ایران اور عالمی جوہری توانائی ایجنسی کے مذاکرات بغیر کسی پیش رفت کے ختم

ایران اور عالمی جوہری توانائی ایجنسی کے مذاکرات بغیر کسی پیش رفت کے ختم

 تہرا ن(آن لائن)ایران اور عالمی جوہری توانائی ایجنسی کے درمیا ن ہو نے والے مذاکرات بغیر کسی پیش رفت کے اختتا م پذیر ہو گئے غیر ملکی خبر رسا ں ادارے کے مطا بق اس اجلاس کے بعد بین الاقوامی جوہری توانائی ایجنسی کی جانب سے کہا گیا ہے کہ ایران نے وعدہ کیا تھا کہ وہ 15 مئی تک اپنے جوہری پروگرام کو مزید شفاف بنانے کے لیے اقدامات کرے گا، تاہم اس سلسلے میں مزید اقدامات کی ضرورت ہے۔ آ ئی اے ای اے اور ایرانی مذاکرات کاروں کے درمیان اس میٹنگ میں کسی معاہدے پر اتفاق نہیں ہو پایا ہے، تاہم کہا گیا ہے کہ اس سلسلے میں بات چیت جاری رہے گی۔ آئی اے ای اے نے اس ملاقات میں ہونے والی بات چیت کے حوالے سے مزید تفصیلات ظاہر نہیں کی ہیں۔ایران اور آئی اے ای اے کے درمیان یہ ملاقات، ایرانی مذاکرات کاروں اور چھ عالمی طاقتوں کے درمیان ویانا میں مذاکرات کے ایک نئے دور سے ایک روز قبل ہوئی ہے۔ ایران سلامتی کونسل کے چھ مستقل رکن ممالک پلس جرمنی کے ساتھ اپنے متنازعہ جوپری پروگرام کے حوالے سے ایک حتمی معاہدے کے لیے بات چیت میں مصروف ہے۔گزشتہ برس کے اختتام پر اس سلسلے میں ایک عبوری معاہدہ طے پایا تھا، جس کے تحت ایران نے اپنے ہاں اعلیٰ افزودہ یورینیم کی تیاری کا کام روک دیا تھا، تاہم اس سلسلے میں ایک حتمی معاہدے رواں برس کے وسط تک طے کیا جانا ہے۔

مزید : عالمی منظر


loading...