بیوی کی ناک کاٹنے پر پولیس اہلکار کو 5 سال 9 ماہ قید، 19 لاکھ روپے جرمانے کی سزا

بیوی کی ناک کاٹنے پر پولیس اہلکار کو 5 سال 9 ماہ قید، 19 لاکھ روپے جرمانے کی سزا
بیوی کی ناک کاٹنے پر پولیس اہلکار کو 5 سال 9 ماہ قید، 19 لاکھ روپے جرمانے کی سزا

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

سوات (مانیٹرنگ ڈیسک) مقامی عدالت نے بیوی کی ناک کاٹنے والے پولیس اہلکار صاحبزادہ کو 5 سال 9 ماہ قید اور 19 لاکھ روپے جرمانے کی سزا سنائی ہے۔ متاثرہ لڑکی شاہدہ کا کہنا ہے کہ رشتہ داروں سمیت علاقے کی خواتین انہیں مبارکباد دینے کیلئے آ رہی ہیں جبکہ شاہدہ کے خاندان نے عدالت کے فیصلے کو حق کی فتح قرار دیا ہے۔ غیر ملکی خبر رساں ادارے بی بی سی کے مطابق مقدمے کے وکیل سہیل سلطان کا کہنا تھا کہ 20 ماہ قبل تحصیل کبل کے علاقے منجہ میں ایک پولیس اہلکار صاحبزادہ نے غیرت کے نام پر بیوی کی ناک کاٹ دی تھی۔متاثرہ لڑکی شاہدہ اس واقعے کے بعد زندگی سے مایوس ہوگئی تھی لیکن عدالتی فیصلے نے انہیں نئی زندگی دیدی ہے۔

پاکستانیوں کے لئے بچت کا شاندار موقع، ایسی ویب سائٹ آگئی کہ آپ کی خوشی کی انتہا نہ رہے گی‎‎

تحصیل کبل کے ایڈیشنل سیشن جج نے اپنے فیصلے میں تاخیر کی وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ ملزم نے واردات کے بعد نہ صرف ثبوت غائب کیے بلکہ گواہوں کو بھی ڈراتا دھمکاتا تھا جس کی وجہ سے کوئی گواہی دینے کے لیے بھی عدالت میں پیش نہیں ہو رہا تھا۔سوات میں کم عمری میں لڑکیوں کی شادی کے خلاف کام کرنے والی حدیقہ بشیر کا کہنا تھا کہ کم عمری کی شادی ایک اذیت ناک حادثے سے کم نہیں ہوتی۔انہوں نے عدالت کے اس فیصلے کو سراہتے ہوئے کہا کہ اب کوئی بھی عورتوں پر تشدد اور ان کے اعضا کاٹنے کی جرات نہیں کر سکے گا۔

خبردار!رنگ گورا کرنے والی کوئی بھی کریم استعمال کرنے سے پہلے یہ خبر ضرور پڑھ لیں

مزید : سوات