سانس کے ذریعے کینسر کی تشخیص

سانس کے ذریعے کینسر کی تشخیص
سانس کے ذریعے کینسر کی تشخیص

  


میکسیکو (بیورورپورٹ ) سوچئے! اگر فنگرپرنٹ (انگلیوں کے نشان) یہ بتا سکتے ہیں کہ آپ کون ہیں، تو بریتھ پرنٹ (سانس کے ذریعے شناخت) یہ کیوں نہیں بتا سکتا کہ جسم کے اندر کا نظام کیسا چل رہا ہے؟ ایک نئی تحقیق میں یہ انکشاف کیا گیا ہے کہ سانس کے ذریعے کینسر کی تشخیص کی جا سکتی ہے۔ میکسیکو کے ایک تحقیقی ادارے سے منسلک ڈاکٹر ریڈ ڈیوک اس تحقیق کے موجد ہے اور وہ گزشتہ دو دہائیوں سے سانس کے ذریعے انسانی جسم کی اندرونی کارکردگی کو جانچنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ نئی تحقیق پیش کرتے ہوئے ڈاکٹر ریڈ کا کہنا ہے کہ ” لوگوں کی اکثریت یہ سمجھتی ہے کہ سانس کا تعلق صرف آپ کے پھیپھڑوں سے ہے لیکن تحقیق میں ہم نے یہ جانا ہے کہ آپ کے جسم میں جو بھی موجود ہے، وہ خون میں ضرور ہے اور خون کی سانس کے ذریعے جانچ کی جا سکتی ہے۔ پھیپھڑوں کا کینسر، استمھا، جگر اور دل کی بیماریوں کی تشخیص سانس کے ذریعے کی جا سکتی ہے“۔ ڈاکٹر ریڈ کا مزید کہنا ہے کہ ”اب سانس کا معائنہ کرنے کے لئے مشینیں بھی بن چکی ہیں اور ان کے ذریعے کروائے جانے والے ٹیسٹ بالکل روایتی خون کے ٹیسٹوں جیسے ہیں۔ بلکہ یہ ٹیسٹ روایتی ٹیسٹوں سے زیادہ بہتر ہے، کیوں کہ سانس کے ذریعے ٹیسٹ جتنی بار ضرورت ہو باآسانی کیا جا سکتا ہے جبکہ حفاظتی نقط نظر کے مطابق آپ ایکسرے زیادہ نہیں کروا سکتے“۔

مزید : سائنس اور ٹیکنالوجی


loading...