پاراچنار علماء داخلہ تنازعہ ، مشتعل قبائلیوں کا مظاہرہ ، فائرنگ اور لاٹھی چارج میں 3جاں بحق ، 11زخمی

پاراچنار علماء داخلہ تنازعہ ، مشتعل قبائلیوں کا مظاہرہ ، فائرنگ اور لاٹھی ...

پاراچنار (نمائندہ پاکستان )پاراچنار میں مظاہرین کو منتشر کرنے کے موقع پر لاٹھی چارج ، پتھراو اور فائرنگ کے واقعات میں تین افراد جان بحق اور گیارہ زخمی ہونے کے واقعے کے بعد تمام بازاریں اور تعلیمی ادارے بند دوسرے دن بھی بند رہے۔تفصیلات کے مطابق بدھ کے روز پاراچنار میں منعقد ہونے والے جلسے میں پشاور سے آنے والے علماء کو پولیٹیکل انتظامیہ کی جانب سے روکنے پر قبائل نے مین روڈ پر احتجاجی دھرنا دیا جسے منتشر کرنے کیلئے لاٹھی چارج اور آنسو گیس کے شیل فائر نگ مظاہرین کی جانب سے لیویز اور ایف سی پر پتھراو کی گئی اس موقع پر فائرنگ اور لاٹھی چارج کے نتیجے میں تین افراد جان بحق گیارہ زخمی ہوگئے واقعے کے بعد جمعہ کے روز بھی تعلیمی ادارے اور کاروباری ادارے انتظامیہ کی جانب سے بند رکھے گئے جبکہ تحریک حسینی کی جانب سے واقعے کی خلاف سوگ منائی گئی مدرسہ آیت اللہ خامنہ ای میں اجتماع سے خطاب کرنے کے دوران علماء نے کہا کہ پر امن اجتماع عوام کا حق ہے اور مظاہرین کو خون میں نہلانا افسوس ناک اقدام ہے علماء نے اعلی سطح تحقیقات کا مطالبہ کیا اور کہا ہے کہ اپر کرم ایجنسی میں دھشت گردی کے گذشتہ کئی سالوں سے جاری واقعات میں فورسسز کے ایک جوان کو بھی کسی قسم کا نقصان نہیں پہنچا ہے جبکہ عوام کے ساتھ بار بار اس قسم کے واقعات دہرائے جارہے ہیں۔

مزید : پشاورصفحہ اول