ڈاکٹر عاصم کیخلاف فرد جرم عائد نہ ہوسکی ،سماعت 28 مئی تک ملتوی

ڈاکٹر عاصم کیخلاف فرد جرم عائد نہ ہوسکی ،سماعت 28 مئی تک ملتوی

کراچی ( اے این این ) نیب کورٹ نے ڈاکٹرعاصم اور دیگرملزمان کیخلاف 17 ارب روپے کے کرپشن ریفرنس کی سماعت 28 مئی تک ملتوی کردی، ملزمان پر آج بھی فرد جرم عائد نہ ہوسکی ۔ احتساب عدالت کراچی میں ڈاکٹر عاصم ، یوسف انصاری ، بشارت مرزا ، نوید مختار اور دیگر کے خلاف 17 ارب روپے کی کرپشن کے ریفرنس کی سماعت ہوئی ۔ جیل حکام نے ڈاکٹر عاصم کو سخت سیکورٹی میں عدالت پہنچایا ۔ سماعت شروع ہوئی تو وکلائے صفائی نے عدالت سے درخواست کی کہ ملزمان پر فرد جرم عائد نہ کی جائے ۔ ہم نے سندھ ہائی کورٹ سے رجوع کرلیا ہے ۔ سندھ ہائی کورٹ نے نیب کو نوٹس جاری کر دئیے ہیں ۔ نیب کے پراسیکیوٹر نے عدالت سے کہا کہ ملزمان پر فرد جرم عائد کی جائے ۔ ملزمان کے وکلا اس معاملے کو لٹکانا چاہتے ہیں ۔ سندھ ہائیکورٹ نے کوئی حکم امتناعی جاری نہیں کیا ۔ وکلا صفائی نے کہا کہ نیب کو کس بات کی جلدی ہے ۔ ہماری درخواست پر سندھ ہائیکورٹ نے نیب کو نوٹس جاری کیے ہیں ۔ بعد میں عدالت نے سماعت 28 مئی تک ملتوی کردی جس کے باعث آج بھی ملزمان پر فرد جرم عائد نہ ہوسکی ۔ اس پہلے سندھ ہائی کورٹ میں ملزمان کی وکلا کی جانب سے نیب عدالت میں مقدمے کی سماعت روکنے کی درخواست کی سماعت ہوئی ۔ عدالت نے نیب اور دیگر حکام کو 25 مئی کے لئے نوٹس جاری کر دئیے ۔ عدالت نے کہا کہ قانون کے خلاف فیصلہ ہوا تو کارروائی کریں گے ۔ عدالت نے نیب کورٹ میں سماعت روکنے کی استدعا مسترد کردی ۔

مزید : پشاورصفحہ اول