لاہور سے چھوٹے روٹس پر چلنے والی ٹرانسپورٹ کمپنیوں سے چونگی کے نام پر بھتہ وصولی

لاہور سے چھوٹے روٹس پر چلنے والی ٹرانسپورٹ کمپنیوں سے چونگی کے نام پر بھتہ ...

لاہور(جاوید اقبال )طاقت ور چونگی ٹھیکہ کمپنی کی من مانیوں اور اور چارچنگ کے باعث لاہور سے دور دراز مضافات کو جانے والی16 ٹرانسپورٹ کمپنیوں نے اپنی خدمات دینا بند کر دی ہیں۔تفصیلات کے مطابق ٹھیکے دار اسماعیل اینڈ کمپنی کی من مانی جاری ہے جس کے باعث نہ صرف مسافروں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے بلکہ ٹرانسپورٹ سے منسلک سینکڑوں خاندان بھی معاشی بد حالی کا شکار ہو چکے ہیں۔اور عوام سستی ٹرانسپورٹ سے محروم ہو گئے ہیں۔لاہور ٹرانسپورٹ کمپنی نے گجومتہ سے رائے ونڈ،ٹھوکر سے رائے ونڈ،لاری اڈہ سے شیخوپورہ ،مینار پاکستان سے شیخوپورہ ،بتی چوک سے مریدکے شیخوپورہ ،شاہدرہ سے مریدکے ،ننکانہ گجومتہ سے قصور ،لاہور سے مریدکے ، لاہور سے نارنگ ،کامونکی سمیت 16 مقامات سے مختلف کمپنیوں سے ٹرانسپورٹ سروس شروع کروائی۔ضلعی انتظامیہ نے چونگی فیس وصول کرنے کے لئے گزشتہ کئی برس سے اسماعیل اینڈ کمپنی کو ٹھیکہ دے رکھا ہے۔معاہدہ کے مطابق چونگی فیس روٹ کے مطابق اس کے ایک ٹکٹ کرایہ کے برابر ہے مگر حاجی اسماعیل اینڈ کمپنی ہر گاڑی سے مقررہ فیس سے 3گنا زائد وصول کر رہی ہے۔گجومتہ سے قصور چالیس روپے چونگی ریٹ ہے مگر ایک سو سترروپے وصول کیا جا رہاہے ۔ اس طرح دیگر روٹس پر چلنے والی گاڑیوں سے بھی 3 گنا زائد وصول کیا جاتا ہے۔ تنگ آ کر کمپنیوں نے روٹس پر بسیں چلانا ہی بند کر دی ہیں۔اس حوالے سے ٹھیکیدار حاجی اسماعیل سے بات کی گئی تو انھوں نے بتایا کہ میں گورنمنٹ کا ٹھیکے دار ہوں۔ ایک ارب رو پے سے زائد کاسالانہ ٹھیکہ ہے۔ میرے خلاف پرچے بھی ہوں جائیں تو وہ خارج ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ میرے خلاف در حقیقت پولیس افسران ہیں۔ یہ مقدمات درج کروانے میں اہم کردار ادا کرتے ہیں۔ میں بزنس مین ہوں ،اعلیٰ سطح پر تعلقات ہیں، اس کا مطلب یہ نہیں کہ میں کسی کو ماہانہ دیتا ہوں ۔اس حوالے سے اویس ٹریول کے ایم ڈی اویس بشیر نے اسماعیل اینڈ کمپنی پر الزام لگاتے ہوئے کہا کہ پورے لاہورکی انٹر سٹی ٹرانسپورٹ کی ہر گاڑی سے بھتہ وصول کیا جاتا ہے۔ ایک پورا مافیا سرگرعمل ہے ۔ انکی اور چارجنگ کے باعث کئی روٹس پر ٹرانسپورٹ بند ہوگئی ہیں۔ہم ان کے خلاف پورے ثبوت لے کر عدالت میں جائیں گے ۔وزیر اعلیٰ پنجاب اور چیف جسٹس آف پاکستان اس کا نوٹس لیں۔

مزید : صفحہ آخر