جاکھا گینگ پولیس مقابلہ میں مارا گیا‘ دہشت کی علامت تھا ‘اویس احمد ملک

جاکھا گینگ پولیس مقابلہ میں مارا گیا‘ دہشت کی علامت تھا ‘اویس احمد ملک

خیر پور سادات ،مظفر گڑھ ،سلطان پور (نامہ نگار) ڈی پی او مظفر گڑھ اویس احمد ملک نے ایس ڈی پی او علی پور ریاض حسین بخاری اور انچارج ہومی سائیڈ علی پور چوہدری بشیر احمد کے ہمراہ تھانہ خیرپور سادات میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے بتایا کہ جاکھا گینگ سرکل علی پور ،جتوئی ،فاضل پور اور راجن پور بالخصوص کچہ کے علاقہ میں تقریبا پانچ سال کے عرصہ سے متحرک تھا اور دہشت کی علامت بنا ہوا تھا علاقے میں (بقیہ نمبر33صفحہ7پر )

زمینداروں و دیگر لوگوں کو اغواء کر کے بھاری رقوم وصول کرتا تھا دریا پار جنگل میں کچی حامد والی اور کچی چوہان والی میں ٹھکانے بنائے ہوئے تھے جب اس پر ریڈ کئے گئے تو بلال جاکھا اپنے ساتھیوں کے ہمراہ چھو ٹو گینگ کے ساتھ شامل ہو گیا اور جب کچہ آپریشن شروع ہوا تو یہ گینگ چھو ٹو کے ساتھ مل کر پولیس کے خلاف کارروائی میں شامل رہا کچہ جمال میں ایلیٹ جوانوں کو شہید کرنے والوں میں یہ گینگ شامل رہا مظفر گڑھ میں چھوٹو گینگ کی فرنچائز اور علی پور بیٹ کے علاقہ کو نو گو ایریا بنا کر رکھا ہوا تھا انہوں نے بتایا کہ بلال جاکھا نے اپنے ساتھیوں کے ہمراہ اپنے دیرینہ حریف وزیر عرف وزیرا جاکھا جو کہ اپنی گندم کی رکھوالی کر رہا تھا کو آتشیں اسلحہ کے زور پر اغواء کر لیا جس کی بروقت اطلاع پر محمد رفیع ایس ایچ او خیرپورسادات اپنی نفری سہیل گوپانگ ،محمد ہاشم، ممتاز حسین بلہ، فرمان احمد ، افضل کھاکھی،میاں محمد اسماعیل و دیگر کے ہمراہ موقع پر پہنچ گئے اور ایس ایچ او تھانہ صدر محمد اقبا ل وایلیٹ فورس کے جوان سرکاری گاڑیوں پر موقع پر پہنچے گینگ کا تعقب کیا گیا بیٹ باغ شاہ میں ڈاکووں نے پولیس کو دیکھتے ہی فائرنگ شروع کر دی جس پر پولیس نے بھی دفاعی فائرنگ کی فائرنگ کا تبادلہ ایک گھنٹہ تک جاری رہا فائرنگ کا سلسلہ رکتے ہی پولیس نے پیش قدمی کی تو محمد بلال عرف بلالی جاکھا ،شاکر حسین جاکھا، صابر حسین جاکھا پسران فیض اللہ قوم جاکھا گوپانگ سکنہ موضع کبیر گوپانگ کی لاشیں ملی جو کہ اپنے ہی ساتھیوں کی گولیوں کا نشانہ بنے جبکہ ان کے دیگر ساتھی عبدالحمید ولد عبدالمجید،امان اللہ ولد نصیر احمد و دیگر تین نا معلوم ساتھی فرار ہو گئے جن کا تعقب جاری ہے انہوں نے بتایا کہ بلال جاکھا کے خلاف قتل ،ڈکیتی ،اغواء برائے تاوان ،راہزنی وغیرہ کے مختلف تھانہ جات میں 34 مقدمات جبکہ شاکر کے خلاف20 مقدمات اور صابر کے خلاف13 مقدمات ضلع مظفرگڑھ اور ضلع راجن پور میں درج ہیں جاکھا گینگ اور چھو ٹو گینگ کے بعد تحصیل علی پور کے کچہ کے علاقے اور ضلع راجن پور کے علاقے انتہائی خطرناک اور گینگ متحرک تھے جو کہ بذریعہ آپریشن زیر نگرانی ڈی پی او مظفر گڑھ اور ایس ڈی پی او علی پور کا خاتمہ ہو چکا ہے جبکہ بازیاب ہونے والے وزیر جاکھا نے بتایا کہ مجھے جاکھا گینگ نے اغواء کیا اور جب پولیس پہنچی تو میں نے بھاگنے کی کوشش کی ڈاکوؤں نے مجھ پر فائرنگ کی تو گولی میرے بازو پر لگی اور میں زمین پر لیٹ گیا بعد ازاں پولیس نے مجھے ہسپتال پہنچایا ،بعدازاں تینوں لاشیں پوسٹ مارٹم کے لیے رورل ہیلتھ سنٹرخیرپورسادات لائی گئیں ۔ دریں اثناء کلروالی کے عوامی سماجی حلقوں ملک نذیر،احمدبخش،فضل کریم،اقبال حسین،امام دین،میاں امیربخش،جاوید عباس،الطاف حسین،محمدشریف نے ڈی پی او سے مطالبہ کیاہے کہ اظہر عرف ٹکو جس کی سرکی قیمت مقررہوچکی ہے مگر تاحال وہ گرفتار نہیں کیا جاسکا .چھوٹو،بلال،جاکھا گینگ کے بعد اب ٹکو گینگ کے خلاف بھی آپریشن کرکے عوام کو تحفظ فراہم کیا جائے۔سابق ضلع ناظم مخدوم علی رضا شمسی ،مخدوم سید مظہر مہدی بخاری، ملک جمیل پنوہاں نے بلالی جاکھا کی ساتھیوں سمیت پولیس مقابلہ میں ہلاکت پراظہار خیال کرتے ہوئے کیا بلال جاکھاا ور دیگر گینگز خدا کی زمین پرعوام کیلئے عذاب بنے ہوئے تھے لیکن ہر مجرم آخر کار اپنے انجام کو پہنچ ہی جاتاہے بلالی جاکھا کی ہلاکت پر ڈی پی او مظفرگڑھ ،ایس ایچ او اقبال چانڈیہ اور اس کی ٹیم مبارکباد کی مستحق ہے اس موقع پر سابق تحصیل ناظم مخدوم علی رضا شمسی نے ڈی پی او مظفرگڑھ کے تاریخی جراتمندانہ اقدام پر کالے بکروں کا صدقہ بھی دیا۔

مزید : ملتان صفحہ آخر