پولیس نے صمامہ کے اندھے کیس کو ٹریس کر کے دو کمسن قاتلوں کو گرفتار کر لیا

  پولیس نے صمامہ کے اندھے کیس کو ٹریس کر کے دو کمسن قاتلوں کو گرفتار کر لیا

  

صوابی(بیورورپورٹ) تھانہ صوابی پولیس نے دو ہفتے قبل قتل ہونے والے صمامہ کے اندھے کیس کو ٹریس کر کے دو کمسن قاتلوں کو گرفتار کر لیا۔ قاتلان مقتول کے قریبی دوست نکلے جب کہ مقتول کو زبانی تکرار پر قتل کیا گیا تھا۔ڈی پی او آفس سے جاری پریس ریلیز کے مطابق ستائیس فروری کو بمقام پنج پیر لار مقامی پولیس کو ایک بوری بند نعش ملی جس پر تشدد کے نشانات تھے، پولیس نے نامعلوم نعش کی شناخت معلوم کرنے کی غرض سے سوشل میڈیا پر تشہیر کرکے وارثان تک رسائی حاصل ہوئی۔اس سلسلے میں ڈی پی او صوابی محمد شعیب خان نے سختی سے نوٹس لیتے ہوئے مقامی پولیس کو کیس ٹریس کرنے اور ملزمان کی گرفتاری کا ٹاسک دیا۔ایس پی انوسٹی گیشن صوابی ملک محمد فیاض خان کی سربراہی میں ٹیم تشکیل دی گئی، جس کے نتیجے میں ڈی ایس پی صوابی فاروق زمان خان،ایس ایچ او صوابی سب انسپکٹر الطاف خان اور تفتیشی افسران نے پیشہ ورانہ پولیسنگ۔و تفتیش کی بدولت ملزمان تک رسائی حاصل کرکے دونوں ملزمان اویس ولد سرزمین اور عبداللہ ولد فضل حسین ساکنان مانیری کو گرفتار کیا گیا۔دوران تفتیش معلوم ہوا کہ ملزمان اویس اور عبداللہ مقتول صمامہ کے قریبی دوست تھے جنہوں نے اپنے دوست صمامہ کو زبانی تکرار کے نتیجے میں تشدد کرکے قتل کیا اور بعد میں حقائق چھپانے کے لئے لاش کو بوری میں بند کرکے پنج پیر لار کے مقام پر پھینک دی۔ملزمان بالا نے پولیس کے روبرو اعتراف جرم کرلیا، جن سے مزید تفتیش جاری ہے۔اہلیان علاقہ نے مقامی پولیس کی اس کامیاب کاروائی پر صوابی پولیس کی کارکردگی کو سراہا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -