موبائل سے چلنے والے انسانی اعضاءایجاد

موبائل سے چلنے والے انسانی اعضاءایجاد
موبائل سے چلنے والے انسانی اعضاءایجاد

  


برلن (نیوزڈیسک) جرمنی میں ایک ایسی منفرد نمائش کا آغاز ہو گیا ہے کہ جس میں آپ مصنوعی ہاتھے، بازو، ٹانگ حتیٰ کہ پورا مصنوعی ڈھانچہ تک دیکھ سکتے ہیں اور یہ تمام مصنوعی اعضاءبالکل قدرتی انسانی اعضاءکی طرح کام کرتے ہیں۔ آرتھو پیڈک ورلڈ کانگرس نامی اس نمائش کا اہتمام لائپزک نامی شہر میں کیا گیا ہے۔ اس میں 37 ممالک کی 548 کمپنیاں شرکت کررہی ہیں جن کے تیار کئے ہوئے ہر قسم کے مصنوعی اعضاءعام لوگوں اور ماہرین کیلئے پیش کئے جارہے ہیں۔ نمائش کیلئے پیش کئے گئے مصنوعی اعضاءمیں برطانوی کمپنی ٹچ بائیونکس کا تیار کردہ ایسا ہائی ٹیک ہاتھ بھی ہے کہ جسے سمارٹ فون سے کنٹرول کیا جاسکتا ہے۔ فون پر موجود ایک خصوصی سافٹ ویئر سے ہدایات دینے پر یہ ہاتھ کھلتا اور بند ہوتا ہے اور چیزوں کو پکڑ سکتا ہے۔ سافٹ ویئر کے علاوہ یہ ہاتھ جسم کے عضلات سے بھی کنٹرول ہوسکتا ہے۔ اس نمائش میں معذور افراد کو چلنے میں مدد دینے کیلئے ایک بیرونی ڈھانچہ بھی پیش کیا گیا ہے جس کی مدد سے ٹانگوں کی معذوری کا شکار افراد بغیرکسی سہارے کے چل سکتے ہیں۔ نمائش میں مصنوعی اعضاءکے 20 ہزار سے زائد ماہرین کی آمد متوقع ہے

مزید : سائنس اور ٹیکنالوجی


loading...