باپ بننے کے خواہشمند مردوں کیلئے بہترین عمر کیا ہوتی ہے اور کس عمر میں ایسا کرنا بچے کی صحت کیلئے خطرناک ہوسکتا ہے؟ سائنسدانوں نے واضح ہدایات دے دیں

باپ بننے کے خواہشمند مردوں کیلئے بہترین عمر کیا ہوتی ہے اور کس عمر میں ایسا ...
باپ بننے کے خواہشمند مردوں کیلئے بہترین عمر کیا ہوتی ہے اور کس عمر میں ایسا کرنا بچے کی صحت کیلئے خطرناک ہوسکتا ہے؟ سائنسدانوں نے واضح ہدایات دے دیں

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لندن (مانیٹرنگ ڈیسک) جدید دور کی مصروف زندگی میں تاخیر سے شادی کرنا ایک رواج کی صورت اختیار کرتا جا رہا ہے۔ اگرچہ خواتین کے برعکس مردوں میں اولاد پیدا کرنے کی صلاحیت عمر کے آخری حصے تک برقرار رہتی ہے، لیکن عمر بڑھنے کے ساتھ کچھ مسائل بھی پیدا ہوجاتے ہیں۔ ایسے میں یہ سوال نہایت اہم ہے کہ صحت مند اولاد پیدا کرنے کے لئے بہترین عمر کیا ہے، اور تاخیر کے کیا نقصانات ہو سکتے ہیں۔

ویب سائٹ مینز ہیلتھ کے مطابق یونیورسٹی آف میامی کے ملر سکول آف میڈیسن سے تعلق رکھنے والے سائنسدان ڈاکٹر رانجیس رامسمی کہتے ہیں کہ جب مرد کی عمر 30 سال ہوجاتی ہے تو سپرم پیدا کرنے والی مشینری میں گڑ بڑ کا آغاز ہو جاتا ہے۔ عمر بڑھنے کے ساتھ ٹیسٹاسٹیرون ہارمون بنانے والے لیڈگ خلیات میں کمی ہونا شروع ہوجاتی ہے جبکہ سپرم کی پرورش کرنے والے سیرٹولی خلیات کی تعداد بھی کم ہونے لگتی ہے۔ اس کا نتیجہ یہ ہوتا ہے کہ سپرم کی صحت اور کوالٹی متاثر ہونا شروع ہوجاتی ہے اور اس کی حمل ٹھہرانے کی صلاحیت کم ہونے لگتی ہے۔

’یہ ایک کام ضرور کرلیں‘ بہترین ازدواجی زندگی کیلئے سائنسدانوں نے جوڑوں کو بہترین مشورہ دے دیا

تیس سال کی عمر کے بعد سپرم کے ڈی این اے میں میوٹیشن کی تعداد بڑھتی جاتی ہے۔ ڈی این اے میوٹیشن کے نتیجے میں بچے میں جسمانی نقائص اور بیماریاں جنم لے سکتی ہیں۔ تقریباً 30 سال عمر کے مرد کے بچے میں تقریباً 55 میوٹیشن منتقل ہوتی ہیں جبکہ ہر آنے والے سال میں ان کی تعداد میں تقریباً دو میوٹیشن کا اضافہ ہوتا جاتا ہے۔ جیسے جیسے عمر بڑھتی ہے سپریم کی میوٹیشن میں اضافہ ہوتا ہے اور ان کی کوالٹی میں کمی واقع ہوتی ہے، جس کے نتیجے میں اسقاط حمل کا خدشہ بھی بڑھ جاتا ہے۔ تحقیق سے معلوم ہوا کہ 35 سال کے مرد کی شریک حیات کی نسبت 25 سال کے مرد کی شریک حیات کے حاملہ ہونے کا امکان 50فیصد زیادہ ہوتا ہے۔ ان عوامل سے واضح ہے کہ 30 سال کی عمر کے بعد تولیدی صحت اور صحتمند اولاد کو جنم دینے کی صلاحیت میں فرق آنا شروع ہو جاتا ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس