"ہم اپنے غیر ملکی کرکٹرز کے ہر فیصلے کا احترام کرتے ہیں لیکن اپنے فینز کے لیے ۔ ۔ ۔" پشاور زلمی کے چیئرمین جاوید آفریدی بھی بول پڑے

"ہم اپنے غیر ملکی کرکٹرز کے ہر فیصلے کا احترام کرتے ہیں لیکن اپنے فینز کے لیے ...

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)پی ایس ایل کیلئے پاکستان آنے والے غیر ملکی کھلاڑیوں کے ٹورنامنٹ مکمل ہونے سے پہلے ہی واپس چلے جانے پر پشاور زلمی کے چیئرمین جاوید آفریدی نے بھی اپنے ردعمل کا اظہارکیا۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر دیئے گئے بیان میں جاوید آفریدی نے کہا”کورونا وائرس کی وجہ سے دنیا بھر میں احتیاطی تدابیرکے طور پر اقدامات اٹھائے جارہے ہیں۔پی ایس ایل کو ہمارے فینز اور غیر ملکی کرکٹرز نے مشکل وقت میں کامیاب بنایا۔ اس مشکل وقت میں ہم اپنے غیر ملکی کرکٹرز کے ہر فیصلے کا احترام کرتے ہیں۔ اپنے فینزکیلئے ہم پی ایس ایل کو جاری رکھیں گے“۔

واضح رہے کہ پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) کے میچز متاثر ہوئے ہیں وہیں غیر ملکی کھلاڑیوں کی واپسی کا سلسلہ بھی شروع ہو گیا ہے۔ پی سی بی نے بھی غیر ملکی اور مقامی کھلاڑیوں کو پیشکش کی ہے کہ جو کھلاڑی جانا چاہتا ہے وہ چلا جائے اور اگر کوئی مقامی کھلاڑی بھی پی ایس ایل سے دستبردار ہونا چاہے تو اسے کوئی روک ٹوک نہیں ہے۔

اس سے قبل جاوید آفریدی نے کہا تھا کہ میرا کرکٹنگ معاملات سے تعلق نہیں تاہم میری خواہش تھی کہ ہاشم آملہ اور ڈیرن سیمی کھیلیں۔میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ پی ایس ایل کو بہت محنت کے بعد پاکستان لائے، فینز کی مدد سے پاکستان سپر لیگ کامیاب ہوئی۔انہوں نے کہا کہ کوشش کریں گے اب مقامی کھلاڑیوں کو موقع دیں، کورونا کے پیش نظر کھلاڑیوں کی واپسی سے متعلق فیصلے میں پی سی بی سمیت سب کی رائے شامل ہے اور اس کے پیچھے ہم کھڑے ہیں۔

خیال رہے کہ پی ایس ایل سیزن فائیو کے غیر ملکی کھلاڑیوں نے وطن واپسی کیلئے کراچی سے دو فلائٹس میں سیٹیں بک کرالیں۔ذرائع نے ہم نیوز کو بتایا کہ نجی ائیر لائن ای کے-609 اور ای کے-603 سے غیر ملکی کھلاڑی اپنے وطن واپس جائیں گے۔واپس جانے والے کھلاڑیوں میں  پشاور زلمی کے لیونگسٹن، ڈاؤ سن، کارلوس بریتھ ویٹ، گریگری اور ٹام بینٹن شامل ہیں۔ملتان سلطان کے جیمز ونس اور رائلی روسو جبکہ کراچی کنگز کے ایلیکس ہیلز اور ڈیل پورٹ بھی واپس جارہے ہیں۔

مزید : کھیل