جامعہ پنجاب سینڈیکیٹ الیکشن ،17ہزار ممبرز بطور ووٹر شامل کرنے کا حکم

جامعہ پنجاب سینڈیکیٹ الیکشن ،17ہزار ممبرز بطور ووٹر شامل کرنے کا حکم

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے پنجاب یونیورسٹی کے سینڈیکیٹ الیکشن میں 17ہزار لائف ممبرز کو سکروٹنی کے بعد ووٹرز لسٹ میں شامل کرنے کا حکم دے دیا، عدالت نے وائس چانسلر مجاہد کامران اور رجسٹرار پنجاب یونیورسٹی کو جواب داخل کرانے کی ہدایت کی ہے۔مسٹرجسٹس سید منصور علی شاہ نے پنجاب یونیورسٹی کے پروفیسر جاوید سمیع اور شمائلہ گل کی درخواست پر سماعت کی، درخواست گزاروں کی طرف سے صفدر شاہین پیرزادہ ایڈووکیٹ نے موقف اختیار کیا کہ یونیورسٹی سینڈیکیٹ کے انتخابات میں دھاندلی کرنے کی منصوبہ بندی کی گئی ہے اور یونیورسٹی انتظامیہ نے لائف ممبرز کو ووٹر فہرست سے خارج کر دیا ہے، یونیورسٹی انتظامیہ نے ممبرز کی رجسٹریشن کیلئے صرف ایک دن کی مہلت دی ہے جو یونیورسٹی انتظامیہ کی بدنیتی کو ظاہر کرتا ہے، انتظامیہ کی ملی بھگت سے اب تک صرف ایک سو پچاسی ووٹرز رجسٹرڈ ہوئے ہیں، قانون کے مطابق لائف ممبرز کو ووٹر فہرست سے خارج نہیں کیا جا سکتا، یونیورسٹی وکیل نے موقف اختیار کیا کہ سینڈیکیٹ انتخابات ہائیکورٹ کے حکم پر کروائے جا رہے ہیں، سینڈیکیٹ کے بعد یونیورسٹی سینیٹ کے انتخابات منعقد ہوں گے ، ووٹرز کی رجسٹریشن کے لئے اشتہار دیا گیا ہے، ابتدائی بحث سننے کے بعد عدالت نے حکم دیا کہ جو لائف ممبرز بطور ووٹر رجسٹریشن کرانا چاہتے ہیں وہ 14مئی شام 5بجے رجسٹرار یونیورسٹی کے کے سامنے پیش ہوں اور ان کے کوائف کی تصدیق کے بعد انہیں ووٹرز فہرست میں شامل کیا جائے، عدالت نے وائس چانسلر مجاہد کامران اور رجسٹرار پنجاب یونیورسٹی کو 16 مئی کو جواب جمع کرانے کی بھی ہدایت کی ہے۔

مزید : صفحہ آخر