محکمہ داخلہ مقبوضہ کشمیر کا سابق وزیر اعلیٰ فاروق عبداللہ کی رہائی کا حکم

      محکمہ داخلہ مقبوضہ کشمیر کا سابق وزیر اعلیٰ فاروق عبداللہ کی رہائی کا ...

  



نئی دہلی(آن لائن) مقبوضہ جموں وکشمیر انتظامیہ نے سابق وزیر اعلی فاروق عبداللہ کی فوری رہائی کا حکم دیا۔83سالہ فاروق عبد اللہ کو 5 اگست کو اپنے بیٹے عمر عبداللہ اور پی ڈی پی کی محبوبہ مفتی اور متعدد رہنماوں سمیت حراست میں لیاگیا تھا، جب حکومت نے آرٹیکل 370کے تحت جموں و کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کردی تھی اور سیکیورٹی کی پابندیاں اور مواصلاتی لاک ڈاون نافذ کردیا تھا۔مقبوضہ جموں و کشمیر کے محکمہ داخلہ کی جانب سے جاری آرڈر کے مطابق ڈاکٹر فاروق پر عائد پی ایس اے میں 11مارچ کو کی گئی توسیع واپس لے لی گئی ہے۔ حکم نامے کے مطابق جموں و کشمیر پبلک سیفٹی ایکٹ 1978کے سیکشن 19(1)کے تحت حاصل خصوصی اختیارات کے استعمال کے تحت ضلع مجسٹریٹ، سری نگر کے ذریعہ جاری حکم نامہ نمبر ڈی ایم ایس/پی ایس اے120 2019/کو جموں و کشمیر کی وزارت داخلہ نے منسوخ کر دیا ہے۔ رواں ہفتے کے آغازمیں حزب اختلاف کے متعدد رہنماوں نے مشترکہ بیان جاری کرتے ہوئے جموں و کشمیر کے تینوں سابق وزرائے اعلی کی رہائی کا مطالبہ کیاتھا۔ساوتھ ایشین وائر کے مطابق فاروق عبداللہ کے بیٹے عمر عبداللہ اور پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی کی صدر محبوبہ مفتی ابھی بھی پی ایس اے کے تحت حراست میں ہیں۔

رہائی حکم

مزید : صفحہ اول