شانگلہ میں ناروا لوڈشیڈنگ تو دوسری طرف معمولی فالٹ سے بجلی منقطع

شانگلہ میں ناروا لوڈشیڈنگ تو دوسری طرف معمولی فالٹ سے بجلی منقطع

الپوری(ڈسٹرکٹ رپورٹر)شا نگلہ بھر میں غیر اعلانیہ اورناروا لوڈ شیڈنگ تو دوسری طرف معمولی فالٹ کیلئے پورے علاقے کی بجلی کاٹ دی جاتی ہے۔واپڈا الپوری سب ڈویژن میں سٹاف کی کمی،اسی ملازمین کے بجائے پورے سب ڈویژن میں 12اہلکاران تعینات ہیں۔سٹاف کی کمی نے صارفین کو اوور بلنگ اور بجلی بندش کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ بجلی بندش نے عوام کے ناک میں دم کردیا ۔شہری سراپا احتجاج بن گئے ،شانگلہ میں گزشتہ کئی دنوں سے ناروا لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ بدستور جاری،بارشوں اور برف باری کے دوران فالٹ کی وجہ کئی گھنٹے تک بجلی بندرہتی ہے ۔ آئے روز بجلی سپلائی بند رہی، ناروا لوڈ شیڈنگ سے کاروباری نظام شدید متاثر ۔ مقامی لوگوں کو شدید مشکلات کا سامنا۔ بجلی بندش سے ہسپتالوں میں مریضوں کے حالت خراب تو دوسری طرف سرکاری امور نمٹانے میں بھی مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ واپڈامیں سٹاف کی کمی اور غیر اعلانیہ اورناروا لوڈ شیڈنگ پرشانگلہ کے منتخب نمائندے کی خاموش تما شائی بنے بھیٹے ہیں۔ عوامی حلقوں کا شدید رد عمل ،ناروا بجلی بندش ،اوور بلنگ کو فوری طور ختم کرنے اور واپڈ امیں سٹاف کی کمی پوری کرنے کا مطا لبہ کیا ہے۔ شانگلہ میں شدید سردی اور بارشوں برف باری کے دوران کئی گھنٹے تک لوڈ شیڈنگ کرائی جاتی ہے جو اصل میں معمولی فالٹ کا نتیجہ ہوتا ہے۔بجلی بندش سے کاروباری زندگی ٹھپ ہوکر رہ گئی ہے ، دوسری جانب سٹاف کی کمی کی وجہ سے مسلسل اووربلنگ کا سلسلہ بھی جاری ہے اور اسی سٹاف کی کمی کی وجہ سے فالٹ کو ڈھونڈتے ڈھونڈ تے پورا دن گزر جاتا ہے اور بجلی بند ہوتی ہے۔شانگلہ میں کوئی انڈسٹری یا کوئی فیکٹری موجود نہیں تاہم غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ یہاں کے عوام کے ساتھ سراسر زیادتی اور منتخب نمائندوں کی نااہلی کے مترادف ہے،دوسری جانب شانگلہ میں مسلسل لوڈ شیڈنگ سے ہسپتالوں میں مریض کو بھی سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے، شانگلہ کے عوامی حلقوں نے وفاقی وزیر پانی و بجلی،پیسکو خیبر پختونخوا کے اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ شانگلہ میں جاری ناروا لوڈ شیڈنگ ،اووربلنگ کا سلسلہ ختم کرنے میں اپنا کردار ادا کریں،شا نگلہ میں محکمہ واپڈا میں سٹاف کی کمی کو پورا کرنے کیلئے ٹھوس اقدامات اٹھائیں۔۔

مزید : پشاورصفحہ آخر