ارکان قومی اسمبلی کو روکنا ان کی بنیادی آئینی حقوق سلب کرنا ہے: مریم اور نگزیب

  ارکان قومی اسمبلی کو روکنا ان کی بنیادی آئینی حقوق سلب کرنا ہے: مریم اور ...

  

       اسلام آ باد (آئی این پی) ترجمان مسلم لیگ ن مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ ارکان قومی اسمبلی کو روکنا ان کے بنیادی آئینی حقوق سلب کرنا ہے، عمران صاحب اگر اپنے ممبران پر یقین ہے تو پارلیمنٹ میں آنے پر پاپندی کیوں لگا رہے ہیں ممبران کو پارلیمنٹ آنے سے روکنا آئین کی مخالفت ہے ممبران پارلیمنٹ بھی آئیں گے اور آپ کو ووٹ بھی نہیں دیں گے  ا پنے جاری کردہ بیان میں ترجمان مسلم لیگ ن مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ اپنا ووٹ استعمال کرنا ہر شخص کا آئینی حق ہے، آئین کے آرٹیکل15 کے تحت رکن قومی اسمبلی ہو یا کسی عام شہری کی نقل وحرکت پر پابندی نہیں لگائی جاسکتی  ان کا کہنا تھا کہ مجلس شوری، پارلیمنٹ کے ارکان کو آئین نے مخصوص ذمے داریاں تفویض کی ہیں  ان ذمہ داریوں میں وزیراعظم کا انتخاب، عدم اعتماد میں شرکت، سپیکر کا انتخاب اور اس پر عدم اعتماد کے عمل میں حصہ لینا شامل ہے دوسری جانب مسلم لیگ (ن) کی ترجمان مریم اورنگزیب نے وزیر اطلاعات فواد چوہدری کے ٹوئٹ پر جواب دیتے ہوئے کہا ہے کہ ”راہ عدم اعتماد میں روتا ہے کیا،آگے آگے دیکھیے ہوتا ہے کیا“۔ اپنے بیان میں انہوں نے کہاکہ عدم اعتماد سے بنارسی ٹھگوں کے ٹولے کو گھر بھیجنا ہے،عمران صاحب اور کرائے کے ترجمانوں کی چیخیں بنتی ہیں، انجام جو نظر آگیا ہے  انہوں نے کہاکہ پاکستان کا ایک ہی ”بدقسمت لیڈر“ہے جسے پوری قوم گھر بھجوانا چاہتی ہے، وہ ہیں عمران صاحب،عمران صاحب اور کرائے کے ترجمانوں کے بیانات بجھتے چراغ کی آخری پھڑپھڑاہٹ ہے۔ انہوں نے کہاکہ پوری قوم کا مقصد صرف آپ سے نجات ہے، قوم کا وقت اور وسائل مزید نہ کریں، سامان تو آپ باندھ چکے ہیں، اب گھر جائیں۔

مریم اورنگزیب

مزید :

صفحہ آخر -