زرعی شعبہ کو خودکفیل بنانے کیلئے کسانوں کے مفادات کا تحفظ ضروری،اسد قیصر

زرعی شعبہ کو خودکفیل بنانے کیلئے کسانوں کے مفادات کا تحفظ ضروری،اسد قیصر

اسلام آباد (آن لائن )سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے کہا ہے پاکستان ایک زرعی ملک ہے اور اس کی معیشت کا دارومداربھی زراعت پر ہے اس لئے زرعی پیداوار میں اضافے اور شعبے کوخودکفیل بنانے کیلئے کسانوں کے مفادات کے تحفظ(بقیہ نمبر47صفحہ12پر )

اور انکو درپیش مسائل کو حل کرنا انتہائی ضر و ر ی ہے ۔انہوں نے کاشتکاروں کے حقوق کے تحفظ اور انکے مسائل کو حل کر نے کیلئے قانون سازی کرنے کے عزم کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہا ہم قانون کے دائرہ کار میں رہتے ہوئے کاشتکاروں کی معاونت کریں گے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے چیئر مین قائمہ کمیٹی برائے قومی تحفظ خوراک ا ور تحقیق راؤ اجمل خان کی سربراہی میں ملاقات کرنیوالے ارکان قومی اسمبلی کے وفد سے گفتگو کرتے ہوے کیا جنہوں نے بدھ کے روز پا ر لیمنٹ ہاؤس میں ملاقات کی،سپیکر کا مزید کہنا تھا زرعی اجناس کی درآمدپر ہمیں ہر سال قیمتی زرِمبادلہ صرف کرنا پڑتا ہے جس کو زراعت کے شعبے کو ترقی دیکر بچایا جا سکتا ہے،زراعت کی ترقی پاکستان کا ایجنڈاہے اس کی ترقی کی خاطر ہمیں سیاسی وابستگیوں سے بالا تر ہو کر کام کرنے کی ضرورت ہے، وہ روایات سے ہٹ کر پاکستان کی ترقی اور خوشحالی کیلئے کام کرنا چاہتے ہیں اور زراعت کی ترقی ، کاشتکار کی خوشحالی پاکستان کی خوشحالی انکا مشن ہے ۔اس موقع پر چیئرمین قائمہ کمیٹی برائے قومی تحفظ خوراک و تحقیق راؤ اجمل خان نے سپیکر کا شکریہ ادا کرتے ہوے سپیکر کے زرعی اجناس سے متعلق خصوصی کمیٹی کی تشکیل کو سراہا اور کہا کمیٹی کی تشکیل سے کاشتکاروں کے دل کی آواز کی ترجمانی کی گئی ہے،اس سلسلے میں ہر ممکن تعاون کا یقین دلاتے ہوئے کہااس خصوصی کمیٹی میں قومی اسمبلی میں موجود تمام سیاسی جماعتوں کو نمائندگی دی گئی ہے۔وفد میں راؤ اجمل خان کے علاوہ اراکینِ قومی اسمبلی ظہور حسین قریشی او ر علی گوہر خان بھی شامل تھے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر