رمضان کی آمد ، پرائس کنٹرول مجسٹریٹس غیرفعال ، مہنگائی ، ذخیرہ اندوزی پر قابوپانے میں ناکام

رمضان کی آمد ، پرائس کنٹرول مجسٹریٹس غیرفعال ، مہنگائی ، ذخیرہ اندوزی پر ...

ملتان( خبرنگار)رمضان المبارک کی آمد کو3ہفتے کاعرصہ باقی ضلع ملتان میں مہنگائی ، گرانفروشی ،ذخیرہ اندوزی کوکنٹرول نہ کیاجاسکا ۔ سٹی ڈسٹرکٹ گورنمنٹ ملتان کی طرف سے اشیائے خوردونوش کے مقرر کیے جانے والے ریٹس مذاق بن (بقیہ نمبر39صفحہ12پر )

کررہ گئے دودھ ، چینی ، گوشت ، آٹا ، دالیں ، چاول ، دہی ، سبزیاں سمیت دیگر اشیانے ضروریہ کنٹرول ریٹ پر خریدنا ناممکن ہوگیا۔ ضلع ملتان کے تمام پرائس کنٹرول مجسٹریٹس بھی بدستور غیر فعال ہیں گرانفروشوں نے من مانے نرخو ں پر اشیائے ضرورت فروخت کرنا معمول بنالیاہے وفاقی حکومت کی طرف سے تیل کی قیمتوں میں پچھلے چند ماہ سے مسلسل کمی اور مئی کے مہینے کیلئے بھی قیمتیں برقراررکھنے کے اعلان کے باوجود مہنگائی ، گرانفروشی کاجن قابو سے باہر ہے صوبائی حکومت کی طرف سے صوبہ بھر کی ضلعی حکومتوں کو مہنگائی گرانفروشی کو کنٹرول کرنے اور شہریوں کوریلیف دینے کیلئے اقدامات کرنے کے احکامات کے باوجود ضلع ملتان میں کوئی واضح صورتحال سامنے نہیں آسکی ہے۔مہنگائی گرانفروشی کے ساتھ ساتھ ذخیرہ اندوزی کی شکایات بڑھ رہی سٹی ڈسٹرکٹ گورنمنٹ ملتان کی طرف سے اشیاء خوردونوش کے مقرر کیے جانے والے نرخ بھی مذاق بن کررہ گئے ہیں ضلعی حکومت کی طرف سے اس وقت بیف 250روپے کلو مٹن 525روپے کلو دودھ 60روپے کلو دہی 65روپے کلو سمیت اسی طرح دیگر اشیاء خوردونوش سمیت روٹی فی عدد 100گرام 5روپے کانرخ مقرر ہیں مگر ضلع بھر میں کسی بھی جگہ مذکورہ اشیاء کنٹرول نرخ پردستیاب نہیں پرائس کنٹرول مجسٹریٹس غیر فعال ہونے سے دکانداروں نے گرانفروشی کابازار گرم کررکھا ہے اورمن مانے نرخ وصول کرکے لوٹ مار کررہے ہیں۔

مزید : ملتان صفحہ آخر