نوشہرہ،ملزم کی اراضی اونے پونے داموں پر فروخت کرنے کیخلاف احتجاج

نوشہرہ،ملزم کی اراضی اونے پونے داموں پر فروخت کرنے کیخلاف احتجاج

  



نوشہرہ (بیورورپورٹ)سابق آدم جی پیپر ملز نوشہرہ کیلئے سیکشن فور کے تحت اراضی دینے والے اراضی مالکان نے سابق آدم جی پیپر ملز اور موجودہ عادل انٹرنیشل پیپر ملز کی انتظامیہ کا ملز احاطے میں میں پلاٹینگ کر کے اسے منہ مانگے داموں فروخت کرنے کے خلاف سراپا احتجاج ملز کی خاطر دی گئی اراضی پر کارخانے یا ملز کے علاوہ پلاٹنگ کی خرید و فروخت نہیں مانتے ہیں اور یا خلاف قانون بھی ہے کیونکہ کارخانے کی غرض سے لی گئی اراضی پر صرف کارخانہ ہی لگے گا ہم اس غیر قانونی اقدام پر عادل انٹرنیشنل کی انتظامیہ اور مالکان کے خلاف بھر پر پر امن احتجاج، بھوک ہڑتالی کیمپ کے علاوہ قانونی جنگ بھی لڑیں گے ان خیا لات کا اظہار نوشہرہ امانگڑھ کے عمائدین ذاکر، مزدور رہنما حبیب اللہ، سابق کونسلر نورافضل خان گوجر، ملک امداد نے علاقے کے سینکڑوں عمائدین اور نوجوانوں کے ہمراہ نوشہرہ پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ 1952میں ہمارے آباو اجداد نے 938کنال 5مرلے زمین صرف اور صرف کارخانے کی غرض سے دی تھی تاکہ اس کارخانے میں مقامی افراد کو روزگار میسر ہو نہ کہ پلاٹنگ کی خرید و فروخت کیلئے انہوں نے کہا کہ آدم جی کا 1990کے بعد معظم علی خان نے21کروڑ روپے میں کارخانے کو اس معاہدے کے تحت لیا کہ اس میں کارخانہ شروع کیا جائے گا تاکہ اس علاقے سمیت صوبے کے دیگر علاقوں کے مزدوروں کو بہتر روز گار کے مواقع ملے لیکن روز گار کے مواقع فراہم کرنے کی بجائے اسی اراضی میں پلاٹنگ کرکے اس کو منہ مانگے داموں فروخت کیا گیا ہے اور کیا جا رہا ہے پریس کے مقررین نے مزید کہا کہ 21کروڑ روپے سے زائد کا تو اس کارخانے میں کاغذ اور گتہ سمیت مشنری تھی لیکن معظم خان سب کچھ فروخت کر دیا اور اب وہ پلاٹنگ کر کے ہماری زمینیں منہ مانگے داموں فروخت کر رہے ہیں انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم پاکستان عمران خان روزگار دینے کے وعدے کررہے ہیں ان کو چاہیے کہ وہ ملک بھر میں بند کارخانوں کو دوبارہ چالو کریں جس میں آدم جی پیپر ملز نوشہرہ، سرحد ٹیکسٹائل ملز قابل زکر ہیں انہوں نے کہا کہ اس سے قبل بھی ایک سازش کے تحت کریمی سٹیل ملز، ڈی ڈی ٹی ملز، سہیل جیوٹ ملز بند ہو کر ہاوسنگ سکیموں میں تبدیل ہو چکے ہیں انہوں نے وزیر اعظم پاکستان عمران خان، وزیر اعلیٰ خیبر پختونخواہ، وزیر دفاع پرویز خان خٹک سمیت دیگر اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ عادل انٹرنیشنل کے مالکان کو سابق آدم جی پیپر ملز کی کئی سو کنال اراضی میں پلاٹنگ کرنے اور اسے منہ مانگے داموں فروخت کرنے سے روکے بصورت دیگر ہم عادل انٹرنیشنل انتظامیہ کے خلاف بھوک ہڑتال سمیت پر امن احتجاج اور قانونی جنگ لڑیں گے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر