پولیس مقبوضہ کشمیر میں دانستہ طورپر امن کی فضا خراب کررہی ہے‘سید علی گیلانی

پولیس مقبوضہ کشمیر میں دانستہ طورپر امن کی فضا خراب کررہی ہے‘سید علی گیلانی


سرینگر (اے پی پی) مقبوضہ کشمیرمیں بزرگ حریت رہنماء سید علی گیلانی نے مقبوضہ علاقے میں بھارتی پولیس کی طرف سے کشمیری نوجوانوں پرظلم و تشدد، گرفتاریوں اور مسلسل چھاپوں پر شدید تشویش کا اظہار کیا ہے ۔ کشمیر میڈیا سروس کے مطابق سید علی گیلانی نے سرینگر میں جاری ایک بیان میں کہا ہے کہ مقبوضہ علاقے میں بھارت کے نام نہاد انتخابات سے قبل اور اس کے بعد کشمیری نوجوانوں کو جس طرح بدترین ظلم وتشدد کا نشانا بنایا جارہا ہے اسکا مہذب معاشرے میں تصور بھی نہیں کیا جاسکتا ۔ انہوں نے کہاکہ پولیس ظلم و تشدد کرکے کشمیری نوجوانوں کو پتھراؤپر اکسانے کے ذریعے مقبوضہ علاقے کے امن میں خلل ڈال رہی ہے۔ سید علی گیلانی نے کہاکہ مقبوضہ علاقے کے تمام پولیس اسٹیشنوں اور چوکیوں کو جیلوں میں تبدیل کر دیا گیا ہے۔

جہاں ہزاروں کشمیری نوجوان اور طالب علم نظربند ہیں۔ انہوں نے کہاکہ پولیس دانستہ طورپر بھارت نواز سیاست دانوں کے مفادات کا تحفظ کرنے کیلئے مقبوضہ علاقے میں عدم استحکام اور غیر یقینیت کی صورتحال پیدا کر رہی ہے ۔ انہوں نے کہاکہ بارہمولہ ، بانڈی پورہ اور سوپور کے عوام نوجوانوں کی گرفتاریوں کے خلاف مسلسل 7مئی سے مکمل ہڑتال کر رہے ہیں اورآئی جی پولیس نے خود اعتراف کیا ہے کہ ابھی تک چند ایک کشمیریوں کو ہی رہا کیا گیا ہے ۔ سید علی گیلانی نے کہاکہ اب بھی شوپیان ،بانڈی پورہ ،حاجن،سمبل ، پلوامہ ، سوپور،کپواڑہ اور کاکہ پورہ کے پولیس اسٹیشنوں میں بڑی تعداد میں کشمیری نوجوان نظربند ہیں جنہیں ذہنی اور جسمانی تشدد کا نشانہ بنایا جارہا ہے۔ انہوں نے کہاکہ حاجن کے رہائشی عبدالحمید پرے ، اسداللہ پرے ، معراج الدین اورپلوامہ کے رہائشی وسیم بشیر پر کالا قانون پبلک سیفٹی ایکٹ لاگو کر نہیں انہیں بالترتیب کٹھوعہ، ادھمپور، کپواڑہ اور کٹھوعہ جیلوں میں منتقل کردیا گیاہے ۔ بزرگ رہنما نے سرپنچوں سے کہا ہے کہ وہ بڑی تعداد میں استعفیٰ دیں تاکہ عالمی برادری کو پیغام دیا جاسکے کہ وہ کشمیریوں کی حق پر مبنی جدوجہد آزادی کی حمایت کرتے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ ہم پنچوں اور سرپنچوں سمیت دیہی کونسلوں کے اراکین کے استعفوں کا خیرمقدم کریں گے ۔تاہم انہوں نے کہاکہ دیہی کونسلوں کے اراکین کا قتل بلاجواز اور قابل مذمت ہے ۔ انہوں نے کہاکہ وہ خوف و ہراس میں مبتلا ہیں اور ان کا تحفظ کشمیریوں کی ذمہ داری ہے ۔ دریں اثناء سرپنچوں اور پنچوں نے اپنے ساتھیوں کے قتل کے بعد کہا ہے کہ دیہی کونسلوں کے قتل میں عسکریت پسند نہیں بلکہ نیشنل کانفرنس، کانگریس اورپی ڈی پی جیسی بھارت نوازجماعتیں ملوث ہیں۔

مزید : عالمی منظر


loading...