ان دونوں خواتین نے ایک ماہ بغیر نہائے گزارا، اس دوران جسم میں کیا تبدیلی آئی؟ جواب جان کر آپ کیلئے یقین کرنا مشکل ہوجائے گا

ان دونوں خواتین نے ایک ماہ بغیر نہائے گزارا، اس دوران جسم میں کیا تبدیلی آئی؟ ...
ان دونوں خواتین نے ایک ماہ بغیر نہائے گزارا، اس دوران جسم میں کیا تبدیلی آئی؟ جواب جان کر آپ کیلئے یقین کرنا مشکل ہوجائے گا

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لندن (نیوز ڈیسک) صابن، شیمو، باڈی سپرے اور طرح طرح کی کریمیں اور لوشن ہم روزانہ استعمال کرتے ہیں اور اکثر لوگوں کیلئے تو ان کے بغیر زندگی کا تصور ممکن نہیں رہا، لیکن کیا یہ چیزیں واقعی ہماری ضرورت ہیں ؟ اس سوال کا جواب ڈھونڈنے کی کوشش میں ویب سائٹ ٹوٹل بیوٹی کی دو خواتین ایڈیٹرز نے ایسا فیصلہ کر لیا کہ جس پر عمل ہر کسی کے بس کی بات نہیں۔

اخبار ڈیلی میل کے مطابق ویب سائٹ کی ایڈیٹر انچیف جل پرووسٹ اور ایڈیٹوریل اسسٹنٹ جیسیکا امارس نے فیصلہ کیا کہ وہ ایک ماہ تک نہ صرف ہر طرح کی صفائی اور بیوٹی پروڈکٹس سے خود کو دور رکھیں گی بلکہ نہانے سے بھی مکمل پرہیز کریں گی، اور دیکھیں گی کہ جلد پر اس کا کیا اثر ہوتا ہے۔

وہ خاتون جس نے برہنہ حالت میں ایک ہزار میل چلنے کا اعلان کردیا، وجہ جان کر آپ کو اس حرکت پر غصہ نہیں آئے گا بلکہ۔۔۔

جل اور جیسیکا کا کہنا ہے کہ ابھی دو ہی دن گزرے تھے کہ ان کے جسم سے آنے والی پسینے کی بدبو انہیں بے حال کرنے لگی۔ وہ دونوں باقاعدگی سے ورزش کی عادی تھیں لہٰذا ان کیلئے یہ مسئلہ اور بھی شدید ہو گیا تھا۔ جل نے بتایا کہ تیسرے دن دفتر کے ساتھیوں نے شکایت شروع کر دی کہ ان کے قریب ٹھہرنا مشکل تھا جبکہ اگلے کچھ دنوں میں ان کے گھروالے بھی ان سے آنے والی بدبو کی وجہ سے سخت تنگ آگئے۔

ان تمام مسائل کے باوجود خواتین نے اپنا تجربہ جاری رکھا۔ جیسیکا بتاتی ہیں کہ دسویں دن ان کے بالوں کی یہ حالت تھی کہ ان میں گنگھی کرنا تقریباً باممکن ہو چکا تھا اور یہ اس قدر چپچپے ہو چکے تھے کہ ہاتھ لگانے کو دل نہیں کرتا تھا۔ جل نے اس تجربے کے بارے میں اپنی ویب سائٹ پر لکھے گئے مضمون میں بتایا کہ تقریباً 20 دن تک دونوں کو دفتر ، گھر والوں اور ملنے جلنے والوں کی طرف سے ایسی ایسی باتیں سننے کو ملی کہ جن کا تذکرہ نہیں کیا جاسکتا۔ کوئی انہیں مردہ جانوروں سے تشبیہہ دے رہا تھا تو کوئی انہیں خود سے دوررہنے کی درخواست کر رہا تھا، لیکن پھر انہیں کچھ مثبت باتیں سنائی دینے لگیں۔

جل کا کہنا ہے کہ ان کی جلد کی رنگت اور تازگی پہلے سے کہیں بہتر محسوس ہونے لگی جبکہ جیسیکا نے بتایا کہ ان کے چہرے پر نکلنے والے دانے خود بخود ختم ہو چکے تھے۔ مہینے کے اختتام تک ان خواتین کی جلد ایسی تروتازہ اور چمک دمک سے بھرپور نظر آرہی تھی کہ لوگ تعریف کرنے پر مجبور ہور ہے تھے۔

دونوں خواتین کا کہنا ہے کہ وہ اس تجربے سے اس نتیجے پر پہنچی ہیں کہ جدید بیوٹی پروڈکٹس اور غسل سے پرہیز کے باعث ہماری جلد قدرتی طورپر خوبصورت اور چمکدار ہو جاتی ہے، البتہ پانی کا استعمال ترک کرنے پر جسم سے ناگوار بدبو ضرور آتی ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس