پانامہ لیکس میں نواز شریف سمیت تمام سرکاری اہلکاروں کا بلا امتیاز احتساب کیا جائے ، میاں افتخار

پانامہ لیکس میں نواز شریف سمیت تمام سرکاری اہلکاروں کا بلا امتیاز احتساب ...

 نوشہرہ(بیورورپورٹ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی سیکرٹری جنرل میاں افتخارحسین نے کہا ہے کہ وفاقی حکومت خیبرپختونخوا کو چور کہہ رہی ہے اور خیبرپختونخوا حکومت وفاقی حکومت کو ٹیکس چوری کے طعنے دے رہی ہے وفاقی حکومت اور صوبائی حکومتوں کا ایک دوسرے پر الزام تراشیاں ثابت کرتی ہے کہ دال میں کچھ کالا ہے پانامہ لیکس میں وزیراعظم سے لیکر سرکاری اہلکاروں تک سب کا جوڈیشل انکوائری کے ذریعے بلاامتیاز احتساب کیاجائے ان کو سزا دی جائے خیبرپختونخوا کے وزیراعلیٰ پرویز خٹک سٹیج پر کھڑے ہوکر عوامی نیشنل پارٹی کے رہنماؤں پر الزامات تو لگارہے ہیں لیکن سیاست میں سب سے بڑا کرپشن سیاسی وفاداریاں تبدیل کرنا ہوتا ہے جو پرویز خٹک کا وطیرہ بن چکا ہے سیاسی طورپر سب سے کرپٹ سیاست دان اس وقت صوبے کا وزیراعلیٰ ہے بحیثیت وزیراعلیٰ پرویز خٹک دیگراضلاع کے سابق وزرائے اعلیٰ سے نوشہرہ کا موازنہ کرکے تو دیکھے کہ نوشہرہ پسماندگی کا خاتمہ ہوگیا ہے یا پسماندگی بڑھ گئی ہے وزیرستان میں فوجی اپریشن کے بعد خیبرپختونخوا میں دہشتگردی کی شدت میں کمی آئی ہے یہ صوبائی حکومت کا کارنامہ نہیں کیونکہ وزیرستان وفاقی حکومت کے زیراثر ہے صوبائی حکومت کا اس میں کوئی کارنامہ نہیں صوبے میں آج بھی بھتہ خوری اور ٹارگٹ کلنگ کے واقعات رونما ہورہے ہیں صوبائی حکومت صوبے میں امن وامان کی برقراریت کیلئے اتنی مخلص ہے تو آئے روز ٹارگٹ کلنگ اور اغواء برائے تاوان کے وارداتوں کمی کی بجائے اضافہ کیوں ہورہا ہے ان خیالات کااظہارانہوں نے نوشہرہ کلاں کابل ریور میں شمولیتی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع پر کونسلر ولایت، کونسلر حیدرخان، حاجی احسان اللہ، فیاض خان، اعجاز خان اور ٹرانسپورٹررہنما افتخار خان آف کھنڈر نے پی ٹی آئی اور دیگر سیاسی جماعتوں سے مستعفی ہوکر عوامی نیشنل پارٹی میں شمولیت کا اعلان کیا اس موقع پر ملک جمعہ خان، خوشحال خان، ملک آفتاب، انجینئرحامد علی خان اور دیگر بھی موجود تھے میاں افتخار نے کہا کہ پاک افغان بارڈر کی بندش کے مسئلے کو دونوں ممالک افہام وتفہیم کے ذریعے حل کریں کیونکہ پاک افغان سفارتی چپقلش سے فائدہ دہشتگردوں کو ہوگا اور دونوں ممالک کو مالی،اقتصادی اور سفارتی نقصانات اٹھانا پڑے گے دونوں ممالک کو یکطرفہ فیصلے پر نہیں بلکہ دونوں ممالک کی رضا مندی پر فیصلے کو ترجیح دے انہوں نے کہا کہ عوامی نیشنل پارٹی انتقامی سیاست پر یقین نہیں رکھتے وزیراعلیٰ پرویز خٹک نے ضلع نوشہرہ میں کلاس فور، کلرک اور اساتذہ کو سیاسی انتقام کا نشانہ بناکر تنگ کرنے کی کوشش کررہے ہیں لیکن وہ انتقامی سیاست سے باز آجائیں اگر وہ باز نہ آیا تو مجبوراً عوامی نیشنل پارٹی کے کارکن ان کے خلاف سڑکوں پرآئیں گے اور اتنا یاد رکھ لے کہ عوامی نیشنل پارٹی کے کارکنوں پر اتنا ظلم کریں جتنا وہ کل برداشت کرسکے جلسے سے خطاب کرتے ہوئے عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر امیرحیدرخان ہوتی نے کہا کہ صوبہ خیبرپختونخوا میں منتخب بلدیاتی نمائندوں کو صوبائی حکومت کی طرف سے فنڈز اور اختیارات نہ دینے سے عوامی نیشنل پارٹی کی سیاسی قوت میں اضافہ ہوگیا ہے اور منتخب بلدیاتی نمائندے پی ٹی آئی اور وزیراعلیٰ پرویز خٹک کی ناقص پالیسیوں سے متنفر ہوتے جارہے ہیں پرویز خٹک ، اسفندیار ولی خان اور میری حیثیت کی باربار پوچھتے ہیں لیکن میری اور اسفندیار ولی خان کے آباؤ اجداد سے لیکر مجھ تک اور اسفندیار ولی تک کی حیثیت پوری دنیا پر عیاں ہے وزیراعلیٰ پرویز خٹک خود بتائیں ان کی حیثیت کل کیا تھی اور آج کیا ہے ہم صوبائی خود مختاری کی بات کرتے تھے اور کرتے رہیں گے لیکن خیبرپختونخوا کے موجودہ وزیراعلیٰ ایک ربوٹ ہے اور اس کا رموٹ کنٹرول بنی گالا میں عمران خان کے پاس ہے جو کٹھ پتلی کی طرح ان کے اشاروں پر ناچ رہا ہے انہوں نے کہا کہ صوبے کی تاریخ میں پہلی مرتبہ کئی سال بجٹ کا 70فیصد حصہ لیپس ہورہا ہے یہ صوبائی حکومت کی ناکامی نہیں تو اور کیا ہے دیگر سیاسی جماعتوں پر کیچڑ ااچھالنے کی بجائے وزیراعلیٰ پرویز خٹک اور ان کی پوری کابینہ صوبے کی ترقی پر توجہ دے تو بہتر ہوگا صوبے سے کرپشن ، اقرباء پروری کے خاتمے کے دعوے صرف اخباری بیانات تک محدود ہے اصل میں اقرباء پروریوں کو پروان چڑھانا پرویز خٹک کا پرانا طریقہ کار ہے۔

مزید : پشاورصفحہ اول