سعودی پولیس کی غریب سبزی فروش کے ساتھ ایسی خوفناک حرکت کہ ملک میں ہنگامہ برپاہوگیا، انٹرنیٹ صارفین سراپا احتجاج

سعودی پولیس کی غریب سبزی فروش کے ساتھ ایسی خوفناک حرکت کہ ملک میں ہنگامہ ...
سعودی پولیس کی غریب سبزی فروش کے ساتھ ایسی خوفناک حرکت کہ ملک میں ہنگامہ برپاہوگیا، انٹرنیٹ صارفین سراپا احتجاج

  

ریاض (مانیٹرنگ ڈیسک) سعودی سکیورٹی اہلکاروں کو حالیہ کچھ عرصے میں طاقت کے غیر متناسب استعمال پر تنقید کا سامنا رہا ہے۔ گزشتہ روز ایک اور ایسے ہی واقعے کی ویڈیو سامنے آنے کے بعد ایک بار پھر ہنگامہ برپا ہو گیا ہے۔

نیوز سائٹ مڈل ایسٹ آئی کے مطابق یہ متنازعہ ویڈیو جمعرات کے روز دارالحکومت کی ایک شاہراہ پر ریکارڈ کی گئی اور گزشتہ روز انٹرنیٹ پر پوسٹ کی گئی۔ ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ سبزیوں سے لدی ایک گاڑی سکیورٹی اہلکاروں کی گاڑی کے سامنے کچھ فاصلے پر رکتی ہے۔ ایک سکیورٹی اہلکار سامنے رکی گاڑی کے پاس جاتا ہے اور ڈرائیور کو باہر نکال کر بجلی لگانے والی گن ”ٹیزر“ سے شدید جھٹکا لگاتا ہے۔ بجلی کا جھٹکا لگنے پر متاثرہ شخص چیختا چلاتا ہوا دوڑ لگادیتا ہے۔ مقامی میڈیا کے مطابق متاثرہ شخص ایک سبزی فروش ہے اور سکیورٹی اہلکار کا تعلق میونسپلٹی سکیورٹی ڈیپارٹمنٹ سے بتایا جارہا ہے۔

خبردار!رنگ گورا کرنے والی کوئی بھی کریم استعمال کرنے سے پہلے یہ خبر ضرور پڑھ لیں

ویڈیو سامنے آنے کے بعد عرب سوشل میڈیا پر سکیورٹی اہلکاروں کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا جارہا ہے اور ویڈیو میں نظر آنے والے سکیورٹی اہلکار کا سراغ لگا کر اسے سخت ترین سزا دینے کا مطالبہ کیا جارہا ہے ۔ ایک انٹرنیٹ صارف ابوشلاخ نے اپنے ٹویٹر اکاﺅنٹ پر لکھا ”اسے گھسیٹا گیا، ماراگیا اور پھر بجلی لگادی گئی۔ یہ سب اس لئے ہوا کہ وہ بیچارہ ایک غریب آدمی تھا جو کہ سبزیاں لیجارہا تھا۔ اس اہلکار پر مقدمہ چلایا جانا چاہیے۔“ ایک اور صاحب مسفر بن زعار نے لکھا ”کیا یہ دہشت گرد ہے؟ کیا یہ کرپٹ ہے؟ کیا اس نے سرکار کی دولت چرائی ہے؟ یہ تو ایک غریب ڈرائیور ہے جو کہ خدا کا دیا ہوا رزق لے کر جارہا تھا۔“

پہلی مرتبہ سعودی عرب میں 2 خواتین کی سڑک پر سرعام ایسی حرکت کہ دیکھنے والے پلکیں جھپکانا بھول گئے

ویڈیو سامنے آنے کے بعد سوشل میڈیا پر لوگوں کے جذبات مشتعل ہو گئے، جس کے بعد حکام کی جانب سے بھی سوشل میڈیا پر ایک پیغام جاری کیا گیا، جس میں کہا گیا ”ایک شہری کو بجلی کا جھٹکا لگانے والے اہلکار کا رویہ ناقابل قبول ہے۔ اسے اپنے عمل پر قانون کا سامنا کرنا ہوگا، جب اس کی شناخت ہوجائے گی۔“

مزید : عرب دنیا