پی ٹی آئی کی جگہ (ن) لیگ یا پی پی آگئی تو کون سی تبدیلی آئیگی؟ سراج الحق

  پی ٹی آئی کی جگہ (ن) لیگ یا پی پی آگئی تو کون سی تبدیلی آئیگی؟ سراج الحق

  

        راولپنڈی (این این آئی)امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے کہا ہے کہ وزیراعظم کو اندازہ ہو گیا ہے اب کرسی بچانے کیلئے ان کے پاس وقت نہیں، وزیراعظم کے پاس دکھانے کو کوئی کارکردگی نہیں،انہوں نے کام کرنے کی بجائے پھر جلسے شروع کیے ہیں،وزیر اعظم سرکاری وسائل پر سیاسی دورے کر رہے ہیں،الیکشن کمیشن کی پابندی کے باوجودان کے سیاسی جلسے ظاہر کرتے ہیں کہ وہ کسی قانون کا احترام نہیں کرتے،وہ اداروں پر کیچڑ اچھال رہے ہیں جس طرح کی گالم گلوچ وہ اپنے جلسوں میں استعمال کررہے ہیں وہ ملکی سیاست کے لیے انتہائی خطرناک ہے،وزیر اعظم کہ رہے ہیں وہ قوم کی تربیت کررہے ہیں، ایسی تربیت سے لوگ پناہ مانگتے ہیں،مسائل کے حل کے لیے نئے الیکشن ہوں، عدم اعتماد کے بعد اگر پی ٹی آئی کی جگہ ن لیگ یا پی پی آگئی تو بھی کون سی تبدیلی آئیگی،اپوزیشن کا اتحاد مصنوعی اور مجبوری پر ہے،کسی اندرونی تبدیلی کی بجائے نئے انتخابات ہی مسئلے کا واحد حل ہے، عوام پرانے چہروں سے نجات چاہتے ہیں، قوم کو فیصلہ کرنے کا اختیار دینا چاہیے،وہ کس کا ساتھ دیتے ہیں۔ قوم نے تینوں کو آزما لیا، ملک کواسلامی نظام اور سٹیٹس کو سے نجات دلانا ہوگی،قوم اپنے حق کے لیے کھڑی ہو اور جماعت اسلامی کا ساتھ دے،جماعت اسلامی نے سٹیٹس کو کا حصہ بننے کی بجائے قوم کے پاس جانے کا فیصلہ کیا ہے، پیپلز پارٹی، ن لیگ اور پی ٹی آئی نے ملک پر آئی ایم ایف کو مسلط کیا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے راولپنڈی میں عوامی دھرنے سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر امیر جماعت اسلامی پنجاب شمالی ڈاکٹر طارق سلیم، نائب امیر صوبہ حافظ تنویر احمد، صدر جے آئی لیبر ونگ شمس الرحمان سواتی اور امیر ضلع راولپنڈی سید عارف شیرازی بھی موجود تھے۔ دھرنے میں خواتین، بچوں اور بزرگوں سمیت عوام کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ جماعت اسلامی کی مہنگائی، بے روزگاری، کرپشن اور سودی معیشت کے خلاف جاری دھرنوں کی تحریک کے سلسلہ میں جہلم اور چکوال میں بھی مظاہرے ہوئے جن سے نائب امیر جماعت اسلامی لیا قت بلوچ نے خطاب کیا۔ اتوار کوہی بہاولنگر میں ہونے والے بڑے دھرنے سے سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی امیر العظیم نے خطاب کیا۔راولپنڈی دھرنے سے خطاب کرتے ہوئے سراج الحق نے کہا کہ پاکستان ایک نظریہ اورلازوال جدوجہد کے نتیجے میں معرض وجود میں آیا مگر بدقسمتی سے 74 سالوں سے کرپٹ مافیا ملک پر مسلط ہے۔انہوں نے کہا کہ ہمارا مقابلہ استعمار کے وفاداروں سے ہے۔ قوم جان لے ن لیگ، پیپلز پارٹی اور پی ٹی آئی میں کوئی فرق نہیں۔ 

سراج الحق 

مزید :

صفحہ آخر -