چین نے بھارت کی نیو کلیئر سپلائرز گروپ میں شمولیت پاکستان سے مشروط کر دی

چین نے بھارت کی نیو کلیئر سپلائرز گروپ میں شمولیت پاکستان سے مشروط کر دی

 واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک) چین پاکستان کا وہ ہمدرد دوست ہے جس نے ہر مشکل وقت میں پاکستان کا ساتھ نبھایا ہے۔ حال ہی میں بھارت نے سازباز کرکے امریکہ کی طرف سے پاکستان کو دیئے جانے والے ایف 16طیارے رکوا دیئے ہیں۔ بھارت سے اس دشمنی کا بدلہ لینے کے لیے چین نے پاکستان کے ہاتھوں میں ہاتھ ڈال دیئے ہیں اور ایک بار پھر پاکستان سے لازوال دوستی کا ثبوت دیتے ہوئے دنیا کے سامنے ڈٹ گیا ہے۔ بھارت نیوکلیئر سپلائرز گروپ میں شمولیت کے لیے درخواست دینے جا رہا تھا مگر چین نے درخواست دینے سے قبل ہی بھارت کااس گروپ میں داخلہ مشکل بنا دیا ہے۔ چین نے موقف اختیار کیا ہے کہ اگر اس گروپ میں شامل کرنا ہے تو پاکستان اور بھارت دونوں کو کیا جائے، ورنہ کسی کو نہیں۔بھارتی میڈیا نے پاکستان کے لئے چین کی حمایت پر واویلا کرتے ہوئے ایک رپورٹ میں کہا ہے کہ ’’ہر حوالے سے عیاں ہو چکا ہے کہ پاکستان اور چین بھارت کا گروپ میں داخلہ روکنے کے لیے ایک دوسرے سے قریبی معاونت کر رہے ہیں۔رواں سال 25اور 26اپریل کو ہونے والی نیوکلیئرسپلائرز گروپ کے ممالک کے اجلاس میں بھارت نے ایک معلوماتی سیشن منعقد کرنے کی درخواست کی تھی جس میں وہ اپنی ممبرشپ کے لیے پریزنٹیشن دینا چاہتا تھا۔ اسی دوران پاکستان نے بھی یہی درخواست کر دی۔‘‘رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ ’’پاکستان کو اگرچہ یقین تھا کہ اس کی درخواست مسترد کر دی جائے گی مگر اس نے یہ درخواست چین کے کہنے پر دی تھی تاکہ اسے بھارت کی درخواست مسترد کرنے کا جواز ہاتھ آ سکے۔ اب پاکستان نیوکلیئرسپلائرز گروپ کے رکن ممالک کو لکھنے جا رہا ہے کہ وہ بھی گروپ میں شامل ہونا چاہتا ہے۔پاکستان یہ درخواست بھی چین کے کہنے پر دینے جا رہا ہے کیونکہ رکن ممالک کے آئندہ اجلاس میں بھارت کی طرف سے درخواست دیئے جانے کی توقع ہے۔ چین پاکستان سے یہ درخواست اس لیے دلوا رہا ہے تاکہ وہ اسی موقف کی بناء پر دونوں درخواستیں مسترد کروا سکے۔

مزید : صفحہ اول