سندھ انرجی ایفی شینسی اینڈ کنزرویشن ایجنسی کی تشکیل پر کام جاری ہے: امتیاز احمد شیخ

سندھ انرجی ایفی شینسی اینڈ کنزرویشن ایجنسی کی تشکیل پر کام جاری ہے: امتیاز ...

  

      کراچی(اسٹاف رپورٹر)وزیر توانائی سندھ امتیاز احمد شیخ نے کہا ہے کہ سندھ حکومت، سندھ انرجی ایفی شینسی اینڈ کنزرویشن ایجنسی کی تشکیل کے لئے تیزی سے پیش رفت کررہی ہے تاکہ صوبے میں بنائے جانے والے بجلی کے آلات اور سامان کو بجلی بچانے کے بین الاقوامی معیار کے مطابق مینوفیکچر کیا جاسکے۔امتیاز احمد شیخ نے کہا کہ توانائی کا ایک یونٹ بنانے میں جتنا خرچ آتا ہے اس سے کئی گنا کم خرچ سے بجلی کا ایک یونٹ بچایا جاسکتا ہے۔ اس لئے سندھ حکومت کی ترجیح ہے کہ صوبے میں بجلی کے آلات اور سازو سامان کو بین الاقوامی معیار کے مطابق مینوفیکچر کرکے توانائی اور سرمائے کو ضائع ہونے سے بچایا جاسکے۔یہ بات انہوں نے آج محکمہ توانائی سندھ کے دفتر میں عالمی بنک کے وفد کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے کہی۔امتیاز احمد شیخ نے کہا کہ وفاق میں نیشنل انرجی ایفی شینسی اینڈ کنزرویشن اتھارٹی ایکٹ 2016 کی طرز پر صوبے میں سندھ انرجی ایفی شینسی اینڈ کنزرویشن ایجنسی (سیکا)کی تشکیل پر تیزی سے کام جاری ہے۔انہوں نے کہا کہ سیکا صوبے کی تمام پبلک سیکٹر عمارات کا انرجی آڈٹ کراکے ان تمام عمارتوں میں عالمی معیار کے مطابق انرجی ایفی شینٹ آلات لگانے کو یقینی بنائے گی تاکہ بجلی کے کثیر ضیاع کو بچایا جاسکے۔امتیاز احمد شیخ نے کہا کہ سیکا کے تحت صوبے کی تمام صنعتوں کے پرانے انرجی آلات کو انرجی ایفی شینٹ ایکوپمنٹ سے تبدیل کیا جائے گا۔وزیر توانائی سندھ نے کہا کہ صوبے میں گھریلو ضروریات کے بجلی آلات اور سازو سامان کی بھی انرجی ایفی شینسی کے بین الاقوامی معیار کے مطابق مینوفیکچرنگ کو یقینی بنایا جائے گا جس سے گھریلو صارفین کو بہتر کارکردگی اور کم بجلی خرچ کرنے کی صلاحیت کے حامل آلات مہیا ہوسکیں گے جس سے صارفین کو بجلی کے کمتر یونٹوں پر مبنی بل ملیں گے جن سے صارفین پر بجلی بلوں کے بوجھ میں بھی کمی آئے گی اور معیاری بجلی سازو سامان اور آلات بھی مارکیٹ سے باآسانی مل سکیں گے۔اجلاس میں عالمی بنک کے پاکستان میں کنٹری ڈائریکٹر اور دیگر نمائندوں کے علاو ہ سیکریٹری توانائی سندھ ابوبکر مدنی اور دیگر افسران بھی موجود تھے۔

مزید :

صفحہ آخر -