تعلیمی ادارے، سینما،شادی ہال، تھیٹر، سرحد یں بند، پریڈ منسوخ،پی ایس ایل کا شیڈول تبدیل، لاہور میں بھی میچ خالی سٹیڈیم میں ہونگے، غیر ملکی کھلاڑی واپس روانہ، اجتماعات، شادی تقریبات پر پابندی

      تعلیمی ادارے، سینما،شادی ہال، تھیٹر، سرحد یں بند، پریڈ منسوخ،پی ایس ...

  



اسلام آباد لاہور،کراچی، پشاور، کوئٹہ (جنرل رپورٹر، سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں)وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس ہوا جس میں کورونا وائرس کے خطرے کے پیش نظر ایران اور افغانستان کے ساتھ مغربی سرحدیں ابتدائی طور پر 14 روز کیلئے بند کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ وزارت داخلہ کی جانب سے جاری نوٹیفکیشن کے مطابق سرحدوں کی بندش کا اطلاق 16 مارچ 2020 سے ہوگا۔اس کے ساتھ ساتھ ملک بھر میں 5 اپریل تک مدارس سمیت تمام تعلیمی ادارے بھی بند رکھنے کا فیصلہ کیا گیا۔اجلاس میں کورونا وائرس کی روک تھام سے متعلق حکمت عملی پرغور کیا گیا اور معاون خصوصی برائے صحت ظفرمرزا نے اجلاس کو صورتحال سے آگاہ کیا۔اجلاس میں آرمی چیف، سربراہ پاک بحریہ اور سربراہ پاک فضائیہ نے بھی شرکت کی۔اجلاس کے بعد وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے اپنی ٹوئٹ میں کہا کہ قومی سلامتی کمیٹی کے اجلاس میں فیصلہ کیا گیا ہے کہ 5 اپریل تک ملک بھر کے تمام تعلیمی ادارے بند رہیں گے۔انہوں نے وضاحت کی کہ اس فیصلے کا اطلاق تمام نجی و سرکاری اسکولز، کالجز، جامعات، ووکیشنل سینٹرز اور مدارس پر ہوگا۔اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے بتایا کہ قوم کو پریشان ہونے کی ضرورت نہیں ہے، صوبے اور مرکزی حکومت ہر لمحے کی صورتحال پرنظر رکھے ہوئے ہیں، اللہ کا کرم ہے پاکستان میں کورونا وائرس کی وبا کنٹرول میں ہے۔وزیرخارجہ نے بتایا کہ بارڈر کو اگلے پندرہ روز کیلئے بند کرنا ہوگا،چین سے پھیلنے والے کرونا وائرس کی تعداد ملک میں بڑھنے لگی، صرف ایک روز کے بعد مزید سات کیسز سامنے آ گئے جس کے بعد پاکستان میں کرونا وائرس کے مریضوں کی تعداد 28 ہو گئی۔تفصیلات کے مطابق ملک بھر میں تمام اجتماعات پر پابندی لگا دی گئی۔ دو ہفتوں کیلئے سینما گھروں اور تھیٹرز کو بند کر دیا گیاہائیر ایجوکیشن کے اعلامیے کے مطابق جماعت نہم کے امٹانات کے باقی پرچے ملتوی کر دیئے گئے ہیں، مذہبی اجتماعات سے متعلق مشاورت کی ذمے داری وفاقی وزیر مذہبی امور نور الحق قادری کو دیدی گئی۔ملک بھر میں سکولوں سمیت تعلیمی اداروں کو تین ہفتوں کے لئے بند کر دیا گیا، شادی کے حوالے سے شادی ہالز کو بھی بند کر دیا گیا۔ پاکستان کی طرف سے کرتار پور جانے والوں پر پابندی لگا دی گئی جبکہ یوم پاکستان کی پریڈ بھی منسوخ کر دی گئی ہے صرف ایئرپورٹس سے بین الاقاموامی پروازوں کی اجازت ہو گی،وائرس سے متعلق آگاہی کیلئے میڈیا پر مہم چلائی جائے گی،جیلوں مین قیدیوں سے ملاقاتوں پر پابندی لگا دی گئی،شادی کی تقریبات اور عومی اجتماعات پر دو ہفتے کیلئے پابندی لگا دی گئی،تمام کچہریاں تین ہفتوں کیلئے بند کرنے کیلئے چیف جاٹس آف پاکستان سے درخواست کی جائے گی،۔وفاقی دارالحکومت میں مشیر اطلاعات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان اور وزیراعظم کے مشیر برائے نیشنل سکیورٹی ڈویڑن معید یوسف کے ساتھ پریس کانفرنس کرتے ہوئے وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا کا کہنا ہے کہ کرونا وائرس کے مزید کیسز سامنے آئے ہیں، نئے کیسز تفتان بارڈرز سے سامنے آئے ہیں۔ان کا کہنا ہے کہ 28 کیس جو سامنے آئے ہیں یہ سب دوسرے ممالک سے سفر کر کے آئے تھے۔ ہمارے پاس اس وقت کیٹس موجود ہیں۔ ہم نے 9 لاکھ لوگوں کو سکین کیا ہے۔معاون خصوصی برائے صحت کا کہنا تھا کہ بخار، سانس لینے میں تکلیف کھانسی کرونا کی بنیادی اعلامات ہیں، افراتفری نہیں پھیلنا چاہیے، میڈیا پر بہت بڑی ذمہ داری ہے۔ میڈیا کو طاقت دینا، سرپرستی کرنا حکومت کی ترجیح ہے۔ڈاکٹر ظفر مرزا کا مزید کہنا تھا کہ قومی جہاد میڈیا کے بغیر مکمل نہیں ہو سکتا، ملک میں تمام بڑے اجتماعات پر پابندی لگا دی گئی ہے۔ دو ہفتوں کیلئے سینما گھروں اور تھیٹرز کو بند کیا جارہا ہے۔ مذہبی اجتماعات سے متعلق مشاورت کی ذمے داری وفاقی وزیر مذہبی امور نور الحق قادری کو دی گئی ہے۔پریس کانفرنس کے دوران ان کا کہنا تھا کہ اس بیماری کی کوئی ویکسین ابھی تک نہیں بنی ہے، ہسپتالوں کے حوالے سے بھی تیاری ہو رہی ہیں۔ اس بیماری کو سیاست کا شکار نہ ہونے دیں۔ پورے ملک کو اس وقت یکجہتی کی ضرورت ہے۔معاون خصوصی برائے اطلاعات و نشریات کا کہنا تھا کہ جتنا چیلنجز حکومت کے لئے ہے اتنا ہی عوام اور میڈیا کے لیے بھی ہے، جیلوں میں قیدیوں سے ملنے والوں سے بھی تین ہفتے کے لئے پابندی ہو گی۔ڈاکٹر ظفر مرزا کا کہنا تھا کہ تمام پاکستان میں سکولوں کو تین ہفتوں کے لئے بند کیا جا رہا ہے، تمام تعلیمی ادارے کو بند کیا جا رہا ہے، شادی کے حوالے سے شادی ہالز کو بھی بند کیا جا رہا ہے۔پاکستان سپر لیگ کے حوالے ان کا کہنا تھا کہ پی ایس ایل بہت کامیابی سے چل رہی تھی، ہم میچز کرائیں گے مگر خالی سٹیڈیم ہونگے، پی ایس ایل کے اب کے اگے جو بھی میچ ہیں ان میں عوام نہیں ہونگے، لوگ اپنے گھروں مین ٹیلی ویڑن پر میچ دیکھیں گے، دوسرے ممالک میں کھیلوں کو بند کر دیا گیا،معاون خصوصی برائے اطلاعات و نشریات کا کہنا تھا کہ تفتان بارڈر ہر طرح کی آمدورفت کے لئے بند کر دیا گیا ہے، جب یہ وبا پھیلی تو ایران میں 6 ہزار سے زائد ہمارے زائرین تھے، طور خم، چمن اور تمام ویسٹرن بارڈر پر ہر طرح کی آمدورفت کے لئے بند کیا جا رہاہے۔ چمن بارڈر پہلے سے بند ہے، ہر طرح کی آمدورفت کے لئے بند ہے۔ڈاکٹر ظفر مرزا کا کہنا تھا کہ باہر سے متاثرہ لوگوں کو روکنے کے لئے اقدامات کرنے کی بہت ضرورت ہے جس میں اہم بارڈرز سے آتے ہیں۔ کرونا وائرس کے حوالے سے پہلی ترجیح ہے کہ اس کو روکیں، کرونا پر قومی رسپانس دینے کی ضرورت تھی۔ نیشنل سیکیورٹی کمیٹنے ایک کمیٹی تشکیل دی ہے۔ پاکستان میں اس وقت کنفرم 28 کیس ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ اس وقت دنیا میں کرونا وائرس 135 ممالک میں پھیل چکا ہے، دنیا میں پاکستان 48 واں ملک تھا جس میں کیس رپورٹ ہوئے، پاکستان میں ہم نے بروقت اقدامات کیے جس کی وجہ سے پاکستان میں آخری وقت کرونا رپورٹ ہوا۔ ہم صورتحال پر پوری نظر رکھے ہوئے ہیں۔ حکومت اپنی زمہ داری پوری کر رہی ہے۔اس موقع پر مشیر اطلاعات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کا کہنا تھا کہ پاکستانی عوام کا تحفظ ریاست کی زمہ داری ہوتی ہے۔ ہم سب متحد ہیں اور مشترکہ کاوشیں کرنے کی ضروت ہے، سندھ کے وزیراعلیٰ، وزیر صحت سندھ کے چیف سیکرٹری بھی اس اجلاس میں شریک تھے۔پریس کانفرنس کے دوران وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے نیشنل سکیورٹی ڈویڑن معید یوسف کا کہنا تھا کہ ہر طرح کی تعلیمی سرگرمیوں پر تین ہفتوں کے لئے پابندی لگائی جا رہی ہے۔ان کا مزید کہنا تھا کہ اگر افراتفری پھیلے گی تو سب کو نقصان ہوگا، کسی ایمرجنسی کا نفاز نہیں ہو رہا۔ درخواست کروں گا کوئی افراتفری نہ پھیلائیں۔ نینشنل ایمرجنسی کا کوئی نفاز نہیں ہوا، ا?ج تمام ایک بیج پر پر نظر آئے ہیں،کرتار پور کے حوالے سے معید یوسف کا کہنا تھا کہ کرتار پور راہداری پر پاکستان کی طرف سے جانے والوں پر پابندی عائد کر دی گئی ہے، بھارت کی جانب سے یاتری کرتارپور دربار صاحب آسکیں گے۔وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ کرونا وائرس کے پاکستان میں بھی کچھ کیسز آئے ہیں، امید ہے کرونا وائرس پر جلد قابو پا لیں گے۔تفصیلات کے مطابق جمعہ کو وزیراعظم عمران خان سے امریکی ڈیموکریٹ پارٹی کے رہنماطاہرجاوید نے ملاقات کی ،وزیر اعظم کے معاون خصوصی زلفی بخاری بھی ملاقات میں موجود تھے ۔ اس موقع پر پاکستان اورامریکاتعلقات، دونوں ملکوں میں تجارتی امور اور کروناوائرس کی رو ک تھام کیلئے امریکا میں اقدامات پر بھی گفتگو کی گئی پر وزیراعظم عمران خان نے کہا کروناوائرس کے پاکستان میں بھی کچھ کیسزآئے ہیں، امید ہے کرونا وائرس پر جلد قابو پا لیں گے۔وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ ملکی ترقی کراچی کی ترقی سے وابستہ ہے۔ شہر قائد ملکی معیشت میں انجن آف گروتھ کا کردار ادا کرتا ہے۔ ملکی معیشت کی ترقی کے برآمدات میں اضافہ جبکہ برآمدات میں اضافہ کو یقینی بنانے کیلئے ضروری ہے کہ کراچی کی بندرگاہیں اور نقل و حمل کی سہولتوں کو مزید بہتر بنایا جائے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے کراچی کی تعمیر و ترقی کیلئے وفاقی حکومت کی جانب سے مکمل ہونے والے اور نئے ترقیاتی منصوبوں کے حوالہ سے جائزہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔اجلاس میں وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی اسد عمر، وزیر برائے بحری امور سیّد علی حیدر زیدی، گورنر سندھ عمران اسماعیل، متعلقہ وفاقی و صوبائی سیکرٹریز و دیگر سینئر افسران نے شرکت کی۔وزیرِاعظم کو سندھ کیلئے وفاقی حکومت کی جانب سے اعلان کردہ 162 ارب روپے کے ترقیاتی پیکیج کے حوالے سے اب تک کی پیشرفت پر تفصیلی بریفنگ دی گئی۔اجلاس میں اب تک مکمل شدہ اور جون 2020ء تک مکمل کئے جانے والے منصوبوں خصوصاً کراچی کی تعمیرو ترقی کے لئے نئے ترقیاتی منصوبوں اور پبلک پرائیویٹ پارٹنر شپ کے تحت مختلف اہم منصوبوں پر بریفنگ دی گئی۔اجلاس کو بتایا گیا کہ سخی حسن فلائی، فائیو سٹار اور کے ڈی اے فلائی اووز، 6.4 کلومیٹر طویل نشتر روڈ جبکہ منگھو پیر سڑک کے ایک حصے کا افتتاح گذشتہ ہفتے کیا گیا ہے۔اجلاس کو بتایا گیا کہ گرین لائن بس ریپڈ ٹرانزٹ سسٹم کا انفراسٹرکچر مارچ 2021ء تک مکمل کرلیا جائے گا۔ بنارس سے جام چکرو تک 66 انچ کی واٹر سپلائی لائن کا 95 فیصد کام مکمل کر لیا گیا ہے جبکہ بقیہ کام اپریل تک مکمل کر لیا جائے گا۔کراچی میونسپل کارپوریشن کے فائر فائٹنگ سسٹم کی اپ گریڈیشن کے حوالے سے بتایا گیا کہ اب تک اس منصوبے پر ایک ارب سے زائد خرچ کئے جاچکے ہیں اس منصوبے کے تحت پچاس فائر ٹینڈرز سسٹم میں شامل کئے جائیں گے۔اجلاس میں جناح ایونیو پر فلائی اوور کی تعیمر، گرین لائن کو فعالیت کے حوالے سے پیشرفت، سندھ کے دیگر علاقوں میں وزیراعظم پیکیج کے حوالے سے ترقیاتی منصوبوں اور پبلک پرائیویٹ پارٹنر شپ کے تحت مختلف بڑے منصوبوں خصوصاً واٹر فلٹریشن پلانٹس، لیاری ایکسپریس وے کی بہتری، کراچی ناردرن بائی پاس کی توسیع وغیرہ جیسے منصوبوں کے حوالے سے بھی تفصیلی بریفنگ دی گئی۔اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ سندھ انفراسٹرکچر ڈویلپمنٹ کمپنی کی تنظیم نو اور استعداد کار میں اضافہ کیا جائے گا تاکہ ترقیاتی منصوبوں پر بروقت عملدرآمد کو یقینی بنایا جا سکے۔دریں اثناپاکستان کرکٹ بورڈ نے پی ایس ایل فائیو کے شیڈول میں تبدیلی کرتے ہوئے ایونٹ کے پلے آف میچز کو سیمی فائنل اور فائنل میں تبدیل کردیا ہے۔پی سی بی کی جانب سے کیے گئے فیصلے کے مطابق نئے شیڈول میں دونوں سیمی فائنلز 17 مارچ کو قذافی اسٹیڈیم لاہور میں کھیلے جائیں گے۔ پوائنٹس ٹیبل پر پہلی پوزیشن پر موجود ٹیم اب ایونٹ کی چوتھی بہترین ٹیم سے دوپہر 2 بجے پہلے سیمی فائنل میں مدمقابل آئے گی۔ پوائنٹس ٹیبل پر دوسری اور تیسری پوزیشنز پر موجود ٹیموں کے درمیان مقابلہ شام 7 بجے شروع ہوگا۔ایونٹ کا فائنل 18 مارچ بروزبدھ کو شام 7 بجے قذافی اسٹیڈیم لاہور میں شروع ہوگا۔ شیڈول میں تبدیلی تمام ٹیموں کے مالکان کی رضامندی سے کی گئی ہے۔دوسری جانب پی سی بی اس حوالے سے حکومتِ پنجاب سے مسلسل رابطے میں ہے۔پاکستان کرکٹ بورڈ نے حکومتِ پنجاب کی سفارش پر ایچ بی ایل پی ایس ایل 2020 کے لاہور میں شیڈول بقیہ میچزقذافی اسٹیڈیم لاہور کے بند دروازوں میں منعقد کروانے کا اعلان کیا ہے۔اس فیصلے کا اطلاق پی سی بی سے منظور شدہ کمرشل پارٹنرز، میڈیا نمائندگان اور دیگر سروس فراہم کرنے والے افراد پر نہیں ہوگا۔ اس کے علاوہ کھلاڑیوں، اسپورٹ اسٹاف اور فرنچائز مالکان کیاہلخانہ کو بھی قذافی اسٹیڈیم لاہور میں داخلے کی اجازت ہوگی۔پی سی بی کی جانب سے یہ فیصلہ ایونٹ میں شریک افراد کی صحت اور حفاظت کے پیش نظر کیا گیا ہے

۔اس حوالے سے 15 اور 18 مارچ کو شیڈول میچوں کے لیے خریدی گئی ٹکٹوں کی واپسی پی سی بی کی ری فنڈ پالیسی کے تحت بذریعہ ٹی سی ایس کردی جائیں گی۔جبکہلاہور میں شیڈول بقیہ میچز15 مارچملتان سلطانز بمقابلہ لاہور قلندرز بوقت دوپہر 2 بجے جبکہ17 مارچپہلا سیمی فائنل (1 بمقابلہ 4) بوقت دوپہر 2 بجے بمقام قذافی اسٹیڈیم لاہور جبکہ دوسرا سیمی فائنل (2 بمقابلہ 3)بوقت شام 7 بجے بمقام قذافی اسٹیڈیم لاہور جبکہ18مارچفائنل بوقت شام 7 بجے بمقام قذافی اسٹیڈیم لاہور میں ہو گا، پی ایس ایل فائیو سے متعلق پاکستان کرکٹ بورڈ نے بڑا اعلان کرتے ہوئے تمام غیرملکی کھلاڑیوں کو واپس جانے کا آپشن دے دیا جس پر کچھ کھلاڑیوں نے وطن واپس لوٹنے کا فیصلہ کر لیا۔کرونا وائرس کے پیش نظر سپر لیگ کیلئے آنے والے غیرملکی کھلاڑیوں کو فری ہینڈ ملنے کے بعد انہوں نے واپسی کیلئے سیٹیں کنفرم کروا لیں، پشاور زلمی کے لیونگسٹن، ڈاوسن، کارلوس بریتھ ویٹ کی واپسی ہو گی۔ پشاور زلمی کے ہی گریگری اور ٹام بینٹن بھی واپس جانے والوں میں شامل ہیں جبکہ ملتان سلطان کے وینس ریلی روسو بھی وطن واپس چلے جائیں گے۔ذرائع کے مطابق پی سی بی نے کھلاڑیوں کو واپس جانے کا آپشن دیا تھا اور اس حوالے سے تمام فرنچائزز کو بھی آگاہ کر دیا گیا تھا کرونا وائرس کی بڑھتی ہوئی وبا کو مد نظر رکھتے ہوئے اراکین پارلیمنٹ، پارلیمنٹ سٹاف اور دیگر پارلیمنٹ میں آنے والے مہمانوں کی حفاظت کو مدنظر رکھتے ہوئے چیئرمین سینیٹ محمد صادق سنجرانی نے ایوان بالاء کی کمیٹیوں کے اجلاس، تقریبات و پارلیمانی اجتماعات کو دو ہفتوں کے لئے منسوخ کر دیا۔اس سلسلے میں باضابطہ نوٹیفکیشن جاری کر دیا گیا۔کراچی میں کرونا وائرس کا ایک اور کیس رپورٹ ہو گیا، متاثرہ شخص نے اسلام آباد سے کراچی سفر کیا تھا۔ محکمہ صحت سندھ کے مطابق اب تک 251 میں سے 15 کیسز میں کرونا کی تصدیق ہوئی ہے۔ جن میں سے 13 مریض زیرعلاج ہیں۔ متاثرہ شخص کی بیرون ملک سفر کی ہسٹری دیکھی جا رہی ہے۔محکمہ صحت سندھ کے مطابق متاثرہ شخص کے اہل خانہ کے بھی ٹیسٹ کئے جا رہے ہیں۔ خیبر پختونخوا حکومت نے بھی کرونا خدشے کے پیش نظر تمام تعلیمی ادارے بند کرنے کا فیصلہ کر لیا، ہاسٹلز خالی کروانے کی ہدایات کے علاوہ سرکاری تقریبات پر بھی پابندی عائد کر دی گئی ہے۔خیبرپختونخوا کابینہ اجلاس میں کرونا کے حوالے سے اہم فیصلے، صوبے میں جاری میٹرک امتحانات بھی 15 دن کیلئے ملتوی کر دیئے جائیں گے۔ تعلیمی اداروں کے ہاسٹلز آج شام تک خالی کروانے کے احکامات کے علاوہ صوبے میں تمام سیاسی وسماجی اجتماعات پر پابندی بھی لگا دی جائے گی۔کابینہ فیصلے کے تحت وزیراعلیٰ کا سوات میں جلسہ معطل کر دیا گیا، عوام کو شادی بیاہ اور دیگر تقریبات کم کرنے کی ہدایت کی جائے گی۔وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان نے کورونا وائرس کو نہ صرف پاکستان بلکہ دُنیا کیلئے ایک چیلنج قرار دیتے ہوئے کہاہے کہ صوبائی حکومت اس چیلنج سے نمٹنے کیلئے پوری طرح تیار ہے۔ احتیاطی تدابیر کو اس وائرس سے بچنے کا بہترین ذریعہ قرار دیتے ہوئے اُنہوں نے عوام الناس پر زور دیا کہ وہ اجتماعات میں جانے سے گریز کریں، سماجی رابطوں کو کم سے کم کریں اورکسی بھی قسم کے خوف و ہراس کا شکار ہونے کی بجائے احتیاطی تدابیر پر عمل کریں۔طویل غور و خوض کے بعد کابینہ نے دیگر اقدامات کے علاوہ ابتدائی طور پر صوبے بھر کے تمام نجی و سرکاری تعلیمی اداروں کو پندرہ دنوں کیلئے بند کرنے اور سرکاری سطح کی سرگرمیوں میں پچاس سے زائد افراد کے اکھٹے ہونے پر پابندی لگانے کا فیصلہ کیا۔ اس سلسلے میں وزیراعلیٰ نے خود سے شروعات کرتے ہوئے آنے والے اتوار کے روز اپنے حلقے میں پہلے سے طے شدہ سرگرمیوں کو ملتوی کرنے کا اعلان کیا۔ سعودی عرب نے کرونا کے خطرے کے سبب اقامہ ہولڈرز کو واپسی کے لیے 72 گھنٹوں کی مہلت کے بعدسعودی ائیر لائن اور پی آئی اے کی ٹکٹیں نایاب ہونے کے سبب سعودی ائیر لائن کے دفاتر کے باہر مسافروں کی لمبی لائنیں لگ گئیں۔ پی ا?ئی اے کے مسافر بھی پریس کلب کے سامنے سراپا احتجاج بنے رہے۔۔مسافروں کا کہنا ہے کہ سعودی ائیر لائن کے پاس ٹکٹ موجود نہیں جبکہ 40 ہزار روپے والا ٹکٹ ڈیڑھ لاکھ روپے میں فروخت کیا جارہا ہے۔

سلامتی کمیٹی

بیجنگ/ووہان/اوٹاوا/ریو ڈی جنیرو/کینبرا/اقوام متحدہ/روم /اٹلی (مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں)دنیا بھر میں کرونا وائرس کا بحران مزید شدت اختیار کرگیاچین کی بجائے اب یورپ کرونا کا مرکز بن گیا ا ٹلی میں کورونا وائرس کے باعث مزید 250 افراد ہلاک ہوگئے اور مریضوں کی تعداد چین سے بھی زیادہ ہوگئی۔اٹلی میں کوروناوائرس کیمزید2 ہزار 547 کیسز سامنے ا?ئے ہیں جس کے بعد اٹلی میں کورونا وائرس کے زیر علاج مریضوں کی تعداد چین سے بھی تجاوز کر گئی۔چین میں 64 ہزار افراد کے صحت یاب ہونے کے بعد کورونا کے زیر علاج مریضوں کی تعداد13ہزار 486 ہے جبکہ اٹلی میں کورونا وائرس کیمریضوں کی تعداد 14 ہزار 955 تک پہنچ گئی ہے۔اٹلی میں اب تک ایک ہزار 266 افراد کورونا وائرس کے باعث ہلاک ہوچکے ہیں،کینیڈا کے وزیراعظم کی اہلیہ بھی کرونا وائرس کا شکار ہوگئیں جس کے بعد ج انہیں قرنطینہ میں رکھنے کا فیصلہ کرلیا گیا،امر یکی صدر سے ملاقات کرنے والے برازیلین عہدیدار میں بھی کرونا وائرس کی تصدیق ہوگئی جبکہ امریکہ سے حال ہی میں لوٹنے والے آسٹریلوی وزیر برائے داخلہ امور بھی کرونا وائرس کا شکار ہوگئے،اقوام متحدہ نے بھی اپنے ہیڈکوارٹر میں کرونا وائرس کے پہلے مریض کی تصدیق کردی،چین میں کرونا وائرس کی وباء دم توڑنے لگی ایک روز میں صرف 7ہلاکتیں اور8نئے مریضوں کی تصدیق ہوئی،اٹلی میں اموات1016،جموریہ کوریا میں 67 ہو گئیں،بھارت نے آئی پی ایل سمیت کھیلوں کی تمام سرگرمیوں اور مقابلوں پر پابندی لگا دی،نیپال نے غیر ملکیوں کے آن آرائیول ویزا کا عمل معطل کر دیا۔۔فلپائن کے اقوام متحدہ میں مستقل مشن کے نمائندہ میں کرونا وائرس کی تصدیق ہوگئی ہے۔اقوام متحدہ کے ترجمان نے کہا ہے کہ یہ اقوام متحدہ کے نیویارک میں قائم صدر مقام میں کرونا وائرس کا پہلا مصدقہ کیس ہے۔چین میں نوول کرونا وائرس کے باعث ہلاکتوں اور متاثرہ افراد کی تعداد میں واضح کمی آگئی،چینی صحت اتھارٹی نے کہا ہے کہ چینی مین لینڈ پر جمعرات کو نوول کرونا وائرس کے 8 نئے مصدقہ مریضوں اور 7ہلاکتوں کی رپورٹس موصول ہوئی ہیں۔قومی صحت کمیشن کے مطابق ہلاکتوں میں سے 6 صوبہ ہوبے اور ایک صوبہ شان ڈونگ میں ہوئی۔اسی دوران 33نئے مشتبہ مریض بھی سامنے آئے۔جمعرات کو ہی 1ہزار 318افراد کو صحت یاب ہونے پر ہسپتال سے فارغ کر دیا گیاجبکہ شدید بیمار افراد کی تعداد 237 کی کمی کے بعد 4ہزار20 رہ گئی۔ادھر اطالوی حکام کے مطابق اٹلی میں نوول کرونا وائر س کے تصدیق شدہ مریضوں کی تعداد12ہزار 839 تک پہنچ گئی ہے۔کرونا وائرس سے متعلق کیسز کی یہ تعداد گزشتہ روز کے مقابلے میں 2ہزار 249زیادہ ہے اور ان میں صحت یاب ہونے والے اور ہلاک والے افراد کی تعداد شامل نہیں۔۔جاپان کی وزارت صحت اور مقامی حکومتوں نے جمعہ کے روز کہا ہے کہ جاپان میں کرونا وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد مقامی وقت کے صبح ساڑھے 10 بجے تک 676 تھی۔وزارت صحت کے مطابق جاپان میں وائرس سے مرنے والوں کی تعداد اس وقت 26 ہے جن میں وہ تعداد بھی شامل ہے جو وائرس کے شکار کروز جہاز ڈائمنڈ پرنسز سے رپورٹ ہوئے جو ٹوکیو کے قریب یوکو ہامہ میں قرنطین کیا گیا ہے۔آسٹریلیا میں کروناوائرس کے مصدقہ کیسز کی تعداد 150سے بڑھ گئی ہے۔۔جمہوریہ کوریا میں نوول کرونا وائرس کے مزید110 مریضوں کی تصدیق ہوگئی ہے جس کے باعث مقامی وقت کے مطابق 24گھنٹے پہلے جمعہ کی آدھی رات کی نسبت مصدقہ مریضوں تعداد بڑھ کر 7ہزار979ہوگئی ہے۔ایک اور ہلاکت کی اطلاع موصول ہوئی ہے جس کے بعد ہلاکتوں کی تعداد67ہوگئی ہے جنوبی کیلیفورنیا میں موجود پرنسز کروز نے اعلان کیا ہے کہ وہ نوول کرونا وائرس کے پھیلا ؤ کی وجہ سے اپنی عالمی سرگرمیاں 60 دن کے لئے معطل کرے گا۔بیان میں کہا گیا ہے کہ نوول کرونا وائرس کے عالمی پھیلا ؤ کی وجہ سے پیدا ہونے والی غیر معمولی صورتحال کے پیش نظر اور بڑھتے ہوئے خطرات کی وجہ سے پرنسز کروزز رضاکارانہ طور پر اپنے 18 کروز جہازوں کی سرگرمیاں 2 ماہ کیلئے بند کررہا ہے جس کی وجہ سے 12 مارچ سے 10 مئی تک بحری سفر پر اثر پڑے گا۔بین الاقوامی سکی فیڈریشن(ایف آئی ایس) نے تصدیق کی ہے کہ 2020- 2019کے باقی 4 سکی جمپنگ ورلڈ کپ کے مقابلے کرونا وائرس کے پھیلا ؤ کی وجہ سے ملتوی کئے جائینگے۔سکائی فلائنگ ورلڈ چیمپئن شپ کو اگلے سیزن کے لئے ملتوی کیا جائے گا۔ورلڈکپ کے ملتوی ہونے والے مقابلوں میں 2ناروے میں مردوں کے مقابلے ناروے اور خواتین کے 2 مقابلے روس میں منعقد کئے جائینگے جوکہ اصل میں 12 مارچ اور 20 مارچ کو طے پائے تھے۔نیپال کی حکومت نے سیاحوں کو آن آرائیول ویزا کی سہولت اور ماؤنٹ قومولانگما کی تمام کوہ پیمائی سرگرمیوں کو عارضی طور پر معطل کرنے سمیت متعدد اقدامات اٹھائے ہیں یہ بات ایک نیپالی حکومت کے ایک سینئر عہدیدار نے بتائی۔بدھ کو عالمی ادارہ صحت کی جانب سے کرونا وائرس کو وبا قرار دینے کے بعد ہی نیپالی حکومت نے ہمالیائی ملک میں وائرس کے پھیلا کی روک تھام کیلئے یہ اقدام اٹھائے ہیں۔بھارتی دارالحکومت نئی دہلی کی مقامی حکومت نے کرونا وائرس پھیلنے کے خدشہ کے پیش نظر انڈین پریمیئر لیگ(آئی پی ایل) سمیت کھیلوں کی تمام سرگرمیوں اور مقابلوں پر پابندی لگا دی۔یہ۔سسوڈیا نے کہا کہ کرونا کا پھیلا روکنے کیلئے معاشرتی دوری ضروری ہے، جس کیلئے دہلی حکومت نے کھیلوں کے تمام اجتماعات(بشمول آئی پی ایل)، بڑے سیمینارز اور کانفرنسز کے انعقاد پر پابندی لگا دی ہے۔اس پابندی کا اعلان دہلی کے وزیراعلی اروند کیجریوال کی حکومت کی جانب سے کرونا وائرس کو ایک وبا قرار دینے اور شہر کے تمام اسکولوں، کالجوں اور سینما گھروں کو 31 مارچ تک بند رکھنے کے حکم کے بعد کیا گیا۔ آسٹریلیا کے وزیرداخلہ بھی کرونا وائرس کا شکار ہو گئے۔ وزیر داخلہ پیٹر ڈٹن میں کرونا وائرس کی تصدیق کی گئی۔ پیٹر ڈٹن کا کرونا وائرس کا ٹیسٹ کیا گیا جو کہ مثبت آیا ہے۔کورونا وائرس نے یورپ میں پنجے گاڑ دیے، مریضوں کی تعداد 23 ہزار سے زائد ہوگئی۔غیرملکی خبر ایجنسی کے مطابق صرف اٹلی میں 12 ہزار سے زائد مریض سامنے آگئے اور مزید 75 افراد جان سے گئے، جس کے بعد ہلاکتوں کی تعداد 1000 سے اوپر ہو گئی ہے۔وائرس سے بچاو کے لیے ڈنمارک میں دو ہفتوں کے لیے اسکول اور یونی ورسٹیاں بند کردی گئیں جبکہ پولینڈ اور یوکرین نے بھی یونی ورسٹیاں، تھیٹر اور میوزیم بند کردیے ہیں۔کورونا وائرس کے باعث بیلجیئم، بلغاریہ اور البانیہ میں بھی ہلاکتیں ہو ئیں، اس طرح وائرس اب 125ملکوں تک پھیل گیا۔دنیا بھر میں تیزی سے پھیلتے جان لیوا کورونا وائرس سے بچاو کے لیے نیپالی حکومت نے دنیا کی سب سے بڑی چوٹی ماونٹ ایورسٹ کو مہم جوئی کرنے والے کوہ پیماوں کے لیے بند کردیا۔غیر ملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق نیپال کی حکومت نے 14 مارچ سے 30 اپریل تک کوہ پیماوں کے اجازت نامے منسوخ کردئیے۔برطانوی حکومت کے ایک سینئر عہدیدار نے بتایا ہے کہ ملک میں کرونا وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد پانچ سے دس ہزار تک ہو سکتی ہے۔میڈیارپورٹس کے مطابق برطانوی عہدیدار کی طرف سے یہ خطرناک اعداد وشمار ایک ایسے وقت میں سامنے آئے ہیں جب دوسری برطانوی وزیر اعظم بورس جانسن نے کرونا وائرس سے نمٹنے کے لیے مزید ہنگامی اقدامات کا اعلان کیا تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ برطانیہ میں کرونا وائرس ایک نئے مرحلے میں داخل ہوگیا ہے اور ہمیں اس سے نمٹنے کے لیے ہنگامی اقدامات کرنا ہوں گے۔جانسن نے کہا کہ کرونا کے خلاف جنگ میں اب ہم اگلے مرحلے میں پہنچ رہے ہیں۔ ہم صرف اس بیماری کو زیادہ سے زیادہ پھیلنے سے روکنے کے ساتھ اس پر مکمل قابو پانے کی کوشش کریں گے۔

کرونا تباہی

مزید : صفحہ اول