دودھ کا استعمال وزن کم کرنے میں معاون

دودھ کا استعمال وزن کم کرنے میں معاون
دودھ کا استعمال وزن کم کرنے میں معاون

  


 
ڈنمارک (بیورورپورٹ ) ایک نئی تحقیق کے مطابق دودھ کیلوریزکے اخراج اور نتیجتاً وزن گھٹانے میں معاون ثابت ہوتا ہے، یہ تحقیق ڈینش محققین نے کی ہے۔ 1960ءمیں ڈاکٹر ایٹکنز نے کم لیکن اچھی غذا کا تصور متعارف کروایا، یعنی ایسی کم غذا جس میں زیادہ پروٹین ہوں، جس کے بعد امریکیوں نے اچھی غذا کا تصور اپناتے ہوئے چکن اور مچھلی جیسی خوراک کو فوقیت دینا شروع کردی۔ پھر 1990ءمیں ”دودھ کی مونچھ“ کی مہم شروع ہوئی، جس کا مقصد یہ بتانا تھا کہ دودھ کیلشیم اور پروٹین سے بھرپور غذا ہے۔ مہم شروع ہونے پر لوگوں نے تیزی کے ساتھ دودھ اور اس سے بنی اشیاءیعنی پنیر اور دہی وغیرہ کی طرف رجوع کیا۔ پھر وقت گزرنے کے ساتھ آج دودھ اور اس سے بنی مصنوعات پر بحث چھڑ چکی ہے۔ مختلف تحقیقات کے بعد یہ بات سامنے آئی کہ دودھ میں دو اقسام کے پروٹین ہوتے ہیں، ایک کا نام کیسین اور دوسرا وے (Whey) سے منسوب ہے۔ کیسین میں دودھ کا 80 فیصد پروٹین پایا جاتا ہے اور یہ غذا کو ہضم کرنے کے نظام کو سست کرتا ہے، یہی وجہ ہے کہ دیگر خوراک کے ساتھ دودھ کے استعمال سے پیٹ بھر جانے کا جلد احساس ہونے لگتا ہے۔ ڈینش محققین نے اس تحقیق کو آگے بڑھانے کا بیڑا اٹھایا تاکہ دودھ کے اثرات کو مزید اچھے طریقے سے جانا جا سکے۔ محققین نے 18سے50 سال کی عمر کے 17افراد کو اپنی تحقیق کا حصہ بناتے ہوئے انہیں ایک ہفتہ تک تین مختلف دنوں میں متنوع اقسام کی خوراک دی۔ معائنہ کے دن تمام افراد کو بھوک کی حالت میں ڈبل روٹی، مکھن، جام اور خواہش کے مطابق جوس یا دودھ پینے کو دیا گیا۔ چار گھنٹے بعد ان کا جب معائنہ کیا گیا تو ماہرین کے سامنے حیران کن نتائج آئے۔ نتائج کے مطابق دودھ آپ کے وزن کو کنٹرول کرنے میں نہ صرف مدد دیتا ہے بلکہ صحت مند غذا کے طور پر اس کا استعمال بھی ضروری ہے۔

مزید : تعلیم و صحت


loading...