ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال وہاڑی ماہر اینستھز یا کیخلاف ڈاکٹر کی درخواست فائلوں میں دفن‘ چیف ایگزیکٹو آفیسر سے کارروائی کا مطالبہ 

  ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال وہاڑی ماہر اینستھز یا کیخلاف ڈاکٹر کی درخواست ...

  

وہاڑی (بیورورپورٹ، نامہ نگار)  ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتالوہاڑی میں ماہر اینستھزیاڈاکٹر کے غیر پیشہ ورانہ رویہ کے خلاف چار لیڈی ڈاکٹرز کی جانب سے دی جانے والی کاروائی کی درخواست دبا دی گئی  تفصیل کے مطابق چار لیڈی ڈاکٹرز گائناکالوجسٹ ڈاکٹر غزالہ کمال، ڈاکٹر رضیہ عدیل رانا، ڈاکٹر عائشہ رضوان(بقیہ نمبر40صفحہ6پر)

، ڈاکٹر سمیعہ غفار نے ماہر  اینستھزیا ڈاکٹر رمیشہ افتخارکے غیر زمہ دارانہ اور گیر پیشہ وارانہ رویہ کے خلاف ایم ایس ڈاکٹر شاہد اقبال کو درخواست گزاری گئی جنہوں نے درخواست پر کاروائی کرنے کیلئے درخواست چیف ایگزیکٹو آفیسر ہیلتھ کو بھجوا دی جنہوں نے درخواست پر کسی قسم کی کاروائی میں کوئی دلچسپی نہ لی اور مبینہ طور پر درخواست دہندگان ڈاکٹرز نے احتجاج کیا تو چیف ایگزیکٹو آفیسر ہیلتھ نے 8مارچ 2022کو ماہر اینستھزیا کو جواب دہی کیلئے ریکارڈ سمیت طلب کیا لیکن وہ دو ماہ میں صرف دو مریضوں کو اینستھزیا دینے کا ریکارڈ پیش کر سکی جبکہ ہسپتال میں درجنوں ایمر جنسی آپریشنل کیس ریکارڈ کئے جاتے ہیں اس کی رپورٹ میں چار مریضوں کو  اینستھزیا کی بجائے کمر میں انجکشن کے ذریعے بے ہوش کیا گیا تھا ماہر  اینستھزیاڈاکٹر کے بارے میں ہسپتال کے ذرائع نے مزید انکشاف کیا کہ ڈاکٹر رمیشہ افتخارکے مریضوں کو  اینستھزیا نہ لگانے کی وجہ سے کمر میں انجکشن لگا کربیہوش کیا جاتا ہے جوکہ مریضوں کی زندگی اور صحت کیلئے انتہائی خطرناک ہے ا س سلسلہ میں مقامی سیاسی و سماجی رہنماں نے گہری تشویش کا ا ظہار کرتے ہوئے  وزیر اعلی پنجاب اور وزیر اعظم پاکستان سے کاروائی کا مطالبہ  کیا ہے۔ 

مزید :

ملتان صفحہ آخر -