پو سٹ گرایجویٹ کا لج فار ویمن اعلیٰ تعلیم حا صل کر نے کا مثا لی ادارہ ہے، روحی مشتاق

پو سٹ گرایجویٹ کا لج فار ویمن اعلیٰ تعلیم حا صل کر نے کا مثا لی ادارہ ہے، روحی ...

لاہور( دیبا مرزا سے) گو رنمنٹ پو سٹ گرایجویٹ کا لج فار ویمن سمن آباد طالبات کی جانب سے گزشتہ روز کی جا نے والی ہنگا مہ آرا ئی کے حوالے سے بات کر تے ہو ئے کالج پر نسپل ڈاکٹر روحی مشتا ق نے کہا ہے ، ہمارا ادارہ اعلی تعلیم حا صل کر نے کا مثا لی ادارہ ہے ، لیکن چند طا لبا ت کی جا نب شر انگیزی کی و جہ سے کالج کے ڈسپلن کو خراب کیا جا رہا ہے ،جس کی ہم ہر گز اجازت نہیں دیں گے کالج کا ڈسپلن برقرار رکھنا ہمارے لئے سب سے اہم ہے ادارہ میں اس وقت چھ ہزار سے زائد طا لبا ت زیر تعلیم ہیں ، اگر ان طا لبا ت کو من ما نی کی اجا زت دے دی جائے تو کالج کا سا را تعلیمی نظام درہم بر ہم ہو جا ئے گا طالبات کے جا ئز مطالبا ت ضرور ما نے جا ئیں گے۔ ان خیا لات کا اظہا ر انہوں نے روزنا مہ پا کستا ن سے گفتگو کر تے ہو ئے کیا۔

انہوں نے کہا کہ ہماری پوری کو شش ہو تی ہے کہ طالبات کو بہترین تعلیمی ما حو ل فراہم کیا جائے انہوں نے کہا کہ اگر ہم طالبا ت پر تھوڑی سختی نہ کر یں تو ہمارے نظم وضبط میں خرا بی پیدا ہو تی ہے کیو نکہ ہم طالبات کو مار پیٹ تو نہیں کر سکتے لیکن جر مانہ صرف اس لئے کر تے ہیں کہ وہ اس ڈر سے دوبا رہ یہ کام نہ کر یں انہوں نے کہا کہ نہوں نے کہا کہ ہماری پوری کو شش ہے کہ در پیش چند مسائل کو حل کر لیا جا ئے ۔ ہمارا ادارہ اعلی تعلیم حا صل کر نے کا مثا لی ادارہ ہے ، لیکن چند طا لبا ت کی جا نب شر انگیزی کی و جہ سے کا لج کے ڈسپلن کو خراب کیا جا رہا ہے ،جس کی ہم ہر گز اجا زت نہیں دیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ کالج کا ڈسپلن برقرار رکھناہمارے لئے سب سے اہم ہے ۔ لیکن اس کالج کو بھی دوسرے اداروں کی طرح چند مسا ئل کا سا منا بھی ہے ۔ ادارہ میں اس وقت چھ ہزار سے زاید طا لبا ت زیر تعلیم ہیں ، اگر ان طا لبا ت کو من ما نی کی اجا زت دے دی جا ئے تو کالج کا سا را تعلیمی نظام درہم بر ہم ہو جا ئے گا ۔طالبات کے جا ئز مطا لبا ت ضرور ما نے جا ئیں گے لیکن یو نیفارم کی پا پندی اور کا لج ٹائمنگز میں رعا یت ہر گز برداشت نہیں کی جا ئے گی طالبا ت سمیرا ، اقراء، حنا نے کہا کہ کالج میں ویسے تو تمام سہو لیات میسر ہیں لیکن ٹررا نسپورٹ کا بہت مسئلہ ہے اور کا لج کی طر ف سے مختلف مد میں جر مانہ عائد کیا جاتے ہیں جن کو ادا کر نا مشکل ہے اور ہمیں کالج میں مو بائل لا نے پر پا بندی ہے جس کی و جہ سے ہما را اپنے والدین سے را بطہ نہیں ہو سکتا ہے ۔چھ ہزار طالبا ت کے لئے کا لج کی طر ف سے صرف دو بسیں میسر ہیں جن کو پو رے لاہور میں مختلف رو ٹس پر بھیجا جا تا ہے ، بسوں میں طا لبات کی تعداد ذیا دہ ہو نے کی وجہ سے اکثر طالبات بس میں سوار ہو نے سے رہہ جا تی ہیں اور ان کو کو پرائیویٹ ٹرانسپورٹ استعمال کر نی پڑتی ہے ۔ جس سے ان کا وقت اور پیسہ دونوں کا ضیا ع ہو تا ہے انہوں نے کہا کہ ہم پوسٹ گریجویٹ طا لبا ت ہے ہما را مطا لبہ ہے کہ ہم پے سے یو نیفا رم کی پاپندی اٹھا ئی جا ئے اور اہمیں پیرڈز فری کیا جا ئے تا کہ ہم بھی دو سرے کا لجز کی طرح آزا دا نہ تعلیم حاصل کر سکیں ۔۔۔

مزید : میٹروپولیٹن 4


loading...