سیاسی ماحول میں گرما گرمی تحریک انصاف کے اپوزیشن جماعتوں سے رابطوں میں تیزی

سیاسی ماحول میں گرما گرمی تحریک انصاف کے اپوزیشن جماعتوں سے رابطوں میں تیزی ...

                          اسلام آباد(خصوصی رپورٹ، اے این اے) سیاسی ماحول گہما گہمی پیدا ہوگئی ہے اور اپوزیشن جماعتوں کے درمیان باہمی اعتماد کی فضا بہتر ہوئی ہے ، تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے چودھری شجاعت حسین اور چودھری پرویز الٰہی سے فون پر رابطہ کیا ہے جبکہ تحریک کا ایک وفد آج مسلم لیگ (ق) کے قائدین سے ملاقات کررہا ہے۔ دریں اثنا قومی اسمبلی قائد حزب اختلاف سید خورشید شاہ نے عمران خان کے مطالبے کی حمایت کرتے ہوئے کہا ہے کہ الیکشن کمشن کے ارکان مستفی ہوجائیں۔ سیاسی ، ماحول میں ایک اور اہم پیشرفت ہوئی ہے اور اپوزیشن جماعتوں نے انتخابی اصلاحات کے حوالے سے ایک اہم اجلاس کل اسلام آباد منعقد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔تفصیل کے مطابق تحریک انصاف نے اپنے مطالبات منوانے کے لئے حکومت پر دباﺅ بڑھانے کے لئے دیگر اپوزیشن جماعتوں سے رابطہ تیز کردیے ہیں، عمران خان کی طرف سے منگل کو چودھری شجاعت حسین اور چودھری پرویز الہی سے فون پر رابطے کو اسی سلسلے کی کڑی قرار دیا جارہا ہے تحریک انصاف اور مسلم لیگ ق کے قائدین کے درمیان سیاسی صورتحال اور خود مختاری الیکش کمشن کے حوالے سے بات چیت ہوئی ۔ عمران خان کی ہدایت پر ان کی جماعت کا ایک وفد آج اسلام آباد میں مسلم لیگ ق کے رہنماﺅں ملاقات کررہا ہے، اس موقع پر آئندہ لائحہ عمل کے حوالے سے مشاورت کی جائے گی وفد میں جاوید ہاشمی ، شاہ محمود قریشی اور دیگر رہنما شامل ہوںگے۔دریں اثناتحریک انصاف کے سربراہ عمران خان کے بعد قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف سید خورشید شاہ نے بھی الیکشن کمیشن کے تمام اراکان سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کر تے ہوئے کہا ہے کہ فخر الدین جی ابراہیم کی نیت پر شک نہیں مگر وہ بطور چیف الیکشن کمشنر اچھا الیکشن نہیں کرا سکے،انتخابی اصلاحات صرف عمران خان کا نہیں پوری قوم کا مطالبہ ہے،عمران خان کبھی نہیں چاہیں گے کہ ملک میں آمریت آئے۔پارلیمنٹ ہاو¿س کے باہر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ عمران خان کے الزامات کے بعد الیکشن کمیشن کو فوری مستعفی ہوجانا چاہیے ۔بطور قائد حزب اختلاف الیکشن کمیشن کے استعفیٰ کا مطالبہ کرتا ہوں ۔ موجودہ الیکشن کمیشن کی مدت ویسے ہی ختم ہورہی ہے ،الیکشن کمیشن کے ارکان کو فخر الدین جی ابراہیم کے ساتھ ہی مستعفی ہو جانا چاہیے تھا۔ کچھ بھی ہو جائے سیاسی جماعتوں کو مل بیٹھ کر معاملات طے کرنا چاہئیں۔پیپلز پارٹی نے انتخابی اصلاحات کے ذریعے فہرستوں کو کمپیوٹرائزڈ کیا، انتخابی اصلاحات کے حوالے سے حزب اختلاف کی تمام جماعتوں کا اجلاس کل ہو گا۔ چیف الیکشن کمشنر کے معاملے پر وزیراعظم نواز شریف کے رابطے کا انتظار ہے۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان نے پہلی مرتبہ اپنے جلسے میں طالبان کا نام نہیں لیا جس سے ظاہر ہوتا ہے کہ عمران خان عوامی رائے کو سمجھ گئے ہیں۔

تحریک انصاف رابطے

مزید : صفحہ اول


loading...