الیکشن کمیشن نے ایم کیو ایم پاکستان سے منحرم ڈپٹی میئر کراچی ارشد وہرہ کو ناہل قرار دیدیا

الیکشن کمیشن نے ایم کیو ایم پاکستان سے منحرم ڈپٹی میئر کراچی ارشد وہرہ کو ...

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک،آئی این پی،این این آئی) الیکشن کمیشن نے ڈپٹی میئر کراچی ارشد وہرا کو نااہل قرار دے دیا۔چیف الیکشن کمشنر سردار محمد رضا خان کی سربراہی میں الیکشن کمیشن نے ڈپٹی میئر کراچی ارشد وہرا کی نااہلی کیلئے خالد مقبول صدیقی کی درخواست پر سماعت کی اور اپنا فیصلہ سنایا۔الیکشن کمیشن نے ڈپٹی میئر کراچی اور پی ایس پی کے رہنما ارشد وہرا کو نااہل قرار دے دیا، ارشد وہرا کو پارٹی سے منحرف ہونے پر نااہل کیا گیا۔الیکشن کمیشن کے فیصلے کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ایم کیو ایم پاکستان کے رہنما سینیٹر میاں عتیق نے کہا کہ ایم کیو ایم پاکستان کو آج ایک اور فتح نصیب ہوئی، الیکشن کمیشن نے یوسی 49 سے منتخب چیئرمین ارشد وہرا کو نااہل کردیا ، لوکل گورنمنٹ ایکٹ کے تحت پارٹی سے منحرف ہونے پر نااہلی ہوئی۔ ارشد وہرا ایم کیوایم پاکستان کے پلیٹ فارم سے ڈپٹی میئر کراچی منتخب ہوئے تھے تاہم وہ بعد میں پاک سرزمین پارٹی میں شامل ہوگئے۔دوسری جانب ارشد وہرہ نے الیکشن کمیشن کے فیصلے کو چیلنج کرنے کا ارادہ کر لیا ۔ بدھ کو الیکشن کمیشن نے ڈپٹی مئیر کراچی کی نااہلی کیس کا فیصلہ سنا دیا ۔ فیصلے کے مطابق ارشد وہرہ ایم کیو ایم پاکستان چھوڑ کر پاک سرزمین پارٹی میں شامل ہونے پر نااہل ہوئے ہیں۔ڈپٹی میئر کراچی کی نااہلی کیلئے ایم کیو ایم پاکستان نے الیکشن کمیشن میں درخواست دائر کی تھی۔ ضلع سنٹرل کراچی کی یونین کونسل 49سے چیرمین منتخب ہوئے تھے۔دوسری جانب نا اہل قرار دئیے گئے ڈپٹی میئر کراچی ارشد وہرہ کے وکیل سید حفیظ الدین نے کہاہے کہ الیکشن کمیشن کے فیصلے کے خلاف اپیل میں جانے کا حق رکھتے ہیں۔ الیکشن کمیشن کے باہر گفتگو کرتے ہوئے سید حفیظ الدین نے کہاکہ الیکشن کمیشن اور عدالتوں کا احترام کرتے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ ارشد وہرہ کے منحرف ہونے پر ان کو نااہل کیا گیا۔ انہوں نے کہاکہ ارشد وہرہ کا نام ایم کیو ایم لندن نے دیا تھا،ارشد وہرہ نے ایم کیو ایم لندن کی غداری کے باعث پارٹی تبدیل کی جبکہ ایم کیو ایم پاکستان اب ایک نئی جماعت ہے۔

ارشد وہرہ نااہل

مزید : صفحہ اول