھنے کیلئے تماشائی اس لئے نہیں آ رہے کیونکہ۔۔۔“ پی سی بی کی ایک غلطی نے دبئی میں سٹیڈیم ویران کر دئیے، طویل عرصے سے متحدہ عرب امارات میں کرکٹ کی کوریج کرنے والے صحافی نے انکشاف کر دیا 

واضح رہے کہ گجرات میں دو بار عمران خان کو جوتا مارنے کی کوشش کی گئی تھی اور دوسری بار اچھالا گیا جوتاسٹیج پر چیئر مین پی ٹی آئی کے ساتھ کھڑے  تحریک انصاف سینٹرل پنجاب کے صدر   عبد العلیم خان کو لگ گیا تھا  ،پی ٹی آئی رہنما ’’ جوتا کلب ‘‘کا ممبر بننے کے بعد برہم ہونے کی بجائے مسکرا کر سٹیج سے کپتان کے ساتھ لالہ موسی کے لئے روانہ ہو گئے تھے تاہم پنڈال میں تحریک انصاف کے کھلاڑیوں نے جوتا پھینکنے والے شخص کو موقع پر پکڑ کر شدید زدوکوب کیا اور بعد ازاں اسے پولیس کے حوالے کر دیا تھا۔واضح رہے کہ اس سے قبل لاہور کے معروف دینی ادارے جامعہ نعیمیہ میں سابق وزیر اعظم نواز شریف کو بھی تحریک لبیک کے ایک کارکن نے جوتا مارا تھا جسے سیکیورٹی اہلکاروں اور لیگی کارکنوں نے موقع پر ہی پکڑ کر شدید دھلائی کرنے کے بعد پولیس کے حوالے کر دیا تھا۔سیاسی راہنماؤں کی جانب سے ’’جوتا بازی‘‘ کی اس قبیح حرکت کی بھر پور مذمت کی گئی تھی تاہم یہ شرمناک رسم لاہور سے گجرات بھی پہنچ گئی ۔

۔۔۔احمد سفیان نے مزید کیا کہا؟ اس ویڈیو  میں دیکھیں۔۔۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /علاقائی /اسلام آباد /پنجاب /گجرات /لاہور