پشاور فزیکل تھراپی اور فارغ التحصیل تھراپسٹس کا احتجاجی مظاہرہ

پشاور فزیکل تھراپی اور فارغ التحصیل تھراپسٹس کا احتجاجی مظاہرہ

پشاور(سٹی رپورٹر)پاکستان فزیکل تھراپی ایسوسی ایشن،آل فزیکل تھراپسٹس اور فارغ التحصیل تھراپسٹس نے پاکستان فزیکل تھراپی کونسل کے قیام اور د یگر مطالبا ت کے حق میں پشاور پر یس کلب کے سامنے احتجاجی مظا ہر ہ کیا مظا ہر ے کی قیا دت ڈاکٹر قیصر خٹک اور ذوہیب علی کر ر ہے تھے ۔مظا ہر ین نے ہا تھو ں میں پلے کارڈز اور بینرز اٹھا ر کھے تھے جس پر حکومت کے حکومت کے خلاف مختلف نعرے درج تھے ۔مظا ہر ین کا کہنا تھا کہ 2018 میں وفاقی کابینہ کی جانب سے منظوری کے بعد پاکستان فزیکل تھراپی کونسل کے قیام کا بل وزارت صحت اور وزارت قانون کے درمیان لٹکا ہوا ہے اورپاکستان میں فزیکل تھراپی ایچ ای سی کے منظور کردہ ڈاکٹر آف فزیکل تھراپی پانچ سالہ پروگرام، دو سالہ ماسٹرز پروگرام اور پی ایچ ڈی پروگرام پر مشتمل ہے جس کی نگرانی پاکستانی فزیوتھراپسٹس کی نمائندگی کرنے والی پاکستان فزیکل تھراپی ایسوسی ایشن کرتی ہے۔انہوں نے کہاکہ پاکستان میں فزیکل تھراپی کے بقاء کیلئے کونسل کا قیام انتہائی اہمیت کا حامل ہے لیکن بدقسمتی سے فزیوتھراپسٹس کی نگرانی یا ریگولیشن کیلئے کسی طرح کی تنظیم یا ریگولیٹری باڈی نہیں ہے جبکہ کونسل کے قیام کے بل پر غور و خوض کیلئے یہی وقت ہے کہ ہمیں شرمندگی کا سامنا اور ہماری پریکٹس اور وقار داؤ پر لگا ہوا ہے۔انہوں نے حکومت سے مطا لبہ کیا ہے کہ کونسل کے قیام سے متعلق فوری قانون سازی کیلئے ڈرافٹ بل، سروس ا سٹرکچر، بامعاوضہ ہاؤس جاب، ضلعی، تحصیل اور سب تحصیل سطح پر فزیو تھراپسٹ کی آسامیوں کی تخلیق، آزادانہ پریکٹس کی منظوری اور پروفیشنل الاؤنس شامل ہیں۔ اگر مطالبات منظور نہ ہوئے تو صو بہ بھر احتجاجی تحر یک چلا ئینگے ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر