دو ماہ میں جناح ہسپتال سے تیسرا بچہ اغوا ،پولیس ملزمان کا سراغ نہ لگا سکی

دو ماہ میں جناح ہسپتال سے تیسرا بچہ اغوا ،پولیس ملزمان کا سراغ نہ لگا سکی
 دو ماہ میں جناح ہسپتال سے تیسرا بچہ اغوا ،پولیس ملزمان کا سراغ نہ لگا سکی

  

لا ہور (اپنے کرا ئم ر پو رٹر سے ) دو ماہ کے دوران جناح ہسپتال سے تیسرے نومولود بچے کے اغوا کا واقعہ رونما ہوا، بچہ کے اغوا کی سی سی ٹی وی فوٹیج منظر عا م پر آگئی۔ واضح ر ہے کہ دوروز قبل بصیر پور کے علاقے کی رہائشی شہناز بی بی کا 2روز کا بچہ نامعلوم اغوا کار خاتون اغوا کر کے فرار ہو گئی، پو لیس تا حا ل ملزمان کا کو ئی سرا غ نہ لگاسکی ہے ۔ تفصیلات کے مطابق بصیر پور کی رہائشی شہنا ز بی بی کے ہاں 4 روز قبل بچے کی پیدائش ہوئی لیکن نامعلوم خاتون گھر والوں کی آنکھ بچا کر نومولود بچے کو اغواکرکے لے گئی۔ نومولود کے والدین اور عزیز و اقارب نے بچے کے اغوا پرہسپتال انتظامیہ کیخلاف احتجاج شروع کردیا جس پر پولیس نے بچے کے والد مشتا ق کی درخواست پراغوا کا مقدمہ درج کرادیاجبکہ پولیس نے فوری ہسپتال کی سی سی ٹی وی فوٹیج حاصل کرکے کارروائی شروع کردی ہے۔واضح رہے کہ جناح ہسپتال میں سی سی ٹی وی کیمروں کی تنصیب کے باوجود بچوں کے اغوا کا سلسلہ نہ رک سکا ۔ ذرا ئع کے مطا بق دو ما ہ کے دورا ن جنا ح ہسپتا ل سے تیسرا نو مولود اغواہواہے ۔ اس حوالے سے جناح ہسپتال کے میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ڈاکٹر شفقت علی نے کہا ہے کہ نو مولود بچے کے اغوا کے واقعہ میں ہسپتال انتظامیہ کی کوئی غفلت نہیں، انتظامیہ نے بچہ اس کی دادی راجن بی بی کے حوالے کر دیا تھا جس کی CCTV فوٹیج موجود ہے۔ ڈاکٹر شفقت نے مزید کہا کہ بچے کی دادی نے پیڈز نرسری میں نومولود کو اپنی ساتھی عورت (جس کابچے کی پھوپھی کے طور پرتعارف کروایا گیا تھا) سپرد کیا جو بچے کو لے کر غائب ہو گئی تاہم ہسپتال انتظامیہ نے واقعہ کا فوری نوٹس لیتے ہوئے پولیس اسٹیشن میں رپورٹ کر دی ہے۔

مزید : علاقائی