پرووائس چانسلر پر حملہ ‘ نشتر میں تیسرے روز بھی ڈاکٹرز کا احتجاج

پرووائس چانسلر پر حملہ ‘ نشتر میں تیسرے روز بھی ڈاکٹرز کا احتجاج

ملتان ( وقا ئع نگار ) انسانی جانین بچانے والے ڈاکٹرز انسانی جانوں سے کھیلنے لگے۔ نشتر میڈیکل یونیورسٹی کے پرو وائس چانسلر پر قاتلانہ حملہ میں ملوث ملزم کی گرفتاری کے باوجود بھی نشتر ہسپتال میں ڈاکٹرز ہڑتال پر بضد رہے۔ڈاکٹرز کی جانب سے تیسرے روز بھی آوٹ ڈور وارڈز کو تالے لگا دئیے گیے جس کے باعث نشتر ہسپتال آنے والے دو ہزار سے زائد مریضوں کوگزشتہ روز کسی قسم کی علاج (بقیہ نمبر36صفحہ12پر )

کی سہولت میسر نہ ہو سکی،ہڑتال کے باعث کہیں شوگر کے مریض انسولین نہ ملنے پر ڈاکٹرز کو کوستے نظر آئے تو کہیں کوئی اپنے بیٹے کا علاج نہ ہونے پر پریشان نظر آیامریضوں کا کہنا تھا کہ جب ڈاکٹر پر قاتلانہ حملہ کرنے والا ملزم گرفتار ہو چکا ہے تو پھر مسلسل ہڑتال کا کیا جواز ہے دوسری جانب نشتر ہسپتال کے ڈاکٹرز نے سیکورٹی بل کی منظوری تک احتجاج جاری رکھنے کا اعلان کر دیا ہے جبکہ لوگوں کا کہنا ہے کہ رتبہ مسیحائی اور کام دل آزاری۔ ڈاکٹروں کی اپنے مفاد کیلئے آئے روز کی ہڑتالوں سے امید باندھ کر آنے والے غریب عوام کو مشکلات کا سامنا ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر