پوری دنیا خیبر پختونخوا پولیس کی جرات اور بہادری کی معترف ہے ناصر درانی

پوری دنیا خیبر پختونخوا پولیس کی جرات اور بہادری کی معترف ہے ناصر درانی

 مردان (بیو رورپورٹ) خیبرپختون خوا کے انسپکٹر جنرل پولیس ناصرخان درانی نے کہاہے کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پولیس کی قربانیاں لازوال ہیں ہمارے رویوں کو مدنظر رکھ کر بیرونی دنیا اپنی خارجہ پالیسی بناتی ہے وردیاں پسیوں کے لئے نہیں بلکہ عزت اور ملک کی وقار کے لئے پہنی ہیں ، پوری دنیا خیبرپختون خوا کی جرآت اوربہادری متعرف ہیں جس پر ہمیں فخر ہے ،ایبٹ آباد واقعہ میں جرائم پیشہ گروہ ملوث ہے جرگہ نہیں ، پڑوس ملک میں امن کے قیام تک دہشت گردی پر قابو پایا نہیں جاسکتا ان خیالات کااظہار انہوں نے جمعرات کے رو زتھانہ طورومیں قائم پولیس ٹریننگ سنٹر میں لیکچر ہال کا افتتاح کے بعد خطاب اور میڈیا سے گفتگو کے دوران کیا اس موقع پر ایڈیشنل آئی جی ہیڈکوارٹر میاں محمد عارف،ڈی آئی جی انکوائری عبدالغفورآفریدی،ڈی آئی جی مردان محمد طاہر خان ،ڈی پی او مردان فیصل شہزاد، ایس پی اپریشن شفیع اللہ گنڈاپور، ڈائریکٹر پولیس ٹریننگ سٹور طورو مشتاق احمد ،کرنل (ر) ظفیر گل بھی موجود تھے آئی جی نے کہاکہ امن امان برقرار رکھنا پولیس کی بنیادی ذمہ داری ہے تاہم ان ذمہ داریوں سے نبردآزما ہونے کے مختلف طریقے ہیں جس پر عمل درآمد کرتے ہوئے مثبت نتائج حاصل کئے جاسکتے ہیں انہوں نے کہاکہ اس مقصد کے لئے پولیس ٹریننگ سنٹروں کا بنیادی رول ہے اور پیشہ ورانہ تربیت کے ساتھ ساتھ ان ٹریننگ سنٹروں سے فارغ ہوکر عملی میدان میں پولیس اپنی ذمہ داریاں پوری کرسکتی ہیں انہوں نے کہاکہ فرائض کی انجام دہی اگر دل ودماغ کے ساتھ ہوں تو اس کا الگ مزہ ہے انہوں نے کہاکہ خیبرپختو ن خوا پولیس نئے نظام سے چالیس فیصد متفق ہوچکے ہیں تاہم جب وہ اپنی ذمہ داریوں سے سکبدوش ہوں گے تو یہاں کی پولیس فورس سوفیصد دل لگاکر بہتر فرائض انجام دیں گے انہوں نے کہاکہ پولیس کو رول ماڈل ہوناچاہئے نہ صرف تھانوں کی سطحوں پر ان بلکہ علاقے میں بھی انہوں نے کہاکہ جرم اور قانون کی خلاف ورزی میں زمین آسمان کا فرق ہے پولیس یہاں کے کلچر اورروایات کو دیکھ کر اپنی ذمہ داریاں نبھائیں انہوں نے کہاکہ پنجاب پولیس نامناسب رویے کے باعث ابھی تک شہریوں میں وہ مقام حاصل نہیں کرسکی جو خیبرپختون خوا پولیس کے حصے میں آئی ہے دریں اثناء صحافیوں سے گفتگو میں آئی جی کا کہناتھا کہ امن کے قیام کے لئے پڑوس میں امن ضروری ہے دہشت گردی کا سلسلہ جاری رہے گا وسائل کے کمی کے باوجود ہماری فورس کی کارکردگی بہتر ہے ایبٹ آباد واقعے میں جرگہ ملوث نہیں بلکہ وہ جرائم پیشہ گروہ تھا اور اس معاملے میں پولیس فریق بنے گی ۔

مزید : کراچی صفحہ آخر