کفالت سنٹرز پر ڈیوائس مالکان‘ نوسر بازوں کی ڈیل‘ لوٹ مار تیز 

  کفالت سنٹرز پر ڈیوائس مالکان‘ نوسر بازوں کی ڈیل‘ لوٹ مار تیز 

  

کرمداد قریشی (نامہ نگار)کرمداد قریشی احساس کفالت سنٹر پر ڈیوائس مالکان اور نوسربازوں کا گٹھ جوڑ  سامنے آگیا  ڈیوائس مالک کی جیب سے  2 درجن سے زائد شناختی کارڈ برآمدکرلیے، کٹوتی نہ دینے والی خواتین کئی کئی دن ذلیل خوار  ہورہی ہے تفصیل کے مطابق گورنمنٹ بوائز ہائی سکول کرمداد قریشی میں قائم احساس کفالت سنٹر پر ڈیوائس مالکان اور نوسربازوں کا گٹھ جوڑ واضع طور پر سامنے آگیا، نوسرباز اپنے اپنے علاقوں اور سنٹر پر سادہ لوح خواتین سے ڈیل کرکے شناختی کارڈ اکٹھے کرتے  ڈیوائس مالک کو دے دیتے ہیں، پھر ڈیوائس مالک  انہی خواتین کو پکار کر امدادی(بقیہ نمبر3صفحہ6پر)

 رقم دیتا رہتا ہے، ڈیوائس کانٹر کے قریب کھڑی خواتین سے شناختی کارڈ نہیں لیا جاتا،ایسی خواتین سارا سارا دن انتظار میں کھڑی ذلیل وخوار ہوتی رہتی ہیں، احتجاج کرنے  پر کارڈ لیکر چیک کرکے واپس کردیا جاتا ہے کہ آپ کے کارڈ میں امدادی رقم نہ ہے م، اسی طرح کئی کئی دن ذلیل وخوار ہونے پر سادہ لوح خواتین کٹوتی رقم دینے پر مجبور ہوجاتی ہیں، عوامی شکایات پر پریس کلب کرمداد قریشی کے صحافیوں نے سنٹر وزٹ کیا، تو ایک ڈیوائس مالک کی جیب  سے مک مکا والے 2 درجن سے زائدشناختی کارڈ برآمد ہوئے، سنٹر پر موجود مستحق خواتین نے احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ ڈیوائس مالکان اور نوسربازوں کے آپس میں  گٹھ جوڑ کا الزام لگاتے ہوئے کہا کہ کٹوتی رقم دینے والی خواتین کو فورا امدادی رقم مل جاتی ہے، رقم نہ دینے والی خواتین کئی کئی دن سنٹر پر ذلیل وخوار ہوتی رہتی  ہیں۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -