پاک افغان شاہراہ پر پلوں کی تعمیر ناگزیر ہے،مراد حسین

پاک افغان شاہراہ پر پلوں کی تعمیر ناگزیر ہے،مراد حسین

  



خیبر (بیورورپورٹ)پاک افغان شاہراہ کے سات مقامات پر پلزتعمیر کر نا وقت کی ضرورت ہے بارشوں اور سیلابی ریلوں کی وجہ سے آئے روز شاہراہ گھنٹوں تک بند ہو تی ہیں تقریبا پانچ سال پہلے شاہراہ کو یو ایس ایڈ کی فنڈ سے تعمیر کیا گیا لیکن پل تعمیر نہ کرنے سے ٹرانسپوٹرز سمیت عام لوگ اور افغانستان آنے جانے والے مسافر شدید اذیت سے دو چار ہو تے ہیں جماعت اسلامی ضلع کے خیبر کے جنرل سیکرٹری مراد حسین آفریدی نے میڈیا سے گفتگو کر تے ہوئے کہا کہ پاک افغان شاہراہ پر اربوں روپے کی امپورٹ ایکسپورٹ ہو تی ہے جبکہ افغانستان سے بھی روزانہ ہزاروں کی تعداد میں لوگ اس شاہراہ پر آتے جا تے ہیں لیکن بارشوں کے دوران شاہر اہکے سات مقامات سیلابی ریلوں کی وجہ سے بند ہو تی ہیں جس کی وجہ سے درجنوں مال برادار ٹر الر سمیت ہزاروں کی تعدا د میں چھوٹے گا ڑیاں پھنس جا تی ہیں جس میں افغانستان سے آنے والے مریضوں سمیت بچے بوڑھے اور خواتین بھی شامل ہو تے ہیں شدید ازیت سے دو چار ہو تے ہیں اور پانچ چھ گھنٹوں تک شاہراہ بند ہو تی ہیں انہوں نے کہا کہ پاک افغان شاہر اہ کو تقریبا پانچ سال پہلے یو ایس ایڈ کی فنڈ سے تعمیر کیا گیا اس وقت جب فزیبلیٹی رپورٹ پیش کیا گیا تو اس میں شاہراہ کے سات مقامات پر پلز تھے لیکن بعد نامعلوم وجوہا ت کی بناء پر پلز منصوبے سے نکا دیا گیا انہوں نے کہا کہ سات ارب روپے شاہراہ کیلئے منظور کئے گئے تھے اس کثیر رقم سے پلز تعمیر کیا جا سکتا تھا لیکن پلز کو تعمیر نہ کرکے منصوبے کو ادھورا کر دیا گیا جس کی وجہ سے پانچ سال بعد عوام سخت مشکلات سے دوچار ہو تے ہیں مراد حسین آفریدی نے کہا کہ بارشوں کے دوران ہزاروں لوگ اذیت سے گزر رہے ہیں اور عام لوگ بھی سوشل میڈیا تصایر اور مشکلات شیئر کر رہے ہیں لیکن ممبر قومی ایم پی ایز اور سینٹر نے پر خاموشی اختیار کی ہے اور اس سلسلے میں اسمبلی کی فلور یا دوسرے فورم پر کھبی بھی بات نہیں کی جو قابل مذمت ہیں

مزید : ملتان صفحہ آخر