زیادہ بھاگنا بھی صحت کے لئے نقصان دہ

زیادہ بھاگنا بھی صحت کے لئے نقصان دہ
زیادہ بھاگنا بھی صحت کے لئے نقصان دہ

  


لندن (نیوز ڈیسک) اگر آپ بہت تیز دوڑ سکتے ہیں یا بہت لمبے فاصلے تک دوڑ سکتے ہیں تو یقیناً آپ کو اپنی اس خوبی پر فخر ہوگا لیکن اس میں کچھ فکر کی بات بھی ہے۔ لمبے فاصلے کی میراتھن اور غیر معمولی تیز دوڑوں میں حصہ لینے والے افراد کو بڑھاپے میں دل کی بیماریوں کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے۔ برطانیہ کے عالمی شہرت یافتہ ماہر امراض دل پروفیسر مارک بوئٹ کی رہنمائی میں کی گئی ایک تحقیق میں معلوم ہوا ہے کہ ایسی لمبی دوڑ جس میں جسم کو غیر معمولی محنت کرنا پڑتی ہے اور دیگر اس قسم کی ورزشوں سے جسم میں ایسی تبدیلیاں واقع ہوجاتی ہیں کہ جن کی وجہ سے دل کی دھڑکن میں بے قاعدگی پیدا ہوجاتی ہے اور ایسے افراد کو بڑھاپے میں دل کی حرکت کو کنٹرول کرنے کیلئے پیس میکر کی ضرورت پڑسکتی ہے۔ یونیورسٹی آف مانچسٹر کی اس تحقیق نے یہ واضح کردیا ہے کہ سخت جسمانی ورزشوں کی وجہ سے دل کو ملنے والی برقی رو میں تبدیلیاں ہوجاتی ہیں جس کے نتیجہ میں دل کے قدرتی پیس میکر کے مالیکیولوں میں تبدیلیاںپیدا ہوجاتی ہیں اور دل کی دھڑکن بے قاعدہ ہوجاتی ہے۔ واضح رہے کہ عام صحتمند افراد میں دل کی دھڑکن 60 سے 100 بار فی منٹ ہوتی ہے جبکہ کھلاڑیوں میں یہ 30 بار فی منٹ کی حد تک کم ہوسکتی ہے۔

مزید : تعلیم و صحت


loading...